BN

مریم ارشد


آخر یہ طوفان کب تھمے گا؟


انسانی ذہن میں کوئی بھی چیز ڈالنا در حقیقت باہر سے کسی بھی چیز کا اس میں ڈالنا نہیں ہے بلکہ اس کے ذہن کے سوتوں کو کھولنا ہے آج کل ہمارے سیاست باز اپنی خالی خولی باتوں میں تو جمہوریت اور عوامی مسائل کی بہت ڈینگیں مارتے ہیں۔ بھاری بھر کم لباس برانڈڈ جوتے مگر اصلیت ڈھونڈو تو کچھ بھی نہیں ہے۔ تکبر و غرور میں لپٹے ہوئے لہجے میں ہر پارٹی اپنے آپ کو بے مثال ثابت کرنے کی تگ و دو میں لگی رہتی ہے۔نئے امکانوں کے دروازے کھولنے کی کوئی بات نہیں کرتا۔ ماضی کے فضول
بدھ 30 نومبر 2022ء مزید پڑھیے

ہیں کواکب کچھ نظر آتے ہیں کچھ!

پیر 14 نومبر 2022ء
مریم ارشد
پاکستانی سیاست میں ہر وقت بھونچال آتے رہتے ہیں۔ سیاست کے گہرے سمندر میں جھوٹ، بدلے اور الزامات کی فیکٹری میں تیار ہونے والے دروغ گوئی کے زہر آلود کیمیائی مادے اس کی موجوں میں اْتھل پْتھل مچاتے رہتے ہیں۔ کئی مرتبہ سوچا کہ آج سیاست نہیں بلکہ بکھرتے سماج کے بہت نازک پہلوؤں پر لکھا جائے۔ مگر کیا کیا جائے، اس سیاسی طوفان کا جس کی شوریدہ لہروں کا شور کچھ اور لکھنے ہی نہیں دیتا۔ اب یہ ڈیلی میل کی خبر ہی کو دیکھ لیجیے۔ اب کچھ اور کہاں لکھا جائے۔ چلیے! پھر اسی پر ہی بات کر
مزید پڑھیے


کھوکھلے انسان یا سیاسی ناخْدا

اتوار 06 نومبر 2022ء
مریم ارشد
آج ٹی۔ ایس ایلیٹ کی نظم Men Hollow The یاد آ رہی ہے جس کا ترجمہ میں نے چند برس پہلے کیا تھا۔ وہ ترجمہ کچھ یوں تھا: ہم ہیں کھوکھلے انسان بْھس بھرے ہوئے انسان سیکھتے ہیں اِک دْوجے سے ہم مگر افسوس! سروں میں ہے بھْوسہ بھرا ہوا آوازیں بھی ہوتی ہیں بے اثر جب آپس میں کرتے ہیں سر گوشیاں جو ہوتی ہیں مسکین اور بے اثر جیسے خشک گھاس میں ہوا کی سر سراہٹ یا چوہوں کے پاؤں چلتے ہوں شکستہ شیشوں پر ہمارے سوکھے ہوئے گوداموں میں صورتیں بغیر شکل کے اک بے رنگ سا سایہ ہے مفلوج سی اک طاقت ہے اور اشارے
مزید پڑھیے


لانگ مارچ کا ہدف

منگل 01 نومبر 2022ء
مریم ارشد
بالآخرلاہور سے اس لانگ مارچ کا آغاز ہو ہی گیا جس کی بہت عرصے تاریخیں دی جا رہی تھی۔ 28 اکتوبر کو لبرٹی چوک لاہور سے نمازِ جمعہ کے بعد سابق وزیرِ اعظم عمران خان نے عوام سے خطاب کیا اور لانگ مارچ کا قافلہ روانہ ہو گیا۔ تین ساڑھے تین بجے تک تو شاید بہت زیادہ لوگ نہیں تھے مگر پھر لوگ ملتے گئے اور کاررواں بنتا گیا کے مصداق لوگ اس مارچ میں بڑھتے ہی چلے گئے۔ فیروز پور روڈ پر چلتے ہوئے اچھرہ پر رک کر عمران خان نے پھر لوگوں کو متحرک کیا اور یہ قافلہ
مزید پڑھیے


بدلے کی سیاست اور توشہ خانہ

پیر 24 اکتوبر 2022ء
مریم ارشد
مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے: پاکستان کا پہلا سرٹیفائیڈ، جھوٹا اور سند یافتہ چور ناقابل تردید ثبوتوں کے ساتھ نا اہل ہوا ہے۔مزید کہا : اس کی سزا صرف نا اہلی پر ختم نہیں ہونی چاہیے بلکہ اس کو گرفتار کر کے قانون کے سامنے پیش کر کے لوٹا پیسہ واپس لینا چاہیے۔ کچھ دن پہلے مریم نواز نے یہ بھی کہا تھا:نواز شریف معصوم تھا جو سزائیں نواز شریف نے بھگتیں، وہی سزائیں اس کو بھی بھگتنی پڑیں گی۔ توشہ خانہ ریفرنس میں پاکستان تحریکِ انصاف کے سربراہ اور سابق وزیرِ اعظم عمران
مزید پڑھیے



