BN

فیصل مسعود


کسی کے حُب میں یا کسی کے بُغض میں


جنرل مشرف ،جنرل علی قلی خان کو supersede کرتے ہوئے چیف آف آرمی سٹاف تعینات کئے گئے تھے۔ خود جنرل مشرف نے اپنی خود نوشت میں اعتراف کیا کہ ان کی تعیناتی کی ایک وجہ اُن کا متوسط طبقے سے تعلق تھا۔ اس کے برعکس جنرل علی قلی یقینا ایک بااثر سیاسی اور کاروباری خاندان سے تعلق رکھتے تھے۔ فوج میں پروموشن کا طریقہ کار عمومی طور پر موثر اور انسانی کمزوریوںکی گنجائش رکھتے ہوئے ایک بہترین نظام کا حصہ ہے۔ چنانچہ جو افسران ترقی کی منازل طے کرتے ہوئے سینئر عہدوں پر پہنچتے ہیں، جن میں بالخصوص تین ستارہ
اتوار 12 جون 2022ء مزید پڑھیے

راستہ یہی رہا تو زوال کا سفر جاری رہے گا!

اتوار 05 جون 2022ء
فیصل مسعود
سولہویں صدی کے اختتام تک چین، ہندوستان اور سلطنتِ عثمانیہ یورپ سے کہیں بڑھ کر دولتمند تھے۔تاہم برطانیہ اور اس کی دیکھا دیکھی اکثر مغربی یورپی ممالک میں کسی نہ کسی شکل میں Representative ادارے قائم ہو چکے تھے۔ یورپ کے اندر رونما ہونے والی معاشرتی اور معاشی تبدیلیاں سترہویں صدی عیسوی میں Glorious Revolution کی صورت اپنے عروج کو پہنچیں۔بادشاہ اور زمینوں پر قابض اس کے پروردہ جاگیرداروں کے خلاف کسی اور نے نہیںدرمیانے طبقے کے تاجروں (Middle Class)اور کسانوں نے انقلاب برپا کیا تھا۔مطالبہ کیا گیا کہ ٹیکسوں کے نفاذکے فیصلے بادشاہ نہیں پارلیمنٹ
مزید پڑھیے


کیا سابقہ فوجی Cult followers ہیں؟

اتوار 29 مئی 2022ء
فیصل مسعود
پشاور میں بیٹھ کر عمران خان نے لانگ مارچ کا اعلان کیا تو انہوں نے خاص طور پر سابقہ فوجیوں اور ان کے خاندانوں سے اپیل کی کہ وہ اسلام آباد پہنچیں۔ یقینا انہیں پورا ادراک تھا کہ مڈل کلاس اور مڈل کلاس میں خاص طور پر سابقہ فوجی ان کی تحریک کے پر جوش حمائتی ہیں۔ ایسا کب ہوا کہ سابقہ فوجی اور ان کے خاندان عمران خان کے ساتھ کھڑے ہو گئے؟ اسٹیبلشمنٹ کے لاڈلے تو میاں صاحب تھے۔ایسا کیا ہوا کہ فرسٹ پی ایم اے لانگ کورس کے کمر خمیدہ وار ویٹرن سمیت لاکھوں غازیوں اور ہزاروں
مزید پڑھیے


اسٹیبلشمنٹ کو در پیش مشکل صورتِ حال !

اتوار 22 مئی 2022ء
فیصل مسعود
چند ہی ہفتوں میں سب کچھ اُلٹ پلٹ گیا ہے۔ کل تک جو اسٹیبلشمنٹ کے سر ایک ’سیلیکٹڈ‘ حکومت ملک پر مسلط کئے جانے کا الزام دھرتے تھے،حال ہی میں اس کے نیوٹرل ہو جانے کو عین آئین اور قانون کے مطابق قرار دے کر دوسروں کو بھی کچھ ایسا ہی مشورہ دے رہے تھے۔تاہم صورتِ حال کچھ یوں بدلی ہے کہ اب صاف صاف الفاظ میں افواجِ پاکستان کو مدد کے لئے پکاراجا رہا ہے۔جس کی چڑیا اس کی بے جا(overrated)شہرت کا سبب بنی تھی، اب کچھ دنوں سے تواتر کے ساتھ اسٹیبلشمنٹ کو موجودہ حکومت کی ناکامی کا
مزید پڑھیے


معاشی تباہی کے دہانے پر کھڑی قوم کا مخمصہ!

اتوار 15 مئی 2022ء
فیصل مسعود
آصف زرداری آج کل بلند ہوائوں میں اُڑ رہے ہیں۔ پاکستان آرمی کے ایک سینئر کمانڈر کے بارے میں بولا گیا جملہ اسی تکبر اورخود اعتمادی کا اظہار ہے جوایک اندازے کے مطابق سال 2020 ء کے بعد شروع ہونے والی پسپائی کا نتیجہ ہے۔فوج کی طرف سے آنے والا رد عمل مگر مجموعی طور پر صائب، متوازن اور عمومی طور پر مبنی بر حقیقت ہے۔ڈی جی آئی ایس پی آرکا کہنا ہے کہ ادارہ مسلسل سیاستدانوں سے درخواست کر رہا ہے کہ اسے سیاست میں نہ گھسیٹا جائے۔ وطنِ عزیز وجود میں آیا تو مغرب میں افغانستان نوزائیدہ مملکت
مزید پڑھیے



کیابالآخر اسٹیبلشمنٹ تنہا اور بے اثر ہو چکی !

