عمر قاضی



تبت یاترا : صوفیہ کے ساتھ


تبت کے دارالحکومت لاسا کے ایئرپورٹ پر گاڑی میں بیٹھنے سے قبل ہمارے گلے میں سفید اسکارف ڈالا گیا۔ جس کا مطلب تھا’’تبت میں خوش آمدید۔ امن کی سرزمین پر خوش آمدید۔ اجلے احساسات کی وادیوں میں خوش آمدید‘‘ اپنے گلے میں مخصوص خوشبو والا اسکارف اچھا لگا۔اس کے بعدگاڑی میں بیٹھتے انٹرپریٹر لڑکی نے ہمیں بتایا کہ ایئرپورٹ سے لیکر ہوٹل تک ہمیں نوے منٹ کی ڈرائیو کرنی ہے۔ سفر کے دوران دن کا تھکا ماندا سورج تبت کے بلند و بالا پہاڑوں کی آغوش میں سوجانے کے لیے مغرب کی طرف سرک رہا تھا۔ وہ واقعی ایک ناقابل فراموش
بدھ 26  ستمبر 2018ء

تبت یاترا

جمعه 21  ستمبر 2018ء
عمر قاضی
روسی ناولوں کے ابتدائی الفاظ کی طرح :یہ ایک خوشگوار دوپہر تھی۔ رقم الحروف پی آئی اے کے جس طیارے پر سوار ہو رہا تھا اس کی ہر سیڑھی ابن انشاء کے یہ الفاظ دہرا رہی تھی ’’چلتے ہو تو چین کو چلیے‘‘گو اس طیارے کی منزل بیجنگ کا وہ ایئرپورٹ تھا جس کا طویل منظر آنکھیں تھکا دیتا ہے ۔ مگر اس مسافر کو معلوم تھا کہ وہ چین نہیں بلکہ اس وادی کی طرف جا رہا ہے جو چین کا حصہ تو ہے مگر چین کے ساتھ ساتھ اس کی الگ پہچان ہے۔ سر سبز اور بلند بالا
مزید پڑھیے


سول ملٹری توازن

جمعه 07  ستمبر 2018ء
عمر قاضی
پاکستان کی سیاسی تاریخ عسکری اور سول قیادت کے درمیاں کشمکش کی داستان ہے۔ جس وقت فوج اقتدار میں ہوتی ہے اس وقت بھی یہ کشمکش جاری رہتی ہے جس وقت فوج اقتدار میں نہیں ہوتی تب بھی اس تنائو کا اظہار ہوتا رہتا ہے۔ اکثر حکمرانوں کی طرح ایوب خان کی ابتدا اچھی اور انتہابری تھی۔ مگر جب تک پاکستان کی سڑکوں پر ایوب خان کے خلاف نعرے بلند نہیں ہوئے تب تک انہوں نے ڈٹ کر حکومت کی۔ سابق صدر ایوب خان ایک بااعتماد انسان تھے۔ وہ بیرونی طاقتوں کے رعب میں آنے والے نہیں تھے۔ انہوں
مزید پڑھیے


آصف زرداری کو غصہ کیوں آیا؟

پیر 03  ستمبر 2018ء
عمر قاضی
پاکستان میں جوڈیشل ایکٹوازم نیا نہیں ہے مگر چیف جسٹس آف پاکستان ثاقب نثار ایک نئی تاریخ رقم کر رہے ہیں۔ پاکستان میں جتنے سوموٹو ایکشن سابق چیف جسٹس افتخار چودھری نے لیے اتنے کسی اور چیف جسٹس نے نہیں لیے۔ تاریخ نے ابھی تک سابق چیف جسٹس کے بارے میں فیصلہ نہیں سنایا مگر افتخار چودھری صاحب کے لیے اس وقت یہ ریمارکس ریکارڈ پر موجود ہیں کہ انہیں میڈیا سے کھیلنے میں بڑا مزا آتا تھا۔ وہ چاہتے تھے کہ ہر اخبار میں ان کی لیڈ ہو اور ہر چینل پر ان کا چرچہ ہو۔ مگر موجودہ چیف
مزید پڑھیے


محبت کے دریا

جمعرات 30  اگست 2018ء
عمر قاضی
پنجاب سے صرف دریائے سندھ نہیں نکلتا۔ اس دھرتی سے ایک دریا اور بھی نکلتا ہے۔ وہ محبت کا دریا ہے۔ محبت کے اس دریا کے لیے موسم کی کوئی قید نہیں۔ وہ دریا ساون کے مہینے میں بہنے کے لیے مجبور نہیں۔ وہ دریا گرمیوں کی بارشوں کی وجہ سے نہیں بہتا۔ وہ دریا اس وقت سرد موسموں میں مچلتا رہتا ہے جب ساری ندیا ںاور سارے نالے سوکھ جاتے ہیں۔ محبت کا وہ دریا جو اپنے آپ کو عشق کے سمندر میں سمانے کے لیے سفر کرتا ہے۔ اس دریا کا احساس مجھے اس وقت ہوا جب ٹی
مزید پڑھیے




پیپلز پارٹی پریشان ہے!!

