BN

ڈاکٹر حسین پراچہ



نو ہزار روپے اور ایک شعر کی برکت


ایک سماجی تقریب میں بھٹی صاحب سے تعارف ہوا۔ ان کی عمر پچاس برس کے لگ بھگ ہو گی۔ ان کی باتوں کی سادگی و سچائی نے میرا دل موہ لیا۔ میں نے ان کی مصروفیت کے بارے میں پوچھا تو انہوں نے بتایا کہ اللہ نے دال روٹی کا باعزت بندوبست کر رکھا ہے۔ انہوں نے مجھے اپنے دفتر آنے کی دعوت دی جسے میں نے قبول کر لیا۔ انہوں نے لاہور کے جس پلازے کا پتہ دیا وہ شہر کے ایک پوش علاقے میں واقع ہے۔ ’’دال روٹی‘‘ اوریہ پوش علاقہ ؟ میں ایک شام وقت طے کر
جمعرات 13 جون 2019ء

’’عوام دوست بجٹ‘‘

منگل 11 جون 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
لڑکپن کیا بچپن سے ہی اخبار بینی ہمارے روزمرہ معمولات کا حصہ رہی ہے۔ ہم نے گزشتہ نصف صدی میں ہر بجٹ کے بارے میں یہی پڑھا اورسنا کہ یہ ایک عوام دوست بجٹ ہو گا۔ بڑے سے بڑے ’’عوام دشمن‘‘ بجٹ کو بھی عوام دوست کہہ کر ہی پیش کیا جاتا ہے۔ دلچسپ بات یہ کہ کم و بیش وہی الفاظ‘ وہی تراکیب ‘ وہی خوشنما وعدے اور وہی مستقبل کے حسین سپنے سب کچھ یکساں چلا آ رہا ہے کچھ بھی تو نہیں بدلا۔ البتہ ایک بجٹ مجھے ایسا یاد ہے کہ جو پنجاب کے ایک ادیب‘ شاعر‘
مزید پڑھیے


عیدالفطر:پشاور سے خرطوم تک

هفته 08 جون 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
اسماعیل میرٹھی نے غالباً انیسویں صدی کے آواخر یا بیسویں صدی کے اوائل میں درمدح مئی لکھا تھا مئی کا آن پہنچا ہے مہینہ بہا چوٹی سے ایڑی تک پسینا نہ پوچھو کچھ غریبوں کے مکان کی زمیں کا فرش ہے چھت آسمان کی امیروں کو مبارک ہو حویلی غریبوں کا بھی اللہ بیلی مگر اس برس شاید احترام رمضان میں مئی نے روزہ داروں کو بہت اکاموڈیٹ کیا اور اس بار مئی میں بہار کے رنگوں کو دیکھ کر یوں محسوس ہوتا تھا کہ یہ مئی لاہور یا دلی والا نہیں لیک ڈسٹرکٹ انگلستان والا مئی ہے۔ جہاں یہ بہار کا مہینہ شمار ہوتا ہے البتہ
مزید پڑھیے


عید پر خواہش

منگل 04 جون 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
اینکر کا سوال ایک ہی تھا۔ اس نے ویرانے میں شامی مہاجر کیمپ میں موجود پہلی بچی سے پوچھا۔ پیاری بیٹی عید پر تمہاری کیا خواہش ہو گی۔ پانچ چھ برس کی حیران پریشان بچی نے بلاتاخیر جواب دیا کہ میری خواہش ہے کہ میرے بابا عید پر آئیں اینکر نے مزید پوچھا: این بابا؟(تمہارا بابا کہاں ہے) بابا مات ننھے منے ہاتھوں سے آٹا گوندھتی دوسری بچی سے شامی اینکر نے پوچھا کہ عید پر تمہاری کیا خواہش ہو گی؟ بچی نے کہا میری خواہش تو یہ ہے کہ کاش ہمیں ایک خیمہ مل جائے کہ جس میں ہم گولے
مزید پڑھیے


اسلامی سربراہی کانفرنس: اتحاد امت کا ایک اور موقعہ

هفته 01 جون 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
رمضان المبارک کا آخری عشرہ جمعۃ الوداع کا دن‘ دنیا کا مقدس ترین مقام مکتہ المکرمہ۔ اس سے بڑھ کر اتحاد امت کے لئے اور کون سی مبارک گھڑی ہو گی! تنظیم برائے اسلامی تعاون کا باقاعدہ سربراہی اجلاس 31مئی جمعۃ المبارک کی شب کو منعقد ہو گا اس سے پہلے خلیج تعاون کونسل اور عرب لیگ کے سربراہی اجلاس بھی مکتہ المکرمہ میں منعقد ہو چکے ہیں۔ کئی اسلامی ممالک کے سربراہان مکتہ المکرمہ پہنچ چکے ہیں۔ پاکستانی وزیر اعظم جناب عمران خان جمعرات کے روز پہلے مدینہ منورہ پہنچے جہاں انہوں نے مسجد نبوی میں نماز ادا کی۔
مزید پڑھیے




