BN

ڈاکٹر حسین پراچہ



آدھا تمہارا آدھا ہمارا


گزشتہ تیس بتیس برس کے دوران سندھ بالخصوص کراچی میں جو خوفناک فلم چلتی رہی اس کے کسی بھی سین کا تصور رونگٹے کھڑے کر دیتا ہے۔ آج اگر اس فلم کے کسی ہولناک منظرکو ریوائنڈ کر کے دیکھیں تو آپ کو یقین نہیں آئے گا کہ انسانوں کی بستی میں وہ کچھ ہوتا رہا جو کسی درندوں کی ’’بستی‘‘ میں نہیں ہوتا۔ تبھی تو اس زمانے میں کراچی کے ایک شاعر نے کہا تھا: بھاگتے کتے نے اپنے ساتھی کتے سے کہا بھاگ ‘ ورنہ آدمی کی موت مارا جائے گا کراچی کی یہ’’ہارر مووی‘‘ کبھی سیاسی مصلحتوں اور کبھی مہربانوں کی
منگل 30 اپریل 2019ء

سرمایہ آ رہا ہے یا جا رہا ہے؟

هفته 27 اپریل 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
جناب وزیر اعظم کو بولنے سے فرصت ملے تو وہ سوچنے پر توجہ دیں۔ عمران خان گزشتہ بائیس برس سے مسلسل بولتے چلے جا رہے ہیں۔ غالباً یہ عربی محاورہ ان کی نظر سے نہیں گزرا۔’’السکوت افصح من الکلام‘‘ کہ بسا اوقات خاموشی میں گفتگو سے کہیں بڑھ کر ابلاغ ہوتا ہے۔ جناب عمران خان ملک سے باہر جانے لگتے ہیں تو دل دھڑکنا شروع کر دیتا ہے۔ خارجہ امور کی نزاکتوں اور باریکیوں کا احساس کئے بغیر وہ کوئی ایسی بات کہہ دیتے ہیں جس کے بارے میں کبھی دوسرے ممالک جوابدہی کرتے ہیں اور کبھی پاکستان میں خان صاحب
مزید پڑھیے


ناٹرے ڈیم سے کا شانۂ اقبال تک

جمعرات 25 اپریل 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
دس روز پہلے ساڑھے آٹھ سو سال پرانے نوٹرے ڈیم چرچ میں آگ لگی تو اس کا غم صرف فرانس میں نہیں ساری دنیا میں محسوس کیا گیا۔ ناٹرے ڈیم کا تاریخی چرچ پیرس ہی کی نہیں بلکہ سارے فرانس کی پہچان ہے۔ جب آگ کے شعلے چرچ کی بلند و بالا عمارت سے بلند ہورہے تھے تو ناٹرے ڈیم کے اردگرد کی گلیوں میں پیرس کے لوگ رو رہے تھے اور گڑ گڑا کر دعائیں مانگ رہے تھے تا کہ اس تاریخی ورثے کو نقصان نہ پہنچے۔ ناٹرے ڈیم کے قرب و جوار میں ہی نہیں، ساری دنیا میں
مزید پڑھیے


نرالے لوگ اور غیر ضروری بحثیں

منگل 23 اپریل 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
مستقل مزاجی اور ثابت قدمی وہ اوصاف ہیں جو قوموں کو اوج ثریا تک لے جاتے ہیں۔ یہی قانون فطرت ہے۔ یہی ارشاد باری تعالیٰ ہے جو سورہ آل عمران میں نازل فرمایا گیا ہے! ’’پھر جب تمہارا عزم کسی رائے پر مستحکم ہو جائے تو اللہ پر بھروسہ کرو۔‘‘ جو قومیں قدم قدم پر راستہ بدل لیتی ہیں وہ کبھی منزل مقصود پر نہیں پہنچتیں۔ راستے ہی میں بار بار بھٹک جاتی ہیں۔ جو قومیں جہانبانی و حکمرانی جیسے سنجیدہ و ذمہ دارانہ کام کو بازیچہ اطفال بنا دیتی ہیں وہ آگے بڑھنے کی بجائے بار بار آپس کی بحثوں
مزید پڑھیے


کیا اب تبدیلی آ جائے گی؟

هفته 20 اپریل 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
ہمیں خود ذاتی طور پر شہر اقتدار کا تجربہ ہے کہ یہاں شام تک سب اچھا ہوتا ہے مگر اگلی صبح آپ بیدار ہوتے ہیں تو بڑے بڑے برج الٹ چکے ہوتے ہیں۔ شہر اقتدار میں ’’اقتدار‘‘ کو آنکھیں پھیرنے میں ذرا دیر نہیں لگتی۔ جناب اسد عمر آئی ایم ایف سے کامیاب مذاکرات کے بعد اسلام آباد لوٹے تو ان سے اخباری رپورٹروں نے پوچھا کہ یہاں تو آپ کے جانے کی افواہیں گرم ہیں‘ آپ کے پیچھے آپ کے کچھ مہربان سرگرم عمل رہے۔ اس پر اسد عمر نے کمال سادگی اور خود اعتمادی سے جواب دیا کہ: ہزاروں
مزید پڑھیے




