BN

محمد عامر خاکوانی



پارلیمانی یا صدارتی نظام ؟


آج کل اچانک صدارتی نظام کی آوازیں آنے لگی ہیں بلکہ مختلف تجزیوں، ٹاک شوز میں یہ آپشن زیر غوربھی آنے لگا۔ آوازیں اتنی بلند بہرحال ہوئی ہیں کہ ان کا ردعمل بھی آیا۔ پیپلزپارٹی، ن لیگ اور اکثر سیاسی ، صحافتی حلقوں نے صدارتی نظام کی مخالفت اور پارلیمانی نظام کی حمایت میں آواز اٹھانا،اس کے لئے دلائل دینا شروع کر دئیے۔ ان میں سے بعض تو یوں سہمے ہوئے لگ رہے ہیں ، جیسے انہیں شبہ ہو کہ کسی صبح اٹھے تو ملک میں اچانک صدارتی نظام آ چکا ہوگا۔ میرے جیسے صحافت کے طالب علموں کی
اتوار 28 اپریل 2019ء

امید جگانے والے

جمعه 26 اپریل 2019ء
محمد عامر خاکوانی
کیا ہم پاکستانیوں کو ایک حوصلہ بڑھانے، امید جگانے والے افراد کی ضرورت ہے؟ ایسے لوگ جوعوام کا مورال بلند کریں، انہیں احساس کمتری سے نکالیں، کچھ مثبت اہداف سامنے رکھیں اور درست سمت میں محنت کرنے پر اکسائیں۔کیا یہ کام کسی موٹیوشنل سپیکر(Motivational Speaker)کے کرنے کا ہے؟کوئی ایک یا متعدد موٹیوشنل سپیکرز جو زندگی کے مختلف شعبوں میں کام کریں ، حوصلہ جگائیں اور نئی روح پھونکیں۔ ہمارے مین سٹریم میڈیا اور سوشل میڈیا پر صرف ایک ہفتہ گزارا جائے تو دیکھنے، پڑھنے والے کو شدت سے اس بات کا احساس ہوگا ۔ یوں لگتا ہے جیسے چاروں طرف سے
مزید پڑھیے


گیم آف تھرونز

منگل 23 اپریل 2019ء
محمد عامر خاکوانی
کیا آپ نے گیم آف تھرونز دیکھا ہے؟ یہ وہ سوال ہے جو آج کل بہت لوگ ایک دوسرے سے پوچھتے ہیں؟شائد اس لئے کہ گیم آف تھرونز کا آخری سیزن آج کل چل رہا ہے؟ یا پھر اس لئے کہ پاکستانی سیاست میں گیم آف تھرونز کی جھلکیاں پہلے بھی ملتی تھیں، مگر حالیہ چند دنوں میں ہونے والے سیاسی پیش رفت نے ایک بار پھر یہ امریکی ڈرامہ یاد کرا دیا۔ گیم آف تھرونز پر سوال اس قدر پوچھے جانے لگے اور سوشل میڈیا پر اتنے زیادہ تبصرے، سٹیٹس آ رہے ہیں کہ بعض لوگوں نے چڑ کر
مزید پڑھیے


یہ اختتام نہیں

اتوار 21 اپریل 2019ء
محمد عامر خاکوانی
سوال تازہ ترین سیاسی صورتحال سے جڑا ہوا ہے کہ کیا عمران خان سے وابستہ سیاسی رومان ختم ہوگیا؟ ان کے پاس اب کچھ کرنے کا مارجن نہیں رہا اور اب وہ کسی ایسی ٹیم کے کپتان ہیں، جس کے کھلاڑی اس کی طرف دیکھنے کے بجائے ہدایات کہیں باہر سے دیکھتے ہیں؟اسی کے ساتھ منسلک دو اور سوال بھی ہیں ۔ تحریک انصاف کے کارکن جس سوگ اور شکست خوردگی کی کیفیت میں ڈوبے ہیں، کیا وہ اس سے نکل پائیں گے اور حکومت کا کیا بنے گا؟ عمران خان کی کامیابی ، ناکامی پر کوئی
مزید پڑھیے


مکران کوسٹل ہائی وے سے ایوان اقتدار کی غلام گردشوں تک

جمعه 19 اپریل 2019ء
محمد عامر خاکوانی
ایک ہی دن ایک دوسرے سے انتہائی مختلف دوخبریں سامنے آئی ہیں۔ ایک دراصل خبر نہیں ، المیہ، سانحہ کی عکاسی ہے۔ بلوچستان میںمکران کوسٹل ہائی وے پر بسیں روک کر چودہ مسافروں کو اتار کر ، شناختی کارڈ دیکھ کر گولی مار دی گئی۔ خبر پڑھ کر رونگٹے کھڑے ہوگئے۔ تصور کیا جائے کہ بس میں سفر کرتا مسافر جو نصف شب کے وقت اونگھ کر وقت گزار رہا ہے، یہ تصور کہ چند گھنٹوں بعد اپنی منزل پہنچ کر بستر پر پرسکون نیند مقدر ملے گی۔اچانک بس رکے، نامعلوم مسلح افراد گاڑی میں گھس آئیں، شناختی کارڈ دیکھ
مزید پڑھیے




