Common frontend top

فیصل مسعود


چیئرپرسن اکادمی ادبیات پاکستان کے ساتھ ایک شام !


از کارِ رفتہ سپاہی کو برسوں پیشہ وارانہ میٹنگز،پریزینٹیشنز اور علمی تقریبات سمیت لاتعداد سرکاری و غیر سرکاری مجالس میں شرکت کے مواقع میسر آتے رہے۔ گزشتہ ہفتے اسلام آباد میں ’فیکٹ فورم‘ کے زیرِ اہتمام ، پاکستان اکادمی ادبیات کی چیئرپرسن ڈاکٹر نجیبہ عارف کے اعزاز میں منعقدہ تقریب ازکارِ رفتہ سپاہی کے لئے مگر ایک خوشگواراور انوکھا تجربہ ثابت ہوئی۔گاڑھے پروٹوکول اور ہٹو بچو سے دور، خاکسار اِس باراسلام آباد کے ایک ریسٹورنٹ کے ایک پرسکون کونے میں مختص میز پر کئی مطبوعہ دیوانوں کے حامل شعرائ، متعدد کتابوں کے مصنفین ، ماہرینِ تعلیم اور معروف کالم
اتوار 17  ستمبر 2023ء مزید پڑھیے

دورِ حاضر کی ایسٹ انڈیا کمپنیز !

اتوار 10  ستمبر 2023ء
فیصل مسعود
سال 1993ء سے اب تک طویل المدت معاہدات کے تحت 90 نجی پاورپلانٹس لگائے جا چکے ہیں۔ نوے سیٹھوں کو پاکستان اب تک 8000ارب روپے ادا کر چکا ہے۔ ان آٹھ ہزار ارب روپوں میں خریدی جانے والی بجلی کی قیمت صرف تیس فیصد ہے۔ باقی ادائیگی کارخانوں کی کل پیداواری صلاحیت (capacity payment) کی مد میں کی گئی ۔سال 2013 ء میں نواز شریف صاحب نے حکومت سنبھالی تو اندھیرے دور کرنے کی خاطر پے در پے طویل المدت معاہدوں کے نتیجے میںپیداوارمیں 18000میگاواٹس کا اضافہ کر دیا۔سردیوں میں ہماری ضرورت اوسطاََ5000 میگا واٹ رہ جاتی۔ ادائیگی ہم 35000
مزید پڑھیے


دو افراد کی گرفتاریوں پرمختلف رد عمل !

اتوار 03  ستمبر 2023ء
فیصل مسعود
اب یہ نہیں کہ ایمان حاضر مزاری کے ساتھ یہ ہو ،تو آپ زور دار اداریہ لکھ دیں۔اُدھرآپ ایک زور دار اداریہ لکھیں،اِدھر ہم گھروں میں بیٹھے آبدیدہ ہو جائیں۔اگرانسانی حقوق ہیں تو سب انسانوں کے ہیں۔ یاکہ پھر یہ بھی آپ ہی نے طے کرنا ہے کہ کن کی گرفتاریوں پر منہ دوسری طرف کر لینا ہے اور کس گرفتاری پر سیخ پا ہونا ہے۔ مہینوں گزر گئے جو ہورہا ہے۔ آپ نیم دلانہ اظہارِتشویش تو کرتے رہے ہیںتاہم اظہارِ تشویش بھی ایسا کہ آئیں بائیں شائیں۔ ایک ہی سانس میں آگے پیچھے والی حکومتوںمیںہونے والی زیادتیوں سے
مزید پڑھیے


ایک طناب کے سہارے لٹکی قوم !

اتوار 27  اگست 2023ء
فیصل مسعود
کیا ہمارے ہاں اسٹیبلشمنٹ کا طاقتور ہونا ہی سویلین معاملات میں اس کی مداخلت کا بنیادی سبب ہے؟ ریاستیں اپنی دفاعی ضروریات سے ہر گزغافل نہیں رہتیں۔مگر ایسی ریاستیں جوجارحانہ عزائم رکھنے والے ہمسائیوں میں گری ہوئی ہوں،اپنے وسائل کا بڑا حصہ اپنے دفاع کے لئے مختص کرنے پر مجبور رہتی ہیں۔ ہمارے ہاں ملک کو درپیش سیاسی، معاشی اور دیگر مسائل کو لے کر،ترقیاتی اور دفاعی اخراجات میں عدم توازن پر جواعتراضات اٹھائے جاتے ہیں ،انہیں سرے سے رد کرنا دشوار ہے۔تاہم دفاعی اخراجات کو استعماری عزائم رکھنے والے ہمسائے کی موجودگی میںایک خاص درجے سے نیچے لانا کس
مزید پڑھیے


حبس کے موسم کی ایک تاریک رات !

اتوار 20  اگست 2023ء
فیصل مسعود
رات کے پچھلے پہرکی اُداس تاریکی۔ حبس کا موسم۔جما ل دین یادوں کی راہداریوں میں بھٹک رہاتھا۔ برسوں پہلے ایک مشنری سکول کی خاتون وائس پرنسپل نے افسردگی کے عالم میں اُسے گھر بار بیچ کرسات سمندرپار منتقل ہونے کا بتایا تھا۔کہنے کو مشنری سکول تھا، تدریسی اور انتظامی سٹاف سارا مسیحی ،مگرطلباء کی اکثریت مسلمانوں کی تھی۔ امتحانات میں جو ’بوٹیاں‘ سکول کے باتھ رومز میں کھولتے ، وہیں گرا آتے۔ اسلامیات کا پرچہ جس روز ہوتا،سکول کا سٹاف ہیجانی کیفیت میں باتھ روموں کے چکر کاٹتا ۔ کئی برسوں پہلے، جمال دین خانیوال میںتعینات ہوا تھا۔ اس کی
مزید پڑھیے



بے توقیری، نا امیدی اور امید کا چراغ !

