Common frontend top

ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری


خاکِ طیبہ از دو عالم خوشتر است


کالم میں تعطل کا دورانیہ ذرا طویل ہوگیا،جس کا ایک سبب تو یہ ہوا کہ ماہِ رمضان المبارک میں ’’نورِ قرآنـ‘‘کی یومیہ ٹرانسمیشن کی ذمہ داری تفویض تھی،قرآنی افکار کی ترویج اور تدریس کے سبب اس کا مزاج اور معیار،معمول کی سحر اور افطار نشریات سے کُلیۃً مختلف تھا،اس معیار کو مہینہ بھر قائم رکھنے کے لیے نورِ قرآن کی پوری ٹیم سرگرم رہی،جس کی کامیابی کا کریڈٹ بہر حال اُن کے سَرہے۔دریں اثنا26 رمضان المبارک کو نورِ قرآن کے اپنے آخری پروگرام کے ساتھ ہی،بوقتِ شب حرمین شریفین کی حاضری کیلئے ایئر بلیو کی پرواز پی اے
جمعه 19 اپریل 2024ء مزید پڑھیے

وسائلِ دولت کی تقسیم کا مسئلہ

پیر 01 اپریل 2024ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
نظام زکوٰۃ: معاشی وسائل میں اس کا مقصد واحد یہ ہے کہ دولت سب میں تقسیم ہوتی رہے اور کسی ایک گروہ کی اجارہ داری میں ہو کر ہی نہ رہ جائے چنانچہ نبی کریمﷺ نے اسی حقیقت کے پیش نظر حضرت معاذ بن جبلؓ کو یمن کا والی بنا کر ارکان اسلام کی وصیت فرماتے ہوئے یہ ارشاد فرمایا:’’(زکوٰۃ کا مقصد یہ ہے کہ) ان کے مالداروں سے وصول کی جائے اور ان کے محتاجوں پر تقسیم کر دی جائے‘‘۔الغرض زکوٰۃ، اجتماعی معاشی نظام کا ایک خاص اور اہم مالی جزو ہے۔ اسی لیے اس کے وصول کرنے کا
مزید پڑھیے


واقدیؒ --- معتبرسیرت نگار

جمعه 29 مارچ 2024ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
گزشتہ ہفتے ایک کالم میں سیرت نگاری کے آغاز و ارتقاء کے حوالے سے کچھ تحریر ہوا تو قارئین نے ابتدائی عہد کے چند معروف سیرت نگاروں کے حوالے سے جانکاری چاہی ، ماہ ِرمضان المبارک کی سعید ساعتیں ایسے مباحث کے لیے فطری رغبت اور ذوق کی حامل ہیں ۔ سیرت طیبہکی ترتیب و تدوین کے حوالے سے ابتدائی طور پر محمد بن اسحاق، محمد بن عمر الواقدی صاحبِ کتاب المغازی ، محمد بن سعدصاحبِ الطبقاتُ الکبری اور عبد الملک بن ہشام نمایاں اور ممتاز ہیں ۔ابو عبد اللہ محمد بن عمر ، ایک معروف عرب مورٔخ اور سیرت
مزید پڑھیے


زکوٰۃ:تاریخ انسانیت کا منفرد نظام

پیر 25 مارچ 2024ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
دولت کی فراوانی، وسائل پیداوار کی ترقی اور حیرت انگیز معاشی ارتقاء کے باوجود انسانیت آج جس غربت و ناداری، بے کاری اور بے روزگاری،معاشی لوٹ کھسوٹ او رمعاشرتی ظلم و ناانصافی سے دوچار ہے،وہ اپنی مثال آپ ہے۔اگر فقر و فاقہ کا علاج اور افلاس و ناداری کا مداوا محض دولت کی فراوانی اور وسائل پیداوار کی ترقی سے ہو سکتا تو بلاشبہ آج کی ترقی یافتہ دنیا میں کسی کو بھی غریب و مفلس اور بھوکا ننگا نہیں ہونا چاہیے تھا،لیکن ایسا نہیں ہے۔معاشی ارتقاء اور وسائل پیداوار کی محیر العقول ترقی کے باوجود ہر جگہ غربت و
مزید پڑھیے


معارف ِ اولیاء کا '' سیرت نمبر''

جمعه 22 مارچ 2024ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
رُبع صدی قبل جب داتاؒ دربار میں مرکز معارف ِ اولیاء کے نام سے ریسر چ سنٹر کی تشکیل کا اہتمام ہوا تو یہاں سے '' معارف ِ اولیائ'' کے نام ایک ریسرچ میگزین کی شروعات بھی ہوئیں، جس کا بنیادی مقصد صوفیاء کے احوال و افکار، اُن کی سیرت و کردار اور کارہائے نمایاں کی ترویج و تشہیر تھی، تاکہ سوسائٹی میں رَواداری، انسان دوستی، محبت آمیزی کا ابلاغ اور تشدّد، دہشت گردی اور انتہا پسندی، جیسے منفی جذبوں کا تدارک اور بیخ کنی ہو۔ متصوفانہ افکار کے فروغ پر مبنی یہ تحقیقی مجلہ اپنے اعلیٰ معیار طباعت
مزید پڑھیے