غیر مشروط مذمت، غیر مشروط حمایت

بدھ 17 اپریل 2019ء
محمد عامر خاکوانی
بات سادہ ہے کہ مذمت غیر مشروط ہونی چاہیے۔ لفظ چبائے بغیر۔ اگر ، مگر، چونکہ ، چناچہ کے بغیر ظلم اور قتل وغارت کی کھل کر مذمت کرنی چاہیے۔ جہاں ظلم ہو، کسی کمیونٹی کو نشانہ بنایا جائے، دہشت گرد ان پر حملے کریں۔ایسے مظلوموںکی غیر مشروط حمایت اور اس ظلم کی، قاتلوں اور دہشت گردوں کی غیر مشروط مذمت کرنا چاہیے۔ یہ وہ کم سے کم ردعمل ہے جو بطور ایک انسان، ایک مسلمان اورپاکستانی شہری کے طور پر ہم دے سکتے ہیں۔ کچھ کام حکومتوں، قانون نافذ کرنے والے اداروں کے کرنے کے ہیں۔ عام آدمی
مزید پڑھیے


باہر نکلنے کا راستہ

جمعه 12 اپریل 2019ء
محمد عامر خاکوانی

زندگی کے بعض سفر ایسے دلدلی، گنجلک اور پیچیدہ ہوتے ہیں کہ آگے چلے جانے کے بعد پیچھے مڑنے کا راستہ نہیں مل پاتا۔ آدمی واقعات کی دلدل میں یوں ڈوبتا چلا جاتا ہے کہ باہر نکلنا ممکن نہ رہے، آخری سانسوں تک اسے مہلت اور کبھی فرصت بھی نہیں مل پاتی کہ کسی طرح خود کو باہر نکال لے۔کبھی آگے جانے والوں پر جنگل کے سحرزدہ ماحول کا اثر ہوجاتا اور پلٹنے کی خواہش ہی دل سے مٹا بیٹھتے ہیں۔ ایسا بھی ہوا کہ واپسی کا سوچا، مگر نکلنے کا راستہ کچھ یوں بھول بھلیوں جیسا ملا کہ بھٹک
مزید پڑھیے


کیا عمران خان ناکام ہوچکے ؟

جمعه 05 اپریل 2019ء
محمد عامر خاکوانی
عمران خان کی حکومت کو سات ماہ کے لگ بھگ عرصہ گزر چکا ہے۔ اس کی کارکردگی پر اب بات ہونا شروع ہوگئی ۔ عام طور پر حکومتوں کو شروع کے تین چار ماہ میں رعایت دی جاتی ہے، اس کے بعد حکومتی ترجیحات اور پالیسیوں پر نرم، گرم تنقید کا سلسلہ شروع ہوجاتا ہے۔ وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ اس میں شدت آتی ہے۔عمران خان کی حکومت البتہ اس لحاظ سے بدقسمت ہے کہ ان پر پہلے دو تین ہفتوں کے بعد ہی تنقید شروع ہوگئی۔ وجہ سمجھنا زیادہ مشکل نہیں۔ منیر نیازی نے کہا تھاع کجھ شہر دے
مزید پڑھیے


افسوس،انضمام الحق ناکام ہوئے

بدھ 03 اپریل 2019ء
محمد عامر خاکوانی
مارچ کا مہینہ پاکستان میں کرکٹ کے شائقین کے لئے بہت اہم رہا ہے۔ اسی مہینے پاکستان نے اپنا واحد ورلڈ کپ جیتا۔ مجھے آج بھی اچھی طرح یاد ہے کہ چھبیس سال پہلے مارچ ہی میں ماہ رمضان آیا تھا۔ سحر ی کے وقت اٹھ کر پاکستانی ٹیم کے ورلڈ کپ میچز دیکھنا اور پھر روزہ رکھ کر ٹیم کے لئے دعائیں کرتے رہتے۔ ورلڈ کپ جیتنے کے بعد جاوید میانداد نے بیان بھی دیا تھا کہ رمضان کے مہینے میں قوم کی دعائوں کی وجہ سے اتنی بڑی کامیابی ملی۔ پاکستانی ٹیم کاغذوں پر ہرگز مضبوط
مزید پڑھیے


تصوف، صوفی یونیورسٹی اور داتا دربار لنگر

جمعه 29 مارچ 2019ء
محمد عامر خاکوانی
جمعرات کا دن لاہوریوں کے لئے ایک خاص اہمیت کا حامل ہے۔ ویسے تو یہ دن تصوف ، خانقاہوں اور مزارات کے حوالے سے ہر جگہ اہمیت رکھتا ہے۔ہم سمجھتے تھے کہ صرف پاک وہند میں جمعرات کو اہم سمجھا جاتا ہے، استنبول گئے تو معلوم ہوا کہ وہاں بھی صوفی اس دن کے خاص قسم کے تقدس کے قائل ہیں۔ ہمارے خطے میں تبلیغی جماعت نے بھی’’ شب جمعہ‘‘ کے بیان کے لئے جمعرات کی شام کا انتخاب کیا۔ ہر جگہ تبلیغی مراکز میں مغرب کی نماز کے بعد تبلیغی سرگرمی شروع ہو جاتی ہے۔ ہمارے تبلیغی
مزید پڑھیے