Common frontend top

قادر خان یوسف زئی


تقسیم پنجاب انتخابی مہموں کا پُر فریب ایجنڈا


کسی بھی ملک میں جمہوری نظام کے تحت بروقت انتخابات ناگزیر قرار دئیے جاتے ہیں، قیام پاکستان کے بعد سے عام انتخابات تنازعات کے ساتھ مقررہ وقت پر نہیں ہو سکے تاہم گذشتہ دو عام انتخابات سیاسی تبدیلیوں کے باوجود بروقت ہوئے، توقع تو یہی کی جا رہی تھی کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت تیسری مدت بھی پوری ہوگی اور ملک بھر میں عام انتخابات بروقت ہوں گے۔ جب کہ گمان یہ بھی کیا جا رہا تھا کہ 2023کے عام انتخابات میں عمران خان بھاری اکثریت کے ساتھ دوبارہ کامیاب ہوں گے بلکہ اگلے انتخابات بھی ان
منگل 11 اپریل 2023ء مزید پڑھیے

سیاست اور سامراج کی میراث

هفته 08 اپریل 2023ء
قادر خان یوسف زئی
ملک میں سیاسی درجہ حرارت میں کمی کے بجائے خطرناک حد تک بڑھ چکا ہے۔ ہمیں اختیارات اور سیاست کی ساخت کو سمجھنا ہوگا دوسری طرف سیاسی جماعتوں کے اکثریتی کارکنان، سامراجی سیاست کی تاریخ نہیں جانتے بلکہ ان کے نزدیک سیاسی جماعت میں کسی شخصیت کا مقبول ہونا، اور اس کی تقاریر یا موروثی سیاست کے طفیل حاصل ہونے والی گدی پر بیٹھی شخصیت کا ہر اچھا بُرا فعل اور اس کا دفاع و حمایت کرنے کے لئے کچھ بھی کرنا دراصل سیاست کہلاتا ہے۔ سیاست کی ایک طویل اور پیچیدہ تاریخ ہے جو قدیم زمانے سے شروع
مزید پڑھیے


مزاحمت و مفاہمت کی سیاست

جمعرات 30 مارچ 2023ء
قادر خان یوسف زئی
پاکستان کے سیاسی منظر نامے پر طویل عرصے سے مٹھی بھر طاقتور سیاسی جماعتوں و غیر سیاسی قوتوں کا غلبہ رہا ہے، جن میں سے ہر ایک کے اپنے مفادات کے ہمراہ ایک دوسرے سے روابط بھی قائم رہے۔ تاہم، حالیہ برسوں میں، قائم شدہ سیاسی نظام کے خلاف مزاحمت کا رجحان بڑھ رہا ہے، ماضی کی نسبت زیادہ شدت سے اسٹیٹس کو چیلنج کو کیا جارہا ہے ۔ حالیہ برسوں میں ''مزاحمت'' کے تصور اور مقبولیت کے درجات کا مقابلہ و موازنہ بھی کیا جارہا ہے۔ اقتدار اور حزب اختلاف دونوں میں موجود سیاسی جماعتیں اسے اپنے حامیوں
مزید پڑھیے


عظیم مشرق وسطیٰ کا بدلتا عالمی منظر

هفته 25 مارچ 2023ء
قادر خان یوسف زئی
چین نے سعودی عرب اور ایران کے درمیان ثالث کا کردار ادا کرکے دنیا کو چونکا دیا جس کی توقع نہیں کی جا رہی تھی کیونکہ سعودی عرب اور ایران کئی دہائیوں سے علاقائی حریف رہے ہیں۔ چین کے نئے بلاک نے عالمی قوت کے توازن کا نیا منظر نامہ بنانا شروع کردیا، بلا شبہ یہ ایک دو دن کی بات نہیں اس میں کڑی محنت اور کئی ایسے صبر آزما مراحل آئے ہیں جنہیں رفع کرنے کے لئے چین اور سعودی عرب نے پاکستا ن سمیت اپنے دوست ممالک کو بھی اعتماد میں لیا ہوگا۔دونوں ممالک کے درمیان سفارتی،
مزید پڑھیے


چیک اینڈ بیلنس کا مضبوط نظام ضروری ہے !