کیا چھاپوں سے تبدیلی آئے گی؟

جمعرات 30 مئی 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
مجھے تو خوش ہونا چاہیے کہ جناب وزیر اعظم عمران خان نے ہفتہ وار اسلام آباد۔ لاہور کے شٹل دوروں میں سے وقت نکال کر میرے شہر‘ شاہینوں کے شہر سرگودھا کو اپنی نگاہ التفات کے قابل سمجھا۔ جناب وزیر اعظم کے 20منٹوں پر محیط دورے کا مرکزی نقطہ ڈسٹرکٹ ہسپتال سرگودھا تھا۔ عمران خان نے یہ دورہ اس شان کے ساتھ کیا کہ اخباری اطلاعات کے مطابق کسی کو کانوں کان خبر نہ ہوئی البتہ یہ حسن اتفاق ضرور ہوا کہ جناب وزیر اعظم کی آمد سے قبل کمشنر سرگودھا ظفر اقبال شیخ ہسپتال میں بنفس نفیس موجود تھے۔
مزید پڑھیے


کیا ہمارا ایٹمی قوت ہونا کافی ہے؟

منگل 28 مئی 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
آج 28مئی ہے۔ یوم تکبیر ‘28مئی 1998ء کو پاکستان نے بھارتی ایٹمی دھماکوں کے جواب میں چاغی کے پہاڑوں میں کامیاب ایٹمی دھماکے کئے تو دنیا میں اہل پاکستان کا سر فخر سے بلند ہو گیا۔ راتوں رات دنیا میں سر جھکا کر چلنے والی قوم سر اٹھا کر چلنے لگی۔ جب پاکستان نے ایٹمی دھماکے کئے تب میں سعودی عرب میں مقیم تھا۔ میں نے اپنے طویل قیام کے دوران سعودی قوم کو صرف دو مواقع پر جذباتی خوشی مناتے دیکھا۔ ایک جب سعودی عرب کویت سے فٹ بال میچ جیتتا تو اس کا زبردست جشن منایا جاتا دوسرے
مزید پڑھیے


فرشتہ کا قتل: ذمہ دار پولیس یا حکومت؟

هفته 25 مئی 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
جو لوگ اسلام آباد کو جانتے ہیں انہیں معلوم ہے کہ چک شہزاد حکومتی و عدالتی مراکز سے صرف چند کلومیٹر کے فاصلے پر ہے۔ چک شہزاد اور بنی گالہ ایک دوسرے سے جڑے ہوئے ہیں۔ اسی بنی گالہ کے پہاڑ کی چوٹی پر ہمارے حاکم کا قصر ہے۔ اس قصر کی بلندی سے اگر حاکم چاہے تو اپنی رعیت کے احوال کا براہِ راست مشاہدہ کر سکتا ہے۔ جی ہاں! فرشتہ چک شہزاد کی رہائشی تھی۔ اس بچی کے خاندان کا تعلق خیبر پختونخوا کے قبائلی ضلع مہمند سے تھا۔ یہ بچی 15مئی کو لاپتہ ہوئی اور 20مئی کو
مزید پڑھیے


قمری کیلنڈر اور فواد چودھری کی سائنس

جمعرات 23 مئی 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
پاکستان اس لحاظ سے ایک دل چسپ ملک ہے کہ یہاں ہر سودا بکتا ہے۔ یہاں بسوں میں نایاب منجن سے لے کر اسلام آباد کی ٹی وی اسکرینوں پر پانی سے چلنے والی گاڑی کی برکینگ نیوز تک سب چلتا ہے۔ رئویت ہلال کی شرعی حیثیت اور پاکستان میں اس کی تاریخی تفصیل آپ کے ساتھ شیر کرنے سے پہلے یہ جاننے کی کوشش کرتے ہیں کہ فواد چودھری صاحب کا دعویٰ کیا ہے اور اپنے دعوے کے حق میں وہ کیا دلیل پیش کرتے ہیں چودھری صاحب وزیر اطلاعات تھے تو شب و روز کی ہر سماعت میں
مزید پڑھیے


افطار سے احتجاج تک

منگل 21 مئی 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
باقی باتیں تو بعد میں ہوں گی میں چاہتا ہوں کہ پہلے دل کا بوجھ ہلکا کر لوں۔ زندگی میں بعض حادثات و سانحات ایسے بھی آتے ہیں جن کا صدمہ انسان ہی نہیں شجر و حجر بھی محسوس کرتے ہیں۔ دل تو میرا اداس ہے ناصرؔ شہر کیوں سائیں سائیں کرتا ہے جواں سال بیٹے کی موت ایک ایسا ہی صدمہ ہے جس کا دکھ ہر کوئی محسوس کرتا ہے۔ میرے لیے یہ سانحہ دوسرے صدمے کا باعث ہوا کیونکہ میرا کائرہ صاحب کے ساتھ ذاتی تعلق خاطر ہے۔ قمر زمان کائرہ صاحب کے بیٹے اسامہ اور اس کے دوست حمزہ بٹ
مزید پڑھیے