Common frontend top

قادر خان یوسف زئی


پاک افغان پیچیدہ تعلقات اور چیلنجز


افغانستان کے ساتھ پاکستان کے تعلقات ہمیشہ مشترکہ تاریخ، ثقافت اور تزویراتی مفادات کا نازک توازن رہے ہیں۔ موجودہ منظر نامے، جہاں پاکستان خود کو افغان طالبان عبوری حکومت کی جانب سے افغان سرزمین کے غلط استعمال سے نمٹنے کے لیے چیلنجز کا سامنا کررہا ہے۔دونوں ممالک کے لوگوں کے درمیان ثقافتی وابستگی اور مذہبی روابط صورتحال بھی بڑھتی ہوئی پیچیدگی میں اضافہ کررہے ہیں۔گوکہ قریبی تعلقات نے تاریخی طور پر تعاون کو آسان بنایا لیکن اب یہ پاکستان کے لیے ایک چیلنج بن چکا ہے کیونکہ پاکستان اپنی سلامتی کے خدشات کو دور کرنا چاہتاہے۔ پاکستان نے دیگر اقوام
منگل 23 جولائی 2024ء مزید پڑھیے

دہشت گردی کی لعنت

منگل 16 جولائی 2024ء
قادر خان یوسف زئی
دو دہائیوں سے پاکستان دہشت گردی کی لعنت سے نبرد آزما ہے۔دہشت گردی نے پاکستان پر ایک طویل سیاہ سایہ ڈالا ہواہے، جس سے چھوٹے اور بڑے دونوں شہر متاثر ہو رہے ہیں۔ تاہم، صوبہ خیبر پختونخوا ، اکثر دہشت گردی کی سرگرمیوں کا مرکز رہا ہے۔ یہ خطہ، بلوچستان کے ساتھ، مختلف نام نہاد علیحدگی پسند، فرقہ وارانہ، نسلی اور بنیاد پرست گروہوں کے حملوں کی زد میں رہا ہے، جن میں سے اکثر کو دشمن بیرونی ریاستوں کی حمایت حاصل ہے۔ اس طرح کے واقعات کا متواتر ہونا ان علاقوں میں کام کرنے والے دہشت گرد نیٹ ورکس
مزید پڑھیے


انتہا پسندی کو غیر مؤثر کرنا ضروری

منگل 09 جولائی 2024ء
قادر خان یوسف زئی
دہشت گردی کے خلاف پاکستان کی جنگ طویل اور مشکل رہی ہے۔ 2000 کی دہائی کے اوائل سے، پاکستان اس میں گھرا ہوا ہے جس نے معاشی ترقی میں رکاوٹیں ڈالیں اور غیر ملکی سرمایہ کاری کو روکا۔ ماضی میں فوجی آپریشنز کے ذریعے حاصل ہونے والی نمایاں کامیابیوں کے باوجود، خاص طور پر خیبرپختونخوا اور بلوچستان میں دہشت گردی کی بحالی اس خطرے کی پیچیدگی کو واضح کرتی ہے۔اس چیلنج کی جڑیں کثیر جہتی ہیں۔ افغان طالبان حکومت کی اپنی سرزمین کو پاکستان کے خلاف دہشت گردی کی کارروائیوں کے لیے لانچنگ پیڈ کے طور پر استعمال ہونے
مزید پڑھیے


احتساب اور اصلاحات کا مطالبہ

منگل 02 جولائی 2024ء
قادر خان یوسف زئی
ایک ایسی معیشت میں جہاں ٹیکسوں کا بوجھ غیر متناسب طور پر غریبوں پر پڑتا ہے جبکہ اشرافیہ مختلف ٹیکس مراعات سے لطف اندوز ہوتے رہتے ہیں، ٹیکس کے نظام کی چھان بین اور اصلاح کرنا ناگزیر ہو جاتا ہے۔ کسی حکومت کی معاشی پالیسیاں اور ترجیحات اس کے بجٹ میں گہرائی سے جھلکتی ہیں، پاکستان ایک ایسے نازک موڑ پر ہے جہاں قابل ذکر ٹیکس اصلاحات نہ صرف مطلوب ہیں بلکہ مساوی ترقی اور مالیاتی استحکام کو یقینی بنانے کے لیے ضروری ہیں۔ ٹیکس نظام میں تفاوت کو دور کرنے کے لیے غیر معمولی اصلاحات کی ضرورت ہے۔ ان شعبوں
مزید پڑھیے


پاکستان ایک سکیورٹی سٹیٹ سے اکنامک پاور ہاؤس تک

منگل 25 جون 2024ء
قادر خان یوسف زئی
پاکستان اپنی تاریخ کے ایک اہم موڑ پر کھڑا ہے، جہاں اسٹریٹجک اقتصادی اقدامات اس کے عالمی قد کا تعین کر سکتے ہیں۔ اس تبدیلی کا مرکز امن کی راہداری کے منصوبے ہیں، جو اپنے پڑوسیوں کے ساتھ پاکستان کے سفارتی تعلقات کا مرکزہیں۔ ان منصوبوں میں پاکستان کو سلامتی کے زیر اثر بیانیہ سے معاشی خوشحالی کی طرف منتقل کرنے کا وعدہ کیا گیا ہے۔ دہشت گردی میں حالیہ اضافہ تشویشناک ہے۔ پچھلے تین چار سالوں میں ان واقعات کی تعدد اور شدت میں نمایاں اضافہ ہوا ہے۔ ان میں سے زیادہ تر حملے خیبر پختونخوااور بلوچستان میں ہوئے
مزید پڑھیے



