BN

ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری



از رسالت در جہاں تکوینِ ما


گزشتہ روز 92ایچ ڈی ٹی وی پر ہفتہ وار لائیو پروگرام کا موضوع قرآنِ پاک کی سورہ الاحزاب کی معروف آیت نمبر 40تھی، جسکا عمود اور مرکزی نقطہ تو یہی تھا کہ عقیدہ ختم نبوت محض دینی اعتبار ہی سے نہیں بلکہ سیاسی، سماجی اور تہذیبی حوالے سے بھی از حد اہمیت کا حامل ہے اور اگر خدانخواستہ یہ بنیادی نقطہ اسلامی فکرو عمل سے نکل جائے تو شاید مسلمانوں کو اپنے الگ وجود اور تشخص کا جواز باقی رکھنا مشکل ہو جائے، یہی وجہ ہے کہ محض علماء یا دینی طبقات ہی نہیں بلکہ جدید فکر سے آراستہ… علامہ
پیر 24 فروری 2020ء

’’سقیفہ بن ساعدہ‘‘

پیر 17 فروری 2020ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
"سقیفہ"۔ سَقَفٌ سے ہے، جس کے معنی "سایہ دارجگہ "کے ہیں، یعنی ایسا سائبان ، چھَپریا سایہ دار جگہ۔۔۔ جہاں لوگ رسمی یا غیر رسمی طور پر اکٹھے ہو کر اپنے مختلف امور پر تبادلہ خیال کرتے ہوں، جیسے ہمارے دیہاتی یا دیسی ماحول میں "ڈیرہ"یا چوپال وغیرہ ، جہاں سرِشام ۔۔۔ یا سردیوں کی ایسی دھوپ اور چمکتے دنوں میں لوگدن میں بھی اکٹھے ہو جاتے اور نجی، ذاتی ، علاقائی اور قومی امور پر تبادلہ خیال کرلیتے ہیں، بالعموم قبیلہ/خاندان کے بزرگ یا سربراہ اپنے ہاں اس نوعیت کے مقام کا اہتمام ضرور کرتے۔ اسی طرح قبائلی نظام
مزید پڑھیے


’’ قُبّۃُ الصَّخْرَہْ ‘‘۔۔۔ طلائی گنبد

پیر 10 فروری 2020ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
" قُبہ"عربی میں گنبد اور ٹیلے کو کہتے ہیں جبکہ "الصَخْرَہ"کے معنی "چٹان"کے ہیں ، بیت المقدس میں یہ ایک خوبصورت احاطہ ہے جسے عام طور پر "مسجد اقصیٰ"سمجھا جاتا ہے، حالانکہ یہ مسجد اقصیٰ نہیں ہے بلکہ " قُبّۃُ الصَّخْرَہ"ہے، جس کے سنہری گنبد کے نیچے وہ پتھریلی چٹان ہے ، جہاں سے نبی کریم ﷺ معراج پر تشریف لے کر گئے، اسی چٹان پر، جب نبی اکرم ﷺ براق پر سوار ہو کر، بلندی کی طرف روانہ ہوئے، تو یہ چٹان بھی وفور محبت میں اوپر بلند ہوئی، جس کو جبرائیلؑ نے اپنے ہاتھ سے پیچھے دھکیل
مزید پڑھیے


کرتار پور راہداری ۔۔۔"سنگل کوریڈور"

پیر 03 فروری 2020ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
ضلع نارووال سے 17 کلومیٹر کے فاصلے پر ، تحصیل شکرگڑھ کے قریب، دریائے راوی کے کنارے، "کوٹھے پنڈ"نامی ایک معمولی سے گاؤں میں’’ گوردوارہ سری دربار صاحب کرتا پور‘‘ ، سکھ مذہب کا سب سے مقدس تاریخی مقام ہے، "سری "کا معنی "مقدس"۔ جبکہ "کرتار"کا معنی ہے"کرنے والا"۔ سکھوں کے ہر گُرو نے ایک نئی بستی آباد کی، کرتارپور کی یہ بستی سکھ مذہب کے بانی بابا گرونانک نے آباد کی، یہیں پر انہوں نے اپنی زندگی کے آخری سترہ سال گزارے، اور 1538ء میں، انہوں نے یہیں پر وفات پائی اور ان کی آخری رسومات عمل میں آئیں۔یہاں
مزید پڑھیے


مملکت کا حُسنِ انتظام

پیر 27 جنوری 2020ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
کل صبح 92نیوز کی ہفتہ وار ٹرانسمیشن کا موضوع ’’ انبیاء کے تبرکات ‘‘تھا ، جسمیں بطور خاص حضرت یو سفؑ کو ، انکے بھائیوں کے اصرار پر، ان کے ساتھ رخصت کرتے ہوئے ، حضرت ابراہیم ؑ کی قمیض سمیت اپنے بزرگوں کے کتنے ہی تبرکات سے آراستہ کرنے کا ذکر ہوا ،اور پھر کتنے ہی برسوں کے بعد اسی یوسف علیہ السلام کا کرتہ حضرت یعقوب ؑ کی آنکھوں کی روشنی کا ذریعہ بنا ۔۔۔۔ واپس لوٹا، تو خیال کیا کہ صدیوں پہلے، مصر جیسے متمدن اور ترقی یافتہ خطے میں برپا ہونے والی سات سالہ قحط سالی
مزید پڑھیے