نیب کا مستحسن فیصلہ

جمعرات 18 اپریل 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
پنجاب کے جس علاقے سے چیئرمین نیب جسٹس(ر)جاوید اقبال کے آبائو اجداد کا تعلق ہے ہم بھی وہاں کے رہنے والے ہیں۔ اس علاقے میں یہ اکھان بہت مشہور ہے کہ ’’ددھیاں دھیانیاں سانجھیاں ہوندیاں نے‘‘ یعنی بہو بیٹیوں کی عزت و تکریم سب پر واجب ہوتی ہے۔ چیئرمین نیب جسٹس(ر) جاوید اقبال نے اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کی بیمار بیگم نصرت شہباز اور ان کی دو صاحبزادیوں کی نیب میں طلبی کے احکامات منسوخ کیے تو میڈیا و سوشل میڈیا پر خیالی گھوڑے دور دور تک دوڑائے گئے، کچھ تجزیہ کاروں نے اسے نیب کی کمزوری پر معمول کیا، کچھ
مزید پڑھیے


جلیانوالہ باغ سے گجرات تک

منگل 16 اپریل 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
تاریخ کو بدلا تو نہیں جا سکتا مگر ماضی میں ڈھائے گئے مظالم پر شرمسار تو ہوا جا سکتا ہے۔ بھارت میں تعینات برطانوی ہائی کمشنر نے جلیانوالہ باغ کی یاد گار پر پھول چڑھانے کے بعد ملکہ برطانیہ کا پیغام پڑھتے ہوئے کہا کہ ہم تاریخ کو شاید دوبارہ لکھنا چاہتے ہیں لیکن یہ ممکن نہیں البتہ ہم تاریخ سے صرف سبق سیکھ سکتے ہیں۔ افسوس تو اس بات کا ہے کہ خود کو مہذب اور ترقی یافتہ کہنے والی دنیا تاریخ سے سبق حاصل کرنے پر آمادہ نہیں اور بار بار اسی ظالمانہ تاریخ کودوہرانے پر مصر ہے۔
مزید پڑھیے


کب یادمیں تیرا ساتھ نہیں!

هفته 13 اپریل 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
اڈیارڈ کپلنگ نے اپنی ایک نظم میں لکھا تھا کہ ’’مشرق‘ مشرق ہے اور مغرب‘ مغرب ہے اور کبھی یہ دونوں آپس میں مل نہیں سکتے‘‘ مگر بعض اوقات’’مغرب‘‘ مشرق میں آ کر یوں ’’مشرقی‘‘ بن جاتا ہے کہ جسے دیکھ کر خود اہل مشرق رشک کرنے لگتے ہیں۔ ’’آخر کار وہ لمحہ آ ہی گیا جب مجھے دولہا کے گھر والوں کا سامنا کرنا تھا۔ وہ مجھے پہلے ہی دل و جان سے قبول کر چکے تھے۔ میں ایک سٹول پر بیٹھی ہوئی تھی اور میرے چاروں طرف گائوں کے بڑے بزرگ جمع تھے۔داڑھی والے‘ مہندی رنگے بالوں والے‘چھوٹے اور
مزید پڑھیے


کیا اگلی حکومت جماعت اسلامی کی ہوگی

جمعرات 11 اپریل 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
بانی جماعت اسلامی سیدابوالاعلی مودودی کی خوش اخلاقی اور دلنوازی کا عکس جمیل جماعت اسلامی کے ہرقائد کی شخصیت میں نمایاں طور پر دکھائی دیتاہے۔ جماعت والے جب اس خوئے دل نوازی کیساتھ اپنی تقریبات میں شرکت میں تبادلہ خیال کیلئے بلاتے تو ہم بھی چلے ہی جاتے ہیں جب اس طرح پیام آئے گزشتہ روز سینٹرسراج الحق کی دوسری مدت امارت کی تقریب حلف برداری بلاشبہ جماعت اسلامی کی روایات کے عین مطابق انتہائی باوقار اور منعظم تھی۔جماعت اسلامی کی سیاسی حکمت عملی میں کوئی تبدیلی آئی یا نہیں مگر منصورہ کی عمومی فضا میں ہمیں خاصی کشیدگی اور
مزید پڑھیے


کیا ہم تیار ہیں؟

منگل 09 اپریل 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
جناب شاہ محمود قریشی سے ہماری ہلکی پھلکی پرانی شناسائی ہے۔ وہ خوش لباس بھی ہیں‘ خوش کلام بھی ہیں اور خوش اخلاق بھی۔ جب بات کرتے ہیں تو فصاحت و بلاغت کے دریا بہا دیتے ہیں۔ مگر کبھی مبالغہ آرائی سے کام نہیں لیتے۔ یوں بھی جنگ اور امن جیسے نازک معاملات جس احتیاط کا تقاضا کرتے ہیں اس کو شاہ صاحب ہمیشہ ملحوظ خاطر رکھتے ہیں۔ گزشتہ روز پاکستانی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے تازہ ترین انٹیلی جنس معلومات قومی میڈیا پر بیان کر کے نہ صرف اپنی قوم بلکہ عالمی برادری کو بھی چونکا دیا ہے شاہ
مزید پڑھیے