هفته 25  اگست 2018ء
عمر قاضی
پیپلز پارٹی سندھ میں تیسری مرتبہ اقتدار کی مسند پر براجمان تو ہے مگر سندھ کی حکمران پارٹی کے حلقوں میں خوشی کی وہ لہر اٹھتی نظر نہیں آ رہی جو گذشتہ دو بار دکھائی دی تھی۔ اس بار پیپلز پارٹی کی پریشانی کی ایک وجہ تو آصف زرداری اور فریال تالپور کے خلاف منی لانڈرنگ کا وہ مقدمہ ہے جس میں انور مجید اپنے بیٹے کے ساتھ گرفتار ہو چکے ہیں۔ اس سچائی کا پتہ صرف سندھ کو نہیں بلکہ پورے پاکستان کو ہے کہ انور مجید آصف زرداری کے لیے ڈاکٹر عاصم سے کہیں زیادہ اہم ہیں۔ جب
مزید پڑھیے


’’مرسوں مرسوں سندھ نا ڈیسوں‘‘

جمعرات 16  اگست 2018ء
عمر قاضی
آج میں اس موضوع پر قلم اٹھا رہا ہوں جس موضوع پر پاکستان کی قومی میڈیا تو کیا سندھ کی قوم پرست میڈیا نے بھی دو حروف نہیں لکھے۔ آج میں سندھ کے ان انسانوں کی بات کرنے جا رہا ہوں جن کی اکثریت آج بھی نیم غلام ہے۔ اگر سندھ کے قوم پرست وڈیرے کہتے ہیں کہ سندھ کے لوگ غلام ہیں تو پھر انہیں یہ بات سننے کا حوصلہ ہونا چاہئیے کہ وہ لوگ غلاموں کے بھی غلام ہے۔ وہ لوگ صدیوں قبل افریقہ سے سندھ کے ساحل پر اترے تھے۔ وہ سیاہ فام لوگ تھے ؛ جن
مزید پڑھیے


گورنر ہاؤس کی دیوار پر

جمعرات 09  اگست 2018ء
عمر قاضی
سندھ کے نئے گورنر کے لیے سب سے پہلے ممتاز بھٹو کا نام آیا۔ سوشل میڈیا پر یہ اسٹیٹس زخمی پرندے کی طرح کچھ دیر تک پھڑپھڑاتا رہا اور پھر خاموش ہوگیا۔ ویسے بھی سوشل میڈیا پر خبروں سے زیادہ خواہشات کا اظہار ہوتا ہے۔ معلوم نہیں یہ خواہش کس کی تھی کہ پیپلز پارٹی کی حکومت میں سندھ کا گورنرذوالفقار علی بھٹو کا وہ ٹیلینڈ کزن بنے جس کی گزشتہ چار دہائیوں سے پیپلز پارٹی کی کسی بھی لیڈرکے ساتھ نہیں بنی۔ ممکن ہے کہ یہ بات ممتاز بھٹو کے کسی چاہنے والے نے فیس بک پر فیڈ کی
مزید پڑھیے


کھڑی نیم کے نیچے

منگل 07  اگست 2018ء
عمر قاضی
کرشنا کولہی تو پاکستان کی پہلی دلت سینیٹر بن چکی ہے۔ وہ عورت جس کا بچپن وڈیروں کی نجی جیلوں میں گزرا۔ وہ عورت جس نے تعلیم اس طرح حاصل کی جس طرح کوئی جدوجہد کرتا ہے۔ وہ اپنے گھر سے بہت دور تک پیدل جاتی تھی۔ وہ اپنی کمیونٹی کے لوگوں کے طعنے سنتی تھی۔ اسے ہر طریقے سے مایوس کرنے کی کوشش کی گئی۔ وہ عورت جس نے جوانی میں رسول بخش پلیجو کے انقلابی لیکچرز سنے۔ وہ عورت جس نے سیاسی تعلیم اور تربیت کو این جی اوز کی ابھرتی ہوئی دنیا میں پیش کیا تو اسے
مزید پڑھیے


ایک انار سو بیمار

جمعه 03  اگست 2018ء
عمر قاضی
حالیہ انتخابات میں پیپلز پارٹی کو سندھ میں اتنی کامیابی حاصل ہوئی ہے جتنی اسے توقع بھی نہیں تھی۔ اس بار تو پیپلز پارٹی انتخابی مہم کے دوراں سخت پریشان تھی۔ جس طرح سندھ کے نوجوان پیپلز پارٹی کے امیدواروں کا احتساب کر رہے تھے؛ اس کے ڈر سے پی پی کے مضبوط امیدوار بھی کارنر میٹنگز میں جانے سے گھبرا رہے تھے۔ جس رات انتخابات کے نتائج کا اعلان ہو رہا تھا اس رات پیپلز پارٹی کے کہنہ مشق امیدوار بھی کانپ رہے تھے۔ مگر جب مجموعی نتائج کا اعلان ہوا تب پیپلز پارٹی کے خاموش حلقوں میں خوشی
مزید پڑھیے