جمعرات 16 مارچ 2023ء
قادر خان یوسف زئی
سیاسی عدم رواداری کے ماحول میں انتخابات کا انعقاد کسی بھی جمہوریت کے لئے ایک اہم چیلنج ہے۔ سیاسی عدم رواداری سیاسی عدم استحکام، سماجی بے چینی اور مالی بحران کا باعث بن سکتی ہے، جس کے ملک کی معیشت اور سیاسی نظام پر طویل مدتی اثرات مرتب ہوسکتے ہیں۔ جس قسم کا ماحول اس وقت دو صوبوں میں انتخابات کے حوالے سے بن رہا ہے ، اس میں بے یقینی زیادہ ہے ۔ سیاسی استحکام کے بجائے مستقبل میں مزید سنگین بحران پیدا ہونے کے خدشات زیادہ نظر آرہے ہیں۔ اس قسم کے ماحول سے انتخابات کے نتائج کے
مزید پڑھیے



پاک۔ ایران گیس لائن پر امریکی رویہ

جمعه 10 مارچ 2023ء
قادر خان یوسف زئی
پاک۔ ایران گیس منصوبہ امریکہ کی جانب سے عائد پابندیوں کا شکار ہے۔ اس پائپ لائن کا مقصد قدرتی گیس کا قابل اعتماد اور کم خرچ ذریعہ فراہم کرکے پاکستان کے توانائی بحران کو حل کرنا تھا۔ ایران کے پاس قدرتی گیس پاکستان کے توانائی کے بحران کو حل کرنے میں انتہائی مدد گار ثابت ہوسکتے ہیں ۔ توقع کی جا رہی تھی کہ اس منصوبے میں سالانہ 22 ارب مکعب میٹر (بی سی ایم) گیس کی گنجائش ہوگی، جس سے پاکستان کو روزانہ تقریباً 750 ملین مکعب فٹ (ایم ایم سی ایف ڈی) گیس ملے گی۔ اس پائپ لائن
مزید پڑھیے


سعودی عرب، چین تعلقات پر امریکی تشویش

بدھ 14 دسمبر 2022ء
قادر خان یوسف زئی
کسی بھی ملک و قوم کی مضبوطی کے لئے جدید ہتھیار، مستحکم معیشت، سیاسی استحکام اور عوام کے اتحاد کے ساتھ دفاعی افواج پر انحصار ناگزیر خیال کیا جاتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ دنیا کے تمام ممالک اس امر کو تسلیم کرتے ہیں کہ کسی بھی ملک و قوم کی زندگی ایک مضبوط قومی دفاعی قوت سے لازم و ملزوم ہے۔ مروجہ طور پر اب جنگ کے پیمانے بدل چکے ہیں، جہاں تباہ کن ہتھیاروں نے دنیا میں تباہی مچائی تو مخالف پر دباؤ کے لئے قدرتی وسائل سمیت تجارتی پابندیوں کا ہتھیار استعمال بھی کیا جاتا ہے۔ مثال
مزید پڑھیے


واخان کوریڈور ترقی کا درخشاں راستہ، لیکن !

بدھ 07 دسمبر 2022ء
قادر خان یوسف زئی
چین، ایران، پاکستان، تاجکستان، ترکمانستان اور ازبکستان سے جڑی سرحدوں کے باعث افغانستان کو ایشیا میں اپنی جغرافیائی حیثیت کی وجہ اہم مقام حاصل ہے۔ امریکہ و نیٹو کی واپسی کے بعد افغانستان کی سرزمین کئی حوالوں سے پڑوسی ممالک کے لئے امن و امان کے حوالے سے اہمیت کی حامل ہے اور پڑوسی ممالک افغانستان کی معاشی، سیاسی و داخلی حالات پر متفکر بھی ہیں۔ دوحہ معاہدے کے بعد افغانستان میں ایک ایسی سیاسی عبوری حکومت کو قائم ہونا تھی جو تمام سٹیک ہولڈرز کے ساتھ مل کر بنائی جاتی لیکن ایسا نہ ہو سکا اور امریکہ
مزید پڑھیے


افغانستان کو ساختی چیلنجوں کا سامنا

بدھ 30 نومبر 2022ء
قادر خان یوسف زئی
افغانستان کو بدترین معاشی بحران کا سامنا ہے۔ مالیاتی بحران کو دور کرنے کے لیے امریکہ اور افغان طالبان حکام گزشتہ چند ماہ سے مذاکرات کر رہے ہیں کہ کسی نہ کسی طرح افغانستان کے معاشی بحران کو حل کرنے کے لیے منجمد فنڈز تک رسائی دی جائے۔ دونوں فریقین نے فنڈز کے استعمال کی نگرانی کے لئے متبادل نظام کو قائم کرنے پر اصولی طور پر اتفاق تو کیا ہے لیکن بنیادی اختلافات کو حل نہیں کرسکے۔افغان طالبان نے جب سے افغانستان کا کنٹرول سنبھالا ہے ان کا مقابلہ کرنے کے لئے لڑنے والی کوئی سابقہ حکومتی فورسز موجود
مزید پڑھیے








اہم خبریں