’’ اسلامو فوبیا‘‘---اقوام متحدہ میں پاکستان کی قرار داد

پیر 18 مارچ 2024ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
ہر سال 15 مارچ کو اسلامو فوبیا کے خلاف عالمی دن منایا جاتا ہے، اس ضمن میں گزشتہ روز یعنی 15 مارچ کو پاکستان کی جانب سے ایک قرار داد بھی پیش کی گئی، جس میں اسلامو فوبیا کے مضر اثرات کے تدارک کے لیے جامع حکمت کی تشکیل پر زور دیا گیا۔ قرار داد میں کہا گیا کہ ’’ اسلامو فوبیا ‘‘ کے پھیلاؤ میں اضافہ امن عالم کے لیے خطرہ ہے اور اس سے دنیا بھر میں مسلمانوں کو امتیازی سلوک کا سامنا ہے۔ اقوام ِ متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب منیر اکرم نے اس موقع پر
مزید پڑھیے


شفیق حسین بخاری --- اسم بامسمّٰی

جمعه 15 مارچ 2024ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
ہماری سول بیوروکریسی میں تصنیف و تالیف کا رجحان قدرے معدوم ہوتا جارہا ہے اور اب ان اوصاف کو افسر انہ رعب وداب اور منصبی وجاہت کے زیا دہ شایان نہیں سمجھاجاتا ۔ ماضی قریب میں صورت حال اس سے قدرے مختلف تھی کہ ہر اچھا افسر اپنی زندگی کے مشاہدات وحاصلات اور بالخصوص تجربات وحادثات کو ضرورقلمبند کرتا، تاکہ بالخصوص نسلِ نو اس سے کچھ نہ کچھ استفادہ کرسکے ، بہر حال یہ سلسلہ کمیاب توہے لیکن ابھی نایاب یا ناپید نہیں ۔ سید شفیق حسین بخاری پاکستان کی سول بیوروکریسی کی ایک از حد معتبر اور مقتد
مزید پڑھیے


انتہا پسندی کاتدارک

پیر 04 مارچ 2024ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
دنیا میں صرف صوفیاء کا طبقہ ہے جس نے سوسائٹی کو اَمن، رواداری، انسان دوستی، تحمل اور برداشت کا نہ صرف سبق دیا، بلکہ اس کے عملی منظر اور مظہر دنیا کو عطا کئے۔ ان کی خانقاہیں بلا رنگ و نسل اور مکتب و مسلک سماجی رابطے کا سب سے موثر ذریعہ اور انتہا پسندی کے تدارک کا معتبر ادارہ تھیں۔ انہوں نے تشدد اور دہشت و وحشت جیسے منفی جذبوں کے تدارک کے لیے بھر پور کردار ادا کیا، اوراپنے آستانوں کو سماجی بہبود اور تہذیبی نمو کامرکزبنایا۔ گزشتہ روز قادری مکتب کے روحانی پیشوا حضرت شاہ حسین ؒ
مزید پڑھیے


داتاؒدربار کی توسیع --- چند اہم امور

جمعه 01 مارچ 2024ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
حضرت داتا گنج بخشؒ کا مزار جنوب ایشیاء کا قدیم ترین دینی اور روحانی مرکز ہے ۔ رواں برس داتاؒ دربار کی توسیع کے لیے پنجاب گورنمنٹ کی طرف سے مبلغ6392ملین کی رقم منظورہوچکی ہے ، جس کے آغاز کے لیے کرنٹ کوارٹر جس کا اختتام گزشتہ روز 29 فروری2024ء کو ہوچکا ہے ،فنڈز مبلغ50 ملین کا اجرأ ، پلاننگ اینڈڈویلپمنٹ بورڈ کی جانب سے عمل میں آیا، دربار شریف کا موجودہ رقبہ 56 کنال ہے ، جس میں 50 کنال کی توسیع گزشتہ نصف صدی میں ہوئی ، جس کے مطابق اَسّی کی دھائی میں عظیم الشان مسجد کی
مزید پڑھیے


جہانبانی و جہانداری

پیر 19 فروری 2024ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
ہر تحریک اور موومنٹ کے اپنے ’’ڈائنا میکس‘‘ ہوتے ہیں، اپنے منبع اور مخرج سے نکل کر،جب وہ دور دراز کا سفر طے کرتی ہے تو خارجی اثرات کا اس پر وارد ہونا ایک فطری امر ہے۔ صوفیا عبقری اور جنیئس شخصیات تھیں، انہوں نے مقامی ماحول سے ہم آہنگ عناصر کو ساتھ لے کر چلنے کی پالیسی اپنائی، دسویں صدی عیسوی میں جب صوفی تحریکیں ہندوستان پہنچیں تو یہاں کی قدیم مذہبی روایت سے کچھ تصادم اور کچھ اپنائیت لازم تھی، مستزادیہ کہ اس عہد کے سلاطین اور حکمران بھی روحانی اور باطنی توجہات اور عوامل کو اختیار و
مزید پڑھیے








اہم خبریں