گلابی اکتوبر اور پِنک رِبن

پیر 17 اکتوبر 2022ء
مریم ارشد
اکتوبر کا گلابی مہینہ آسمان پر بدلتے ہوئے رنگوں کی قوسِ قزح کی خوب صورتی کا مہکتا مہینہ ہے۔ اکتوبر جاڑے کے موسم کا ہر کارہ ہے اکتوبر میں درخت کہیں اپنے پیراہن کے رنگ بدلنے لگتے ہیں اکتوبر کی شامیں خوش گوار ہونے لگتی ہیں۔ پہاڑوں پرآسمان کے رنگ کہیں سْرمئی، مٹیالے، کاسنی اور کہیں نرم گلابی نظر آتے ہیں۔ عشاق کے دلوں میں تمنائیں کروٹیں لینے لگتی ہیں۔ تخلیق کاروں کا دل چاہتا ہے اپنی چھوٹی سی تصوراتی دنیا میں بیٹھ کر بس بیٹھیگنگناتے رہیں۔ پچھلے ہفتے میں بھی اپنی نظموں کو کھڈی پر چڑھائے خیالات کے
مزید پڑھیے


قومی یکجہتی اور خوش حالی

منگل 11 اکتوبر 2022ء
مریم ارشد
تاریخ کے پنے اس ایک لفظ اور اس کی تعریفوں، فلسفوں اور تفصیلات سے بھرے پڑے ہیں۔ سیاست میں بھی دنیا کے بیشترماہرین کسی بھی ملک کی خوش حال کو اس کی قومی یک جہتی سے جوڑتے ہیں۔قوموں کی سا لمیت ہی کا مطلب قومی یک جہتی ہے۔ ہمیں بچپن سے ہی یک جہتی، اتفاق میں برکت ہے، لالچ بری بلا ہے، وغیرہ وغیرہ کہانیاں نصابی کتابوں میں پڑھائی جاتی ہیں۔ مگر ان سب رٹ چکی کہانیوں کے باوجود نہ تو ہم میں قومی یک جہتی آئی اور نہ ہی خوش حالی۔ ہمیں قائدِ اعظم کے فرمان بھی پڑھائے جانے
مزید پڑھیے


تْو چل میں آیا۔۔۔۔!

جمعرات 29  ستمبر 2022ء
مریم ارشد
ہمارے بچپن میں پہلیاں بْوجھنے اور بیت بازی کھیلنے کا بہت رواج تھا۔ آج ایک پہیلی یاد آ رہی ہے۔ ’’تْو چل میں آیا‘‘۔ اس کا جواب ہوتا تھا ’’دروازہ‘‘۔ چونکہ دروازہ کے دو پٹ ہوتے ہیں۔ پہلے ایک پَٹ بند ہوتا ہے پھردوسرا۔ یاد رکھیے دروازہ ہمیشہ اند رسے کْھلتا ہے۔ چاہے محبت کا ہو یا عداوت کا۔ ایک گرما گرم خبر ہے کہ سابق وزیرِ خزانہ اسحاق ڈار صاحب بالآخر کمر درد سے نجات پانے کے بعد واپس وطن عزیز میں تشریف لا چکے ہیں۔ آئیے! حضور، قدم رنجہ فرمائیے! عوام آپ کو پخیر راغلے کہتے ہیں۔ دیدہ
مزید پڑھیے


ہماری ثقافت !

اتوار 25  ستمبر 2022ء
مریم ارشد
سیاست کے تو رنگ ڈھنگ ہی نرالے ہیں۔آج تک سیاست کی تو باگیں ہی کسی کے قابو میں نہیں آئیں۔ آج میرے دل میں خیال آیا کہ کیوں نہ سیاست کو چھوڑ کے اپنی مدھم ہوتی ہوئی ثقافت پر بات کی جائے۔ وہ ثقافت جو مختلف سوشل میڈیا پلیٹ فارمز کی وجہ سے اڑنے ولی دھول دھندلاتی جا رہی ہے۔ پنجاب، سندھ، بلوچستان، اور خیبر پختونخوا کی زرخیز مٹی محبتوں، روایتوں اور داستانوں سے گْندھی پڑی ہے۔کہیں سوہنی مہینوال، کہیں سسی پنوں، کہیں عمر ماروی، کہیں لیلیٰ مجنوں کی کہانیوں کی مہک باغِ دل پر کلیوں کی صورت چٹکتی
مزید پڑھیے


پاکستان مسائل کا پہاڑ

هفته 17  ستمبر 2022ء
مریم ارشد
پا کستان مسئلوں کا ایک ایسا پہاڑ ہے جس سے جتنے پتھر توڑے جائیں پہاڑ چھوٹا ہونے میں نہیں آتا۔ ہمارے حصے کی دْھوپ ہماری زمین تک آتی ہی نہیں۔ اس چٹیل پہاڑ کی وجہ سے ہماری سر سبز زمیں کلر زدہ ہوتیجا رہی ہے۔ لہلہاتا سبزہ اور فصلیں اس زمین میں بنجر ہوئی جاتی ہیں۔ اب رہی سہی کسر سیلاب نے پوری کردی۔ کھڑی فصلیں تباہ ہو گئیں۔ لوگوں کے کچے پکے مکانات بہہ گئے۔ سیلاب سے مزید اموات ہو رہی ہیں۔لاکھوں متاثرین فاقوں پر مجبور ہیں۔ سیلابی علاقوں میں لوگ درختوں کی ٹہنیوں پر چادریں ڈال کر خیمے
مزید پڑھیے








اہم خبریں