اقتصادی اہداف :پاکستان اور عالمی تبدیلیاں

منگل 11 جون 2024ء
قادر خان یوسف زئی
چین نے 2024 ء کے لیے بڑے اقتصادی اہداف مقرر کیے ہیں۔ چین ایک اقتصادی عالمی قوت ہے جو تمام تر چیلنجوں کے باوجود عالمی قوتوں کے لئے لوہے کا چنا ثابت ہو رہا ہے۔ در پیشن چیلنجز کے باوجود اعلیٰ معیار کی ترقی کے لیے چین کا عزم اہم ہے۔ دنیا کو معاشی طاقت میں نئی تبدیلی کا سامنا ہے۔ 2050 تک، ایشیائی ممالک کی معیشتوں کے یورپ اور امریکہ کی معیشتوں کو پیچھے چھوڑنے کی توقع ہے۔معاشی طاقت میں یہ تبدیلی عالمی تجارت، سرمایہ کاری اور جغرافیائی سیاست کو نئی شکل دینے کے لیے تیار ہے۔ توقع کی
مزید پڑھیے


افغانستان میں دھماکہ خیز باقیات کے خطرات!

منگل 04 جون 2024ء
قادر خان یوسف زئی
جنگوں ، تنازعات اور مسلح گروہوں اور افواج کے درمیاں تصادم کے اثرات کئی دہائیوں تک انسانوں کے لئے خطرات کا باعث بنے رہتے ہیں، جس کی مثال بارودی سرنگوں ، اورجنگ کی دھماکہ خیز باقیات (ERW) کا خطرہ ہے۔ غیر ملکی افواج کے انخلا کے بعد افغانستان میں شہریوں کو کئی دہائیوں کے تنازعات کے بعد ان چھپے ہوئے خطرات ، بارودی سرنگوں سے مسلسل خطرات کا سامنا ہے۔ افغانستان کیتقریباً 4 ملین افراداور ایک اندازے کے مطابق 1.2 ملین مربع میٹر آلودہ زمین کیخطرات کا سامنا ہے۔ جہاں دھماکہ خیز خطرات عام شہریوں کی
مزید پڑھیے


ایران کے لیے ایک اہم موڑ؟

جمعه 24 مئی 2024ء
قادر خان یوسف زئی
صدر ابراہیم رئیسی کا انتقال ایران کی عصری تاریخ میں ایک اہم لمحہ ہے۔ ایران کے اہم اور مختلف شہروں سے ہوتے ہوئے ان کا جسد خاکی مشہد میں پہنچا جہاں امام رضا علیہ السلام کے مزار کے قریب سپرد خاک ہوئے۔ صوبہ خراسان میں واقع یہ شہر صرف تدفین کی جگہ نہیں بلکہ رئیسی کی شناخت کا ایک اہم حصہ ہے۔ مشہد میں پیدا ہوئے اور تعلیم حاصل کی، رئیسی کی اپنے آبائی شہر میں آخری واپسی ان کی زندگی کے مکمل دائرے کی علامت ہے۔ابراہیم رئیسی کی زندگی اور کیریئر مشہد سے گہرا متاثر تھا۔ یہیں
مزید پڑھیے


بی جے پی کی ہند و، مسلم منافرت پر مبنی سیاست

منگل 14 مئی 2024ء
قادر خان یوسف زئی
بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) طویل عرصے سے مذہبی تعصب اور تفرقہ انگیز حربے استعمال کر رہی ہے۔ جس کی قیادت وزیر اعظم نریندر مودی اور وزیر داخلہ امت شاہ کر رہے ہیں۔ اس کی تازہ ترین مثال وزیر اعظم کی اقتصادی مشاورتی کونسل کی ایک رپورٹ کا جاری ہونا ہے۔ انتخابی عمل کے دوران یہ شوشہ چھوڑ دیا گیا کہ ملک میں مسلمانوں کی آبادی میں تیزی کے ساتھ اضافہ ہو رہا ہے۔ وزیر اعظم کی اقتصادی مشاورتی کونسل کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ میں دعوی کیا گیا ہے کہ 1950ء سے 2015ء کے درمیان
مزید پڑھیے


وسط مدتی انتخابات کی ممکنہ تیاریاں ؟

منگل 07 مئی 2024ء
قادر خان یوسف زئی
پاکستان مسلم لیگ ن کی حکومت، جو کہ سیاسی جماعتوں کے اتحاد پر مشتمل ہے، اہداف اور حکمت عملیوں کے ساتھ وہ خود کو ایک ایسے نازک موڑ پر پاتی ہے، جس میں متعدد چیلنجز اور غیر یقینی صورتحال موجود ہے۔ وزیر اعظم شہباز شریف کی قیادت میں حکومت کی تشکیل سیاسی اتحادوں کے حسابی امتزاج کی عکاسی کرتی ہے، جس میں پاکستان مسلم لیگن اور پاکستان پیپلز پارٹی جیسے اہم کھلاڑی شامل ہیں۔ تاہم، ایک نازک مینڈیٹ اور مشکل معاشی حقائق کے پس منظر کے درمیان، آگے کا راستہ پیچیدگیوں اور غیر یقینی صورتحال سے بھرا ہوا
مزید پڑھیے








اہم خبریں