BN

محمد عامر خاکوانی


وظیفہ


آج کل پی ٹی وی پر ڈرامہ غازی ارطغرل دکھایا جا رہا ہے۔ اس کا پہلا سیزن اردو ڈبنگ کے ساتھ ایک انٹرٹینمنٹ چینل سے دکھایا جا چکا ہے، اس ڈبنگ میں نام کو ارتغل کہا گیا تو یہی نام مشہور ہوگیا۔ ترک لب ولہجہ میں البتہ کردار اس نام کو’’ ارطرل‘‘ کہتے ہیں بلکہ بعض اوقات تو اس انداز سے کہ’’ ارطورو‘‘سنائی دیتا ہے، آخر میں ہلکا سا ’’ل‘‘ کا اشارہ ۔پچھلی والی اردوڈبنگ میںکرداروں کے ناموں کو خود ساختہ ایڈیٹنگ کے تحت بدل دیا گیاتھا۔ ارطغرل کو ارتغل، بامسے کو بابر، سیلجان کو شہناز، گوکچے کو روشنی اور
اتوار 10 مئی 2020ء

وہ جو منتظر ہیں

جمعه 08 مئی 2020ء
محمد عامر خاکوانی
کورونا وبا کے اثرات ملک کے ہر شعبے پر پڑے ہیں اور اس قدر گہرے کہ ان کا حقیقی اندازہ اگلے چند ماہ میں ہوگا۔ پاکستان میں بہت سی اچھی تنظیمیں سماجی خدمت کا کام کر رہی ہیں۔لاکھوں لوگوں کی زندگیوں میں انہوں نے آسانی پیدا کی۔ کورونا وبا کے باعث ان تنظیموں پر دبائو بڑھا ہے اور ان کے کارکنوںنے خود کو خطرے میں ڈال کر بے شمار متاثرین کی مدد کی۔ مسئلہ یہ ہے کہ پورا ملک متاثر ہوا بلکہ اوورسیز پاکستانی جو ہمیشہ سماجی خدمت کے لئے بڑھ چڑھ کر حصہ لیتے ہیں، وہ بھی کورونا
مزید پڑھیے


18ویں ترمیم پر بات کیوں نہیں ہوسکتی؟

منگل 05 مئی 2020ء
محمد عامر خاکوانی
کورونا کے باعث ہر قسم کی سرگرمیاںجمود کا شکار ہیں، سیاست پر بھی اس کے اثرات نظر آ رہے ہیں ۔ اٹھارویں ترمیم کی بحث نے البتہ کچھ ہل چل پیدا کی ہے ۔اگرچہ مدلل بحث کے بجائے دونوں اطراف سے طعن وتشنیع کو ترجیح دی جا رہی ہے۔ اٹھارویں ترمیم کے معاملہ کو پیچیدہ بنانے کے بجائے سمجھنے اور سمجھانے کی ضرورت ہے۔ یہ آئین میں ہونے والی ایک ترمیم ہے، جسے مروجہ اصول وضوابط کے مطابق یعنی دو تہائی اکثریت کے ساتھ پارلیمنٹ نے منظور کیا۔ اس سے پہلے بھی آئین میں ترامیم ہوئیں۔ اٹھارویں ترمیم کے بعد
مزید پڑھیے


پیادہ

اتوار 03 مئی 2020ء
محمد عامر خاکوانی
میں نے سامنے رکھا کاغذ تیسری بار اٹھایا اور پہلے حرف سے آخر تک اسے ایک بار پھر پڑھ گیا۔روایتی انداز میں لکھی چند سطریں،’’دیرینہ سیاسی کارکن ڈاکٹر خان انتقال کرگئے ۔انہیں قریبی قبرستان میں دفن کر دیا گیا، ان کی جماعت کے تمام کارکن اس سانحہ پر ملول ہیں ۔‘‘کاغذ رکھ کر میں نے کرسی کی پشت سے سر ٹکایا اورآنکھیں موند لیں۔ ذہن میںخان صاحب کی تصویر لہرائی ۔وہی دودھیا سپید سادہ لباس،گرے کلر کی واسکٹ میں ملبوس،سر پر جناح کیپ،ہاتھ میں سیاہ چمڑے کا بیگ اور مسکراتا چہرا۔یہ بیگ مختلف اخبارات، کاغذات اور پریس ریلیزوں سے
مزید پڑھیے


آخری سٹاپ

جمعه 01 مئی 2020ء
محمد عامر خاکوانی
دو تین سال پہلے ایک ترک ڈرامہ سیریز’’چھوٹی سی قیامت‘‘ اردو ڈبنگ کے ساتھ پاکستانی چینل پر دیکھی۔کہانی اور پروڈکشن غیر معمولی نہیں تھی، مگر اس کا بنیادی آئیڈیا بڑا شاندار اور پراثر تھا۔ ہر قسط میں نئی کہانی ملتی تھی۔ زندگی کے مختلف کرداروں کو فوکس کیا گیا تھا، کوئی سرکاری ملازم، تاجر، ہسپتال کی نرس، ڈاکٹر، گارڈ، ڈرائیور اور اسی طرح مختلف شعبوں کے عام لوگ۔زندگی کے تیز رفتار سفر میں مصروف یہ لوگ اپنے اپنے کاموں میں مصروف ہوتے ، کسی کے پاس سر کھجانے کی بھی فرصت نہ ہوتی، ایسے میں اچانک ایک پراسرار فرشتہ صورت
مزید پڑھیے



