Common frontend top

ڈاکٹر محمد سلیم شیخ


میر کیا سادہ ہیں بیمار ہوئے جس کے سبب !


مسلم لیگ کے قائد میاں نواز شریف کی لند ن سے واپسی کے بعد سے اس جماعت کے سیاسی رابطوں میں جو تیزی دیکھنے میں آئی ہے اور جس طرح مختلف سیاسی شخصیات اور جماعتوں کے ساتھ مستقبل کے لئے وعدے اور مشترکہ نکات تیار کئے جارہے ہیں، اس سے سیاسی اور انتظامی سطح پر یہ تاثر نمایاں ہونے لگا ہے کہ آئندہ انتخابات کے بعد مسلم لیگ اور اس کے سیاسی شراکت داروں کے لئے حکومت کی راہیں ہموار کی جارہی ہیں۔ سندھ اور بلوچستان میں مسلم لیگ کی سیاسی پیشرفت اس لحاظ سے زیادہ اہمیت کی حامل ہیں۔سندھ
جمعرات 16 نومبر 2023ء مزید پڑھیے

شفاف انتخابات کیوں ضروری ہیں ؟

پیر 13 نومبر 2023ء
ڈاکٹر محمد سلیم شیخ
آٹھ فروری دوہزار چوبیس کی تاریخ آئندہ انتخابات کئے لئے موزوں قرار دے دی گئی ہے۔یہ انتخابات اگرچہ آئینی مدت کے گزر جانے کے بعد کافی تاخیر سے ہو رہے ہیں تاہم یہ بحث اب قدرے غیر متعلقہ ہو چکی ہے کہ یہ آئینی انحراف کیونکر ہوا اور کون اس تاخیر کا ذمہ دار ہے ۔آئین کے تمام محافظ ادارے اس پر خاموش ہیں۔ ڈر یہ ہے کہ کہیں یہ انحراف روایت نہ بن جائے۔ ویسے تو پاکستان کی چھہتر سالہ سیاسی تاریخ میں آئین شکنی اور آئین سے انحر اف کی روایات اجنبی نہیں ہیں۔ پاکستانی سیاسی نظام میں
مزید پڑھیے


پاکستان کے ٹیکس کے نظام اور انتظام میں تبدیلیوں کی ضرورت

هفته 28 اکتوبر 2023ء
ڈاکٹر محمد سلیم شیخ
کسی ملک کی معیشت کی ترقی کا انحصار اس کے سیاسی استحکام ، ذرائع آمدنی کی وسعت ، بہتر انتظامی کارکردگی اور معاشی پالیسیوں کے تسلسل پر ہوتا ہے۔بدقسمتی سے پاکستان میں یہ چاروں عوامل کمزور رہے ہیں جس کے باعث صورتحال آج اس نہج پر پہنچ گئی ہے کہ ریاست کی معیشت کو چلانے کے لئے قرضوں کا حصول بھی مشکل ترین مرحلہ بن گیا ہے۔بڑھتے ہوئے اخراجات اور کم ہوتے ذرائع آمدنی ،اس پر مستزاد سیاسی اور انتظامی بگاڑ، داخلی سلامتی کے مسائل اور انحطاط پذیر ریاست کا قومی اور بین الاقوامی تشخص صورتحال کی سنگینی کے واضح
مزید پڑھیے


سیاسی کھیل کے وہی انداز پرانے سارے

جمعرات 26 اکتوبر 2023ء
ڈاکٹر محمد سلیم شیخ
سیاست اب بھی دائروں ہی میں گھوم رہی ہے ۔ پاکستان کے سیاست دانوں نے ،اداروں نے اور فیصلہ سازوں نے بار بار کے تجربے اور ان کے نتائج سے کچھ