BN

محمد عامر خاکوانی


پانچ سبق


کورونا وبا کے کڑے دن ابھی ختم نہیں ہوئے، جزوی لاک ڈائون بھی چل رہا ہے، اللہ نے چاہا تو یہ مشکل وقت ختم ہوجائے گااور دنیا پھر سے اپنے معمول کے کاموں کی طرف لوٹ جائے گی۔ کورونا کے دوران ہم سب نے خاصا کچھ سیکھا ہے۔پانچ سبق ایسے ہیں جو ہم پاکستانیوں نے بھی سیکھ لئے ۔ ان میں سے تین کاتعلق اندرونی حالات سے جبکہ دوعالمی برادری خاص کر مغرب سے متعلق ہیں۔ کورونا کا مسئلہ شروع ہوااور معاملہ چین سے نکل کر دنیا بھر میں پھیلنے لگا تو سب کی نظریں امریکہ اور یورپ کی طرف گئیں۔
منگل 21 اپریل 2020ء

وبا کے دنوں میں ایک منفرد وصیت

اتوار 19 اپریل 2020ء
محمد عامر خاکوانی
چوبیس پچیس سال پہلے لاہور ملازمت کی غرض سے آیا تولاہور کو جاننے ، سمجھنے اور یہاں کی ثقافتی ، علمی تقریبات میں جانے کا شوق تھا۔ہاسٹل میں رہائش تھی، دفتر سے فراغت کے بعد کسی نہ کسی سمیناریا پروگرام میں بطور سامع پہنچ جاتا۔ ان دنوں موٹیویشنل سپیکرز کا معاملہ بالکل نیا نیا تھا۔ زیادہ تر کتابیں بھی انگریزی میں تھیں، بلکہ اگر کہیں پر ورکشاپ یا کورس کرایا جاتا تو وہ بھی انگریزی میں ہوتا۔عالمی شہرت یافتہ موٹیویشنل سپیکر اور ایکسپرٹ سٹیفن آر کووی ان دنوں اِن فیشن تھے، جم رون کا نام بھی مشہور تھا، مگر ان
مزید پڑھیے


ٹونی بیوزان کے تین مشورے

جمعه 17 اپریل 2020ء
محمد عامر خاکوانی
عالمی شہرت یافتہ مائنڈ ایکسپرٹ (آنجہانی) ٹونی بیوزان کے چار پانچ سال پہلے لئے گئے ایک غیر مطبوعہ انٹرویو کے چند اقتباسات اپنے پچھلے کالم میں شائع کئے تھے۔یہ انٹرویو میری کتاب کے لئے کیا گیا۔ٹونی بیوزان، مائنڈ میپ کا بانی ہے۔ سپیڈ ریڈنگ اورمیموری کے حوالے سے اس کی ڈیڑھ سو کے قریب کتابیں شائع ہوئیں۔ ٹونی بیوزان پاکستان اور پاکستانیوں کے لئے بہت اچھے خیالات رکھتا تھا۔ اس کی یہ پسندیدگی حقیقی تھی، ورنہ ایک ایسا نامور مائنڈ ایکسپرٹ جو دنیا کے بے شمار ممالک میں لیکچر دے چکا ہے، جسے مہنگے ترین سپیکرز میں شامل کیا جاتا
مزید پڑھیے


ٹونی بیوزان کی یاد میں

بدھ 15 اپریل 2020ء
محمد عامر خاکوانی
ٹونی بیوزان نامور برطانوی ماہر تعلیم، نفسیات اور مائنڈ سائنسز کے سپیشلسٹ اور دنیا کے چند مہنگے ترین موٹیویشنل سپیکرز میں سے ایک تھے۔ چار سال قبل وہ پاکستان آئے ، معروف ٹرینر، این ایل پی کے ماہر اور موٹیویشنل سپیکر عارف انیس ملک انہیں لے آئے تھے۔ لاہور کے ایک سمینار میں عارف بھائی کی دعوت پر شریک ہوا اور ٹونی بیوزان کی سحرانگیز گفتگو سننے کا موقعہ ملا۔ اسی سہہ پہر ٹونی کا تین چار گھنٹوں پر محیط انٹرویو کرنے کا موقعہ ملا۔ اس ایک ملاقات سے جتنا کچھ سیکھنے ، جاننے کا موقعہ ملا، وہ برسوں کے
مزید پڑھیے


زمین کانمک

منگل 14 اپریل 2020ء
محمد عامر خاکوانی
جناب احفاظ الرحمن کے بارے میں اگر ایک دو جملے لکھنے پڑیںتو یہی لکھوں گا کہ وہ ایسے بانکے سجیلے شمشیر زن تھے، جوآخری سانس، لہو کے آخری قطرے تک ڈٹے رہنے پر یقین رکھتے تھے۔اپنی عملی، صحافتی زندگی میں انہوں نے ایسا ہی کیا۔ انہوں نے قلم سے تلوار کا کام لیا، وہی تیزی، وہی کاٹ۔ احفاظ صاحب سے میری پہلی ملاقات 2005ء کے اواخر میں ہوئی، ان دنوں ایکسپریس میں میگزین انچارج تھا، احفاظ الرحمن ایک اخبار سے ریٹائر ہوئے تو انہیں یہاںمیگزین ایڈیٹر کی ذمہ داری سونپی گئی۔ کراچی مقیم تھے، لاہور آفس ان کا
مزید پڑھیے