اتوار 08 مئی 2022ء
فیصل مسعود
وزیرِ خارجہ کا حلف لینے میںبظاہر کچھ لیت و لعل کے بعد بلاول زرداری ، نواز شریف سے ملاقات کے لئے لندن پہنچے۔سامنے نظر آنے والی ملاقاتوں کے بعد بتایا گیا کہ قوم کے دو رہنمائوں نے ’چارٹر آف ڈیموکریسی‘ کے اعادے کا فیصلہ کیا ہے، تاہم درونِ خانہ معلومات رکھنے والے کچھ اورہی کہتے ہیں۔ پاکستان کے نامور صحافی ہارون الرشید صاحب نے انکشاف کیا ہے کہ گزشتہ چند مہینوں کے دوران جہاں امریکی سفارت کار پاکستان کے اندر عمران مخالف سیاسی رہنمائوں سے ملاقا تیں کر رہے تھے،تو وہیں بدنامِ زمانہ پاکستان دشمن حسین حقانی نامی
مزید پڑھیے


بہتر ہوگا کہ ایک اور غلطی نہ کی جائے!

اتوار 01 مئی 2022ء
فیصل مسعود
خلیل جبران نے لازوال نظم لکھی۔ نظم نہیں ہم جیسی قوموں کا نوحہ لکھا۔ حیف ہے اس قوم پر جو ہرنئے حکمران کا استقبال ڈھول پتاشوں سے کرتی ہے اور ہر جانے والے پر آوازے کستی ہے۔ اس بار مگر کچھ ایسا ہوا ہے کہ پاکستانی جانے والے کے ساتھ کھڑے ہو گئے ہیں۔ اکتوبر 2021ء میں ایک اہم تعنیاتی کا اعلان آئینی استحقاق رکھنے والے وزیرِ اعظم کے دفتر نے نہیں بلکہ محکمے کی پریس ریلیز کے ذریعے کیا گیا۔تنائو کا تاثر عام ہوا تو’ سندھ کے جادوگر‘ نے ایک تقریب میںخطاب کرتے ہوئے انکشاف کیا کہ انہیں
مزید پڑھیے


خاندانوں کی حکمرانی اور مڈل کلاس کا ردِ عمل!

اتوار 24 اپریل 2022ء
فیصل مسعود
عمران خان کی شخصیت اور ان کے طرزِ حکمرانی میں ہزار خامیاں ڈھونڈی جا سکتی ہیں۔ ہم کل بھی مانتے تھے ۔ آج بھی مانتے ہیں۔ وقتِ مقررہ پر معمول کے مطابق انتخابات ہوتے تو محض ایک شخص کہ پورا پنجاب جس کے حوالے کر دیا گیا تھا، تنہا عمران حکومت کے زوال کے لئے کافی تھا۔ مہنگائی کے باعث حکومتی ارکانِ اسمبلی کیلئے اپنے ووٹروں کو عالمی حالات اور وباء کے اثرات سمجھانا دن بدن مشکل ہورہا تھا۔اندازہ یہی تھا کہ حکومت عوام میں مقبولیت کھو چکی ہے۔اُدھرامریکی اثرورسوخ کا یہ عالم ہے کہ طاقتوریورپی ریاستیں بھی امریکیوںکے
مزید پڑھیے


صورتِ حال کو سنبھالنے کی ضرورت ہے!

اتوار 17 اپریل 2022ء
فیصل مسعود
عمران خان انتہائی پیچیدہ سیاسی، معاشرتی، سیکیورٹی حتی کہ سفارتی معاملات کو بھی بے حد سادہ بیانئے میں بدلنے کی صلاحیت رکھتے ہیں،’ مراسلے‘کو ایک ’ایشو‘ بنانے میں کامیاب ہو چکے ہیں۔چنانچہ کروڑوں پاکستانیوں کا خیال ہے کہ عمران خان کی حکومت کو ایک منظم سازش کے ذریعے گرایا گیا ہے۔ ٹویٹر پر ’امپورٹڈ حکومت نا منظور‘ کا ہیش ٹیگ مقبولیت کے اگلے پچھلے تما م ریکارڈ توڑ چکا ہے۔اسے سازش کہا جائے یا مداخلت، یہ بات طے ہے کہ جو بائیڈن انتظامیہ عمران خان کے ساتھ کام کرنے سے انکار کر چکی تھی۔مراسلے میں کچھ اور ہو نا
مزید پڑھیے


امریکی مفادات اور پاکستانیوں کا مستقبل!

اتوار 10 اپریل 2022ء
فیصل مسعود
چھوٹے ملکوں میںسی آئی اے کے ذریعے ’ رجیم چینج ‘اور نا پسندیدہ شخصیات کو جسمانی طور پر راستے سے ہٹائے جانے جیسے واقعات تاریخ کا حصہ ہیں۔خود ہمارے ہاں روزِ اول سے حکومتوں کے بننے اور گرنے میں امریکی اثر ورسوخ شامل رہا ہے۔ بے نظیر بھٹو کے دور میں امریکی سفیر کو ’وائسرائے‘ کے نام سے جانا جاتا تھا۔نواز شریف اپنے دوسرے دورِ حکومت میں صدر کلنٹن کیلئے کچھ بھی کرگزرنے کو تیار تھے۔ہر فوجی حکمران نے تائید و حمایت کے لئے امریکہ ہی کی طرف دیکھا۔ اکیسویں صدی طلوع ہوئی تو وطن عزیز میں امریکی مداخلت کی
مزید پڑھیے








اہم خبریں