اب انہیں ڈھونڈ…

پیر 20 جنوری 2020ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
جمعتہ المبارک کی سعید ساعتوں میں‘ بادشاہی مسجد کا اجلا‘ نکھرا اور سنورا سا ماحول طبیعت میں فرحت اور گداز پیدا کر رہا تھا۔ ہمارے وزیر محترم پیر سید سعید الحسن شاہ صاحب یہاں آمد پر ہمیشہ اورنگزیب عالمگیر کو یاد کرتے ہیں‘ بلاشبہ اس مسجد کا بانی اورنگ زیب سُنی ‘ حنفی عقائد کا امین اور نقشبندی اسلوب طریقت کا حامل تھا‘ اس نے ’’فتاویٰ عالمگیری‘‘ کی ترتیب و تدوین کے لئے ایک سو ساٹھ علماء اور مفتیان پر مشتمل بورڈ تشکیل دیا‘ جس کی سربراہی اپنے استاد ملاجیون کو سونپی اور یہی شخصیت بادشاہی مسجد کے اولین خطیب
مزید پڑھیے


’’مذہبی تعمیراتی ورثہ‘‘

جمعه 17 جنوری 2020ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
’’مذہبی تعمیراتی ورثہ ‘‘کی تاریخ بھی اُتنی ہی پرانی ہے جتنی کہ برصغیر میں صوفیا کی تشریف آوری اور اسلام کی آمد کی۔ حضرت داتا گنج بخشؒ کا وصال پانچویں صدی ہجری (465ھ) میں ہوا، آپ کے مزار کی اولین تعمیر محمود غزنوی کے بعد ، سلطنتِ غزنہ کے تاجدار ظہیرالدولہ سلطان ابراہیم غزنوی کے عہد میں، اس کی خصوصی توجہ اور حکم سے ہوئی، جس میں بالخصوص روضہ کی عالی شان عمارت کا تذکرہ کتب تاریخ میں محفوظ ہے۔ اسلامی ہند کے اوائل دور میں ’’قطب مینار‘‘کی تعمیر خالصتاً اسلامی رنگ سے آراستہ ہے، جس کو حضرت خواجہ قطب
مزید پڑھیے


’’یہ وقت بھی گزر جائے گا‘‘

پیر 13 جنوری 2020ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
کالم کی ذمہ داری سے تو جمعہ کی شام تک ہی عہدہ برآ ہو جاتا ہوں …کہ دفتری اور غیر دفتری ’’ہنگامہ خیزی‘‘ کا پتہ نہیں ہوتا کہ چھٹی کے دن بھی… نجانے یہ اونٹ کس کروٹ بیٹھ جائے، لیکن اللہ کا شکر کہ آج کافی دنوں کے بعد لان میں بیٹھ کر دھوپ دیکھنے کا موقع میسر آیا، ’’دھوپ دیکھنا‘‘ اس لئے کہ وہ جو نکھری، اجلی اور سنوری سی دھوپ ایک روز پہلے، یعنی جمعہ کو تھی، آج ہفتہ کو اس سے تو آنکھ مچولی ہی ہوتی رہی۔ بہرحال ہمارا خطہ خوش قسمت ہے کہ اسے موسموں کا
مزید پڑھیے


فرائض ِ منصبی اور خواہشِ قلبی

پیر 06 جنوری 2020ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
برنارڈ شا نے کہا تھا ؛ فرائضِ منصبی اور خواہش قلبی اکٹھے ہوجائیں، تواسے خوش قسمتی کہتے ہیں ۔ہمارے مہربان ،قاسم علی شاہ صاحب نے ایسی ہی بات غالب کے ایک خط کے حوالے سے یوں تحریر فرمائی ہے ؛’’دنیا کا خوش بخت انسان وہ ہے ،جس کا ذریعۂ معاش اور شوق ایک ہی ہو،‘‘ ذریعہ معاش اور شوق ایک ہونے سے زندگی کا باکمال ہو جانا فطری امر ہے ۔کیونکہ دنیا کا ہر انسان کام سے تھک جاتاہے ،لیکن محبت سے نہیں ۔ہر شخص دنیا میں ایک خاص مقصد کے لیے آیا ہے ،وہ مقصد تب ہی پورا ہوتا
مزید پڑھیے


در حُجرۂ فقر---

پیر 30 دسمبر 2019ء
ڈا کٹر طا ہر رضا بخاری
ماہرینِ نفسیات اس امر پر متفق ہیں کہ ہر انسان کی ہستی سے کچھ غیر محسوس سی لہریں نکلتی ہیں جویا تو دوسروں کو اپنی طرف کھینچتی یا انہیں دور دھکیل دیتی ہیں۔ پہلی قسم کی لہریں صرف ان لوگوں سے نکلتی ہیں جن کے دل ودماغ میں محبت، مروّت ، اور پاکیزگی کی دنیا آباد ہو ، یہ پاکیزگی ان کے چہروں پر بھی اثر ڈالتی ہے ۔ ہم ہرروز کچھ ایسے چہرے دیکھتے ہیں جن کی طرف دل کھنچتا چلاجاتا ہے ،اور کچھ ایسے بھی ہیں جن کی خشونت ، بدو ضعی اور بے آہنگی دل میں نفرت
مزید پڑھیے