اتوار 13  اگست 2023ء
فیصل مسعود
بشرطیکہ مایوسی کا اظہار قابلِ دست اندازی پولیس نہ قرار پایا ہو، ازکارِ رفتہ سپاہی کو یہ کہنے میں کوئی تامّل نہیں کہ وطنِ عزیز جس طرح آج یاس و ناامیدی کے گہرے سیاہ بادلوں میں گھرا ہے کم ازکم ہماری عمر کے پاکستانیوں کواپنے ہوش میں ایسا ماحول یاد نہیں۔ سیاست اورمعاشرت میں زوال، معیشت میں ابتری اور سلامتی کو لاحق خدشات ۔سقوطِ پاکستان کا سیاہ ترین دن جنہوں نے اپنی آنکھوں سے دیکھا، بالخصوص اُن میں سے وہ کہ جنہوں نے جناح کے پاکستان کو بنتے بھی دیکھا ہو، اُن کے دکھ کا بیان تو ہمارے بس
مزید پڑھیے


کثیرالقومی ریاست کو ایک قوم بنانا !

اتوار 06  اگست 2023ء
فیصل مسعود
حال ہی میںممتاز پولیٹیکل اکانومسٹ نیاز مرتضیٰ کا ایک دلچسپ مضمون نظر سے گزرا۔ اپنے اس مضمون میں نیاز صاحب نے اقوامِ عالم کو دوبڑے حصوں میں تقسیم کرتے ہوئے حال ہی میں آزاد ہونے والی اُن 26 ریاستوں کے عروج وزوال کا اجمالی جائزہ پیش کیاہے جو جنگِ عظیم دوئم کے بعد نو آبادیاتی تسلط سے نجات پاکر وجود میں آئیں۔ اِن نوزائیدہ ریاستوں میں سنگاپور، مشرتی تیمور،بنگلہ دیش، پاکستان ، لبنان ، اریٹریا، جنوبی سوڈان، 6 عدد یوگوسلاوین ، جبکہ یوکرین سمیت 14 سابقہ سویت ریاستیں شامل ہیں۔اِن 26نو آزاد ریاستوں کو مزید تین گروپوں میں تقسیم کیا
مزید پڑھیے


کل سب لُو کی دعا مانگیں گے !

پیر 31 جولائی 2023ء
فیصل مسعود
جنرل مشرف کا استقبال دل وجان سے ہواتھا۔ امریکی اتحادی بننے پربھی کوئی خاص مزاحمت نہ ہوئی۔جلد ہی مگر اتحادیوں کے مابین اعتماد کا رشتہ کمزور پڑنے لگا تو وطنِ عزیز میں اسٹیبلشمنٹ کی مخالفت نے ایک وباء کی صورت اختیار کر لی۔اکیسویں صدی کا دوسرا عشرہ طلوع ہوا توبد اعتمادی عروج پر تھی۔ اسی دور میں بھارت کے اندر سرکاری سرپرستی میںفیک نیوز نیٹ ورک کا قیام عمل میں لایا گیا۔ مغربی دارلحکومتوں اور خود ملک کے اندر بیٹھے عالمی اسٹیبلشمنٹ کے کارندے ایک مربوط نیٹ ورک کے تحت یکسو ہو گئے۔ ہر ایرا غیرا نتھو خیرا،جب دیکھو جمہوریت
مزید پڑھیے


دہشت گردی اور عوامی حکومتیں !

اتوار 16 جولائی 2023ء
فیصل مسعود
خالصتاً جنگی کارروائیوں نے اگرچہ دہشت گرد تنظیموں کی افرادی قوت کو توڑا۔ کچھ مارے گئے، کچھ سرحد پارنکل گئے۔ مالی اعانت کے ذرائع مفقود ہوئے۔شہروں میںاُن کے سہولت کاروں کمزور ہوئے اور ہمدرد دفاعی پوزیشن لینے پر مجبور ہوئے۔ تاہم اگست 2021ء میں امریکی انخلاء کے نتیجے میں ہمارے اس وقت کے پالیسی سازوں کو جوڈرائونا خواب ستا رہا تھا ، آج اُس کی تعبیر ہمارے سامنے منہ پھاڑے کھڑی ہے۔دہشت گردی کا عفریت جستہ جستہ ہماری رگوں سے خون چوس رہا ہے۔فوجی آپریشنز کے نتیجے میں جو سرحد پار بھاگے تھے، ایک بار پھر صف آراء ہو
مزید پڑھیے


جنگ ابھی جاری ہے !

اتوار 09 جولائی 2023ء
فیصل مسعود
افواجِ پاکستان عشروں پر محیط دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑتے لڑتے ایک مستعد لڑاکا مشین میں بدل چکی ہیں۔جنرل ضیاء الحق کے ابتدائی برسوں میں ہماری نسل فوج میں آئی تو’ برطانوی‘ اور’ امریکی ‘جنریشنزکے بعد ستر کے عشرے اور جنگ کے فوراََ بعد کمیشن پانے والی ’پاکستانی جنریشن ‘کے افسران یونٹوں اور کمپنیوں کی کمان کر رہے تھے۔ ملک میں’اسلامائزیشن‘ کا عمل زورو شور سے جاری تھا کہ فوج بحیثیت ادارہ جس کے اثرات کے دائرے سے لاتعلق نہ تھی۔ سال1979ء میں جنرل ضیاء الحق نے ایک کتاب کے دیباچے میں لکھا،’’ایک اسلامی ریاست کی ’اسلامی فوج‘
مزید پڑھیے








اہم خبریں