سفید پوش ضرورت مندوں کے لئے کیا ہوسکتا ہے؟

جمعه 10 اپریل 2020ء
محمد عامر خاکوانی
جمعرات کی صبح ایک قریبی دوست کا فون آیا۔انہوں نے سنٹرل پنجاب کے ایک شہر سے تعلق رکھنے والے اپنے ایک عزیز کا تعارف کرایا ،جو عدالت میں کام کرتے تھے، مگر عدالتیں بند ہونے کی وجہ سے آج کل مشکلات کا شکار ہیں۔ چند منٹ بعد ان صاحب سے بات بھی ہوگئی وہ مقامی عدالت میں عرضی نویسی اور اسٹامپ فروشی کا کام کرتے تھے۔بڑی دل گرفتی سے بتانے لگے کہ میں ضرورت مند نہیں ہوں، اللہ کے فضل سے جب عدالتیں کھلی تھیں تو تیس پینتیس ہزار کے قریب کما لیتا تھا۔ عدالتیں بند ہوئے کئی ہفتے
مزید پڑھیے


انکوائری رپورٹ، چند اہم پہلو

بدھ 08 اپریل 2020ء
محمد عامر خاکوانی
سچ تو یہ ہے کہ وزیراعظم کی جانب سے چینی، آٹا بحران کے لئے تفصیلی انکوائری کراناا ورپھر اس رپورٹ کو میڈیا پر جاری کرنا مجھے اچھا لگا۔ یہ نئی ، خوشگوار روایت ہے ، اسے آگے بڑھنا چاہیے اور اس معاملے کو منطقی انجام تک پہنچانا چاہیے۔ رپورٹ کے حوالے سے چند پہلوئوں کی تفہیم اہم ہے۔ لوگوں کے ذہنوں میں چند سوالات پیدا ہوئے ہیں۔ انہیں یہ سمجھ نہیں آ رہی کہ شوگر ملز کو سبسڈی کیوں دی گئی یا یہ سبسڈی لینا جرم تھا ؟پہلے اسے سمجھ لیا جائے۔ حکومتیں مختلف ایکسپورٹ سیکٹر ز کو سبسڈی یا
مزید پڑھیے


وہ جو ہاتھ نہیں پھیلا سکتے

منگل 07 اپریل 2020ء
محمد عامر خاکوانی
اس وقت ایک نکتے پر حکومت اور تمام فلاحی تنظیموں کی توجہ مرکوز ہے کہ انتہائی ضرورت مندوںکی مدد کو پہنچا جائے۔ ان کے گھروں تک راشن پہنچایا جائے ،چند ہزار کی مالی مدد کی جائے تاکہ ان کڑے دنوں میں بقا کی جنگ لڑی جا سکے۔ یہ حکمت عملی درست ہے۔ بات سمجھ میں آتی ہے کہ جن کے پاس کچھ نہیں، پہلے ان کی مدد کی جائے۔ جو دیہاڑی دار لاک ڈائون کی وجہ سے گھروں میں بند ہیں ،فاقوں تک معاملہ پہنچ گیا ہے، ان کی مدد ترجیحی بنیادوں پر کرنی چاہیے۔ یہ سب درست ہے، مگر
مزید پڑھیے


کچھ فلموں کے بارے میں

اتوار 05 اپریل 2020ء
محمد عامر خاکوانی
کورونا کی وبا کے باعث کئی ہفتوں تک مقید رہنے والے لوگوں کے لئے مختلف پہلوئوں سے لکھ رہا ہوں۔ ان مشکل ، کٹھن دنوں کو کسی نہ کسی طرح گزارنا ہے۔ تمام تر طبی احتیاط کے بعد بہترین طریقہ یہ ہے کہ توبہ، استغفار، تلاوت میں وقت گزارا جائے۔تسبیحات کو بھی اپنی زندگی میں اہمیت دینی چاہیے کہ اللہ کا ذکر اور مسنون دعائیں بھی تھراپی کا ایک حصہ ہیں۔رب کریم سے گفتگو کر کے ، اپنی معروضات پیش کرکے جو سکون ملتا ہے، اس کا کوئی نعم البدل نہیں۔ اپنے فراغت کے لمحوں کا ایک حصہ کتابیں پڑھنے میں
مزید پڑھیے


یوٹیوب سے ٹورنٹ تک کا سفر

جمعه 03 اپریل 2020ء
محمد عامر خاکوانی
کوروناکے باعث لاک ڈائون میں توسیع ہوگئی ہے، اگلے دو ہفتوں کے لئے ملک بھر میں نوے فیصد سے زیادہ لوگ گھر رہنے پر مجبور ہوں گے۔ وبا کا موسم اور گھروں میں مقید فیملی، وقت گزارنا ہر ایک کے لئے مشکل ہو رہا ہے۔ اپنے گزشتہ کالموں میں بچوں کے حوالے سے کئی مشورے دئیے تھے کہ ان کے ساتھ کس کس طرح کی گیمز کھیلی جا سکتی ہیں، انہیں انگیج کرنے کے کیا طریقے ممکن ہیں۔ آج کے اس کالم میںروئے سخن بڑوں کی طرف ہے۔ خاص کر ہماری طرح کے دنیا دار لوگ، جو ٹی وی پر
مزید پڑھیے