ارطغرل کو ناکام بنانے کی کوشش کیوں؟

بدھ 29 اپریل 2020ء
محمد عامر خاکوانی
آخر کار ارطغرل ڈرامہ پی ٹی وی پر نشر ہونا شروع ہوگیا۔ ارطغرل سے ہمارا رشتہ پچھلے سال جڑا اور کچھ ایسا کہ یہ ترک ڈرامہ سیریل حواس پر چھا گیا۔ اس کے بارے میںکئی بار فیس بک پوسٹوں میں تذکرہ کیا، کالم بھی لکھے اور ویڈیو بلاگ بھی بنائے۔ جس نے اسے شروع کیا وہ اس کے سحر میں ایسے گرفتار ہوا کہ نکل نہ پایا۔ بڑے بھائی طاہر ہاشم خاکوانی کو پچھلے سال پہلا سیزن جو ستر سے زائد قسطوںپر مشتمل ہے، کاپی کر کے دیا ، صرف چار پانچ دنوں بعد ان کا پیغام ملا کہ اگلا
مزید پڑھیے


سیکھنے کی باتیں

اتوار 26 اپریل 2020ء
محمد عامر خاکوانی
رمضان کا مہینہ شروع ہوچکا ہے، زیادہ سے زیادہ نیکیاں کمانے ، گناہوں سے توبہ اور مغفرت کا مہینہ۔اپنے پچھلے کالم میں فلسطینی نژاد امریکی سکالر شیخ عمر سلیمان کے رمضان کے حوالے سے بلاگز کا ذکر کیا اور چار نکات نقل بھی کئے۔ سچی بات ہے کہ اس نوجوان سکالر نے مجھے متاثر کیا ہے۔ سادہ اسلوب میں خوبصورت، دل میں اتر جانے والی باتیں ، ایسے پوائنٹس جن پر عام حالات میں غور نہیں کیا ہوتا۔ شیخ عمر سلیمان کی تحریروں اور ویڈیو بلاگز کے حوالے سے کچھ مزید باتیںاس کالم میں اور آئندہ تحریروں میں آتی رہیں
مزید پڑھیے


چار نئے عہد

جمعه 24 اپریل 2020ء
محمد عامر خاکوانی
پچھلے تین چار برسوں سے رمضان کی آمد پر رمضان ریزولوشن کے عنوان سے کالم لکھتا ہوں۔ مقصد یہی کہ رمضان کے مہینے سے زیادہ سے زیادہ فائدہ اٹھا یا جا سکے اور ان بابرکت ایام میں وہ کمٹمنٹ اور عہد کئے جائیں جو آگے جا کر پورا سال نفع دے سکیں۔ مختلف آئیڈیا ذہن میں آتے رہے، کچھ نیٹ پرتلاش کرنے سے رہنمائی ملی ، یوں ہر بار ان آئیڈیاز کو اپنے قارئین سے شیئر کیا۔یہ سوچ دامن گیر ہوتی ہے کہ اس آئیڈئے پر کسی ایک نے بھی عمل کیا تو اسے نفع پہنچنے کے ساتھ ہمارا بھی
مزید پڑھیے


پانچ سبق

منگل 21 اپریل 2020ء
محمد عامر خاکوانی
کورونا وبا کے کڑے دن ابھی ختم نہیں ہوئے، جزوی لاک ڈائون بھی چل رہا ہے، اللہ نے چاہا تو یہ مشکل وقت ختم ہوجائے گااور دنیا پھر سے اپنے معمول کے کاموں کی طرف لوٹ جائے گی۔ کورونا کے دوران ہم سب نے خاصا کچھ سیکھا ہے۔پانچ سبق ایسے ہیں جو ہم پاکستانیوں نے بھی سیکھ لئے ۔ ان میں سے تین کاتعلق اندرونی حالات سے جبکہ دوعالمی برادری خاص کر مغرب سے متعلق ہیں۔ کورونا کا مسئلہ شروع ہوااور معاملہ چین سے نکل کر دنیا بھر میں پھیلنے لگا تو سب کی نظریں امریکہ اور یورپ کی طرف گئیں۔
مزید پڑھیے


وبا کے دنوں میں ایک منفرد وصیت

اتوار 19 اپریل 2020ء
محمد عامر خاکوانی
چوبیس پچیس سال پہلے لاہور ملازمت کی غرض سے آیا تولاہور کو جاننے ، سمجھنے اور یہاں کی ثقافتی ، علمی تقریبات میں جانے کا شوق تھا۔ہاسٹل میں رہائش تھی، دفتر سے فراغت کے بعد کسی نہ کسی سمیناریا پروگرام میں بطور سامع پہنچ جاتا۔ ان دنوں موٹیویشنل سپیکرز کا معاملہ بالکل نیا نیا تھا۔ زیادہ تر کتابیں بھی انگریزی میں تھیں، بلکہ اگر کہیں پر ورکشاپ یا کورس کرایا جاتا تو وہ بھی انگریزی میں ہوتا۔عالمی شہرت یافتہ موٹیویشنل سپیکر اور ایکسپرٹ سٹیفن آر کووی ان دنوں اِن فیشن تھے، جم رون کا نام بھی مشہور تھا، مگر ان
مزید پڑھیے