BN

مجاہد بریلوی



مولانا کا مارچ …(3)


حضرت مولانا فضل الرحمٰن کے لانگ مارچ کی countdownیعنی بہ زبان اردو گنتی شروع ہوگئی ہے۔جس وقت آپ یہ تحریر پڑھ رہے ہونگے ۔ ۔ ۔ آگے محض دس دن رہ جائیں گے۔تمام تر اندرون اور معتبر ذرائع کے مطابق بیرون دباؤ کے باوجود حضرت مولاناڈٹے ہوئے ہیں،کہ تمام رکاوٹیں توڑتے ہوئے سارے ملک کے شہروں سے اُن کے حامی لانگ مار چ کرتے ہوئے 31اکتوبر کو اسلام آباد پر دھاوا بولیں گے۔حضرت مولانا کی قابل رشک صحت پر تو بہر حال داد دینی پڑتی ہے کہ صبح کوئٹہ میں ہوتے ہیں ،شام اسلام آباد اور پھر اُسی شب
بدھ 16 اکتوبر 2019ء

مولانا کا مارچ ……(2)

هفته 12 اکتوبر 2019ء
مجاہد بریلوی
جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن نے اسلام آباد میں دھرنا بلکہ دھاوے کو 27اکتوبر سے تبدیل کرکے 31اکتوبر کردیا ہے۔ مگر قومی سیاست کے نباض جہاندیدہ مولانا فضل الرحمٰن کی سیاسی حکمت ِ عملی بلکہ چابکدستی دیکھیں کہ انہوں نے اپنے لانگ مارچ کے آغاز کی تاریخ 27اکتوبر ہی رکھی ہے اور وہ بھی اپنے آبائی شہر ڈیرہ اسماعیل خان یا سیاسی گڑھ پشاور سے نہیں کہ وہاں اُن کے بدترین مخالف کی حکومت ہے۔ مولانا آغاز کرنے جارہے ہیں اپنے اس لانگ مارچ کا سندھ کے دوسرے بڑے شہر سکھر سے جہاں اُن کے دیرینہ اتحادی
مزید پڑھیے


مولانا کا مارچ

بدھ 09 اکتوبر 2019ء
مجاہد بریلوی
میڈیا ، یعنی پرنٹ میں چار اور اسکرین میں دو دہائی سے آواز لگانے کے سبب،وطن ِ عزیز کے کم و بیش سارے ہی قومی سیاسی قائدین سے چاہے وہ اپنے اپنے وقت میں حکمراں ہو ں یا حزب اختلاف میں ، رو بہ رو یا دو بہ دو بھی کہہ لیں ،تواتر سے معروف اصطلاح میں ،’’آف دی ریکارڈ‘‘اور ’’آن دی ریکارڈ‘‘برسہا برس ملاقاتیں رہیں۔مرحومین میں خان عبدالولی خان،نوابزادہ نصراللہ خاں، میر غوث بخش بزنجو، بینظیر بھٹو،قاضی حسین احمد کی یادوں کا ذکر لے بیٹھا تو اصل موضوع یعنی مولانا فضل الرحمٰن کے مارچ سے دور ہوجاؤںگا۔آگے
مزید پڑھیے


میر ؔ کیا سادہ ہیں۔۔۔ 3

هفته 05 اکتوبر 2019ء
مجاہد بریلوی
اسکرینیں دیکھ لیں۔ ۔۔ اخبارات کے صفحہ ٔاول کی شہ سرخیاں دیکھ لیں۔ ۔ ۔ اقوام ِ متحدہ میںہمارے وزیر اعظم عمران خان کی 27ستمبر کو دھواں دا ر تقریر کی بازگشت ہر آنے والے دن کے ساتھ دھیمی پڑتی جارہی ہے۔Poorمحاورے کی زبان میں کہہ رہا ہوں مظلوم کشمیری جن کی شہادتیں ایک لاکھ سے بڑھ گئی ہیں اور جو اپنی خونی تاریخ کی سب سے بڑی جنگ لڑتے ہوئے 60ویں دن بھی کرفیو میں محصور ہیں ،اب ہمارے میڈیا میں ’’بریکنگ نیوز‘‘ سے نکل کر ایک دو پیکجوں اور اخبارات کے آخری صفحات پر دو تین کالموں
مزید پڑھیے


میر ؔ کیا سادہ ہیں۔ ۔ ۔ 2

بدھ 02 اکتوبر 2019ء
مجاہد بریلوی
شاعر ِ عوام حبیب جالبؔ یاد آرہے ہیں۔چند مصرعوں میں اتنی بڑی بات کہہ جاتے کہ سینہ بہ سینہ سارے ملک میں پھیل جاتی ۔اُن کی نظمیں ترانے اور نعرے بن جاتے ۔اب نظم ’’دستور‘‘ ہی کو لے لیں: ایسے دستور کو صبح ِ بے نور کو میں نہیں مانتا… میں نہیں جانتا جب پہلی بار لاہور کے موچی دروازے پر پڑھی اور جس پر ایوبی آمریت میںپہلی گرفتاری بھی ہوئی تو ایوب خان کے 1962کے دستور کے
مزید پڑھیے




میر کیا سادہ ہیں۔ ۔ ۔

هفته 28  ستمبر 2019ء
مجاہد بریلوی
ایک زمانہ تھا ۔ ۔ ۔ اور یہ زمانہ کم و بیش تین دہائیوں پر مشتمل ہے۔کہ ہماری مہاجر پھر متحدہ قومی موومنٹ کے مرکزی قائد اور سابق میئر ڈاکٹر فاروق ستار اٹھتے بیٹھتے اسکرینوں ا و ر ریلیوں میں یہ شعر پڑھتے نظر آتے کہ : میرؔ کیا سادہ ہیں بیمار ہوئے جس کے سبب جس کا دوسرا مصرعہ پڑھتے ہوئے ذرا جھجک محسوس کرر ہا ہوں ۔مگر پہلے مصرعے کے ساتھ دوسرا مصرعہ پڑھنا اس لئے ضروری ہے کہ جس حوالے کے ساتھ یہ شعر پڑھا جاتا ہے۔ ۔ ۔ اُس سے ایک مکمل بیانیہ
مزید پڑھیے


کیا کوئی جواز ہے ؟

بدھ 25  ستمبر 2019ء
مجاہد بریلوی
ستمبر جسے ستمگر مہینہ بھی کہا جاتا ہے ، سفارت کاری کے اعتبار سے مملکت خداداد پاکستان اور اس کی شہ رگ کشمیر کی تحریک ِ آزادی پر کتنا بھاری پڑا ،اس کی بہت زیادہ تفصیل میں نہیں جاؤں گا۔۔ ۔ کہ ایک تو یہ ابھی جاری ہے۔ ۔ ۔ پھر ہمارے وزیر اعظم عمران خان کا پہلی بار اقوام ِ عالم کے بے حس نمائندوں کے سامنے خطاب بھی ہے۔ورنہ 5اگست کے بعد سے ہماری وزارت خارجہ کے بابوؤں، خاص طور پر اقوام ِ متحدہ اور واشنگٹن میں برسوں سے پر تعیش مشاہرہ لینے والوں کی جو
مزید پڑھیے


اسکندر مرز ا کی یادداشتیں

هفته 21  ستمبر 2019ء
مجاہد بریلوی
ہمارے صحافتی استاد برادرِ عزیز اشرف شاد برسہا برس سے رہتے تو سڈنی میں ہیںمگر ہوتے پاکستان میں ہیں۔ئ70کی دہائی کے آخری دموں پر جب جنرل ضیاء الحق کا مارشل لاء آیاتو اس کی ضرب ِ کاری سیاست سے زیادہ پہلے صحافت پر لگی۔پریس ایڈوائس اخبار و جرائد کی بندش ،اور گرفتاریوں کے بعد پھر نوبت کوڑوں جیسی بہیمانہ سزاؤں پر آگئی تو پیٹ سے لگی قلم کی صحافتی برادری کب تک مارشل لائی استبداد کا مقابلہ کرتی۔اکثریت تو یوں بھی بھٹو دشمنی میں پہلے ہی مردِ مومن کے حلقہ ٔ یاراں میں تھی۔رہی اقلیت تو بیروزگاری کا خون
مزید پڑھیے


وزارت خارجہ کے بابوؤں سے

بدھ 18  ستمبر 2019ء
مجاہد بریلوی
وزیر اعظم عمران خان اپنے وفد کے ہمراہ اقوام متحدہ جانے کے لئے پا بہ رکاب ہیں۔یقینا ایک ایسے وقت میں جب بھارت کے زیر تسلط جموں و کشمیر میں درندگی اور بے رحمی کے سارے ریکارڈ ٹوٹ چکے ہیں۔اقوام متحدہ کا 21ستمبر سے شروع ہونے والا اجلاس جس میں ہمارے وزیر اعظم ،بھارتی وزیر اعظم کے بعد خطاب کریں گے۔۔ ۔ انتہائی اہمیت کا حامل ہوگا۔پہلی خوش آئند بات یہ ہے کہ تحریک انصاف کے قائد وزیر اعظم عمران خان کا یہ دورہ اس اعتبار سے منفرد اور قابلِ ستائش ہے کہ اس میں شرکت کرنے والوں
مزید پڑھیے


صدرِپاکستان۔ ۔ ۔ ؟

هفته 14  ستمبر 2019ء
مجاہد بریلوی
میرا پاکستان ہے نہ تیرا پاکستان ہے اُس کا پاکستان ہے جو صدرِ پاکستان ہے جنرل محمد ضیاء الحق کی مارشل لائی دہشت کے دنوں میں بانی ِ پیپلز پارٹی ذوالفقار علی بھٹو کی پہلی برسی پر گڑھی خدا بخش میں بینر پر یہ شعر شاعرِ عوام حبیب جالب ؔ سے منسوب کر کے کسی جیالے نے بیچ چوراہے پر دو کھمبوں کے درمیان باندھ کر لگا دیا۔جالب ؔ صاحب جیل میں تھے۔ اُن تک یہ شعر پہنچ چکا تھا۔کراچی پریس کلب میں پیغام بھجوایا ’’یہ کسی مبتدی شاعر کا شعر ہے‘‘۔حکمرانوں کے خلاف جب میں شعر کہتا ہوں،تو شعری محاسن
مزید پڑھیے