BN

قدسیہ ممتاز

خونی و بادی انقلاب


وہ پاکستانی ہی کیا جس کا اپنی پوری زندگی میںکم سے کم ایک مارشل لا، الیکشن، دھاندلی،ہڑتال، سرکاری ریکارڈ کی آتش زدگی ، کالا باغ ڈیم پہ احتجاج اور وی آئی پی موومنٹ سے پالا نہ پڑا ہو جسے عرف عام میں روٹ لگنا کہتے ہیں ۔چناچہ آپ نے گھنٹوں روکے گئے ٹریفک میں بیزار کن انتظار کے دوران دور تک سنسان سڑک دیکھی ہوگی۔ پھر نیلی بتی والی موٹرسائیکلوں اور سائرن لگی گاڑیوں کی ایک ڈار نمودار ہوتی تو کچھ امید بندھتی کہ اب جس منحوس نے گزرنا ہے وہ گزر ہی جائے گا۔اس کے بعد چمکتی لشلشاتی
منگل 18  ستمبر 2018ء

و من بیمار۔ می گردم

هفته 15  ستمبر 2018ء
قدسیہ ممتاز
میں نے رومی کو دیکھاجب وہ جمعہ کے ہفتہ وار خطبے کے لئے مسجد تشریف لائے۔انہوں نے قیمتی لباس پہن رکھا تھا۔ ان کے بادل جیسے سفید گھوڑے کی ایال میں سونے کے نازک موتی پروئے ہوئے تھے۔اس کی زین پہ باریک زری کا کام تھا اور قونیہ کی دھوپ میں اس کی چمک آنکھوں کو خیرہ کئے دیتی تھی۔ عشاق و طلاب کے پر مشتاق ہجوم میں وہ جہاں سے گزرتے مشک و عنبر کی خوشبو پھیل جاتی۔علم و حکمت کی پراسرار مہک اس کے علاوہ تھی۔تقرب الہیہ اور حکمت الوہی کی رازداری کی مہک جس سے مشام
مزید پڑھیے


خواہشات و امکانات

جمعرات 13  ستمبر 2018ء
قدسیہ ممتاز
پاکستان میں ہر آنے والی حکومت گذشتہ حکومت کے متعلق یہی کہتی ہے کہ وہ اسے ورثے میں خالی خزانہ اور بدحال معیشت دے گئی اور بدقسمتی سے یہ سچ بھی ہوتا ہے۔ماضی میںپاکستان میں معاشی پالیسیاں جزوی طور پہ ملکی ضروریات کے پیش نظر نہیں بلکہ کسی مخصوص افراد یا انڈسٹری کے فائدے کو مد نظر رکھ کے بنائی گئیںاور انہوں نے معاشی خسارے میں اہم کردار ادا کیا۔ اس کی وجہ برسر اقتدار خاندان کا تجارت سے وابستہ ہونا یا کرپشن اور منی لانڈرنگ کے ذریعے لگائی گئی مخصوص انڈسٹریوں کی ملکیت ہے۔اسی کی دہائی
مزید پڑھیے


اصل گیم چینجر

منگل 11  ستمبر 2018ء
قدسیہ ممتاز
امریکی وزیر خارجہ مائک مومپیو پاکستان سے ہوتے ہوئے بھارت پہنچے جو دراصل ان کی منزل مقصود تھا۔ پاکستان آنا ان کی سفارتی مجبوری بھی ہوسکتی ہے یا ممکن ہے وہ علم الیقین سے زیادہ عین الیقین کے قائل ہوں اور اپنی گنہ گار آنکھوں سے نئے پاکستان کے اس سربراہ کا دیدار کرنا چاہتے ہوں جو عنفوان شباب سے ہی بدتمیز مشہور تھا۔ مجھے تو یہ بھی شک ہے کہ اس کی تصدیق کرنے انہیں صدر ٹرمپ نے ہی بھیجا ہوگا کہ جائیوذری دیکھ تو آئیو، سچ مچ بدتمیز ہے یا ہمیں ڈرانے کے لئے مشہور کردیا
مزید پڑھیے


بارے بدن بولی کچھ بیان ہوجائے

هفته 08  ستمبر 2018ء
قدسیہ ممتاز
انگریزی اصطلاح باڈی لینگویج کا ترجمہ کسی ظالم نے کیا ہی خوب کیا ۔بدن بولی۔بدن بولی یا باڈی لینگویج بدن کی وہ زبان ہے جو الفاظ سے بالا ہوتی ہے۔اسے سنا نہیں جاسکتا البتہ محسوس کیا جاسکتا ہے۔یہ زبان کسی سے ملاقات کے دوران بے ساختہ طور پہ جاری رہتی ہے اور کبھی کبھی ارادتا اپنا لی جاتی ہے۔ پہلی صورت میں یہ عموماً کسی شخص کی فطری عادات و اطوار کا مظہر ہوتی ہے۔ اس کی عمومی زندگی کی نشست و برخاست ، گفتگو حتی کہ اس کی اخلاقیات بھی اس کی بدن بولی کا
مزید پڑھیے


اڑتالیس سال سے ایک پیج پہ

جمعرات 06  ستمبر 2018ء
قدسیہ ممتاز
عین اس وقت جب امریکی سیکریٹری اسٹیٹ مائک پومپیو پاکستان میں قدم دھرنے کی تیاری کر رہے تھے ، افغانستان سے مولوی جلال الدین حقانی کی وفات کی خبر جاری ہوئی۔مجھے احساس ہے کہ ملک کے تجزیہ کاروں کے لئے اول الذکر کی آمد آخر الذکر کی رفت سے زیادہ اہم موضوع ہے لیکن میرا ذہن جلال الدین حقانی میں الجھ سا گیا ہے۔بات طبائع نازک پہ گراں تو گزرے گی لیکن کہے بغیر چارہ بھی نہیں ۔کچھ باتیں دل پہ قرض ہوتی ہیں۔ نہ کہی جائیں تو بوجھ بڑھتا جاتا ہے۔ سود در سود۔ماہ بہ ماہ۔سال بہ سال۔پورے سترہ
مزید پڑھیے


گردشی قرضے،قرض کی مے اور ہماری ترجیحات

منگل 04  ستمبر 2018ء
قدسیہ ممتاز
پاکستان نازک دور سے نکل کر مزاحیہ دور میں داخل ہوچکا ہے۔ یہ وزیراعظم پانچ سال ہنساتا ہی رہے گا۔عجیب وزیر اعظم ہے۔ اسے خبر ہی نہیں ڈی پی او تبادلہ کیس میں آج سپریم کورٹ میں کیا ہوا۔بھئی ساری خدائی ایک طرف ۔باقی محاورہ سب اپنے ذوق کے مطابق پورا کرلیں اور ہاتھ پہ ہاتھ مار کر ٹھٹھا لگائیں۔ ایک سابق وفاقی وزیر نے ازراہ تفنن کہا: دیکھتے ہیں یہ حکومت گیارہ کھرب روپے کا گردشی قرضہ کیسے ادا کرتی ہے۔ کاش وزیر موصوف چین میں ہوتے۔ اول تو وزیر بننے کی نوبت نہ آتی،قسمت کے زور پہ بن
مزید پڑھیے


ورفعنا لک ذکرک

هفته 01  ستمبر 2018ء
قدسیہ ممتاز
معاملہ کچھ یوں نہیں کہ اس بار بات ٹل گئی ہے۔ معاملہ یوں بھی نہیں کہ یہ آخری بار ہوگا۔ معاملہ یہ بھی نہیں کہ مغرب کو اس صورتحال کی نزاکت کا ادراک نہیں ہے۔ وزیر اعظم عمران خان مغرب کو ہم سے بہتر جانتے ہیں۔ شاید جب انہوں نے گستاخانہ خاکوں کے متعلق مغرب کی لاعلمی یا بے خبری کی بات کی ہو تو ان کی مراد مغربی عوام ہوں۔ مغربی میڈیا بالخصوص مغربی پریس ناموس رسالت ﷺاور توہین مذہب کی حساسیت سے نہ صرف واقف ہے بلکہ وہ اس معاملے میں دو قدم آگے بڑھا کر ایک قدم
مزید پڑھیے


تاریخ کا فیصلہ کن موڑ اور عمران خان

جمعرات 30  اگست 2018ء
قدسیہ ممتاز
بدقسمتی سے ستر سالوں میں پاکستان کی خارجہ پالیسی کا محور واشنگٹن رہا ہے۔ اس میں کلیدی کردار جہاں ہمارے وردی پوش حکمرانوں کا رہا ہے وہیں سادہ لباس والے بھی کسی سے پیچھے نہیں رہے۔ دیکھا جائے تو ہماری خارجہ پالیسی سات دہائیوں میں کبھی کسی جوہری تو کیا سطحی تبدیلی سے بھی نہیں گزری اور اس کی لرزتی کانپتی قطب نمائی سوئی ہر حال میںامریکہ کی طرف رخ کئے کانپتی اور جان کی امان مانگتی رہی۔ ساٹھ کی دہائی میں جان ایف کینیڈی نے دنیا میں کمیونزم کے اثر و رسوخ کو روکنے کے
مزید پڑھیے


آؤ مذاکرات کریں

منگل 28  اگست 2018ء
قدسیہ ممتاز
افغانستان میں بیک وقت طالبان کی امریکی افواج اور افغان حکام کے ساتھ جھڑپیں ، امریکی ڈرون حملے اور ان پہ پینٹاگون کی خاموشی بھی جاری ہے اور ساتھ ہی کئی ڈپلومیسی ٹریک بھی عمل پذیر ہیں۔ستمبر میں ہونے والی ماسکو امن کانفرنس میں طالبان کے ساتھ مذاکرات متوقع ہیں جن میں شرکت سے تاحال امریکہ اور افغان حکومت نے معذرت ظاہر کردی ہے۔ افغانستان میں اصل فریق تو طالبان اور امریکہ ہیں ۔کسی ایک فریق کے بغیر آپ بارہ ممالک کا اجلاس بلا کر گڑ والی چائے تو پی سکتے ہیں مسئلے کا حل نہیں نکال سکتے۔معلوم ہوتا
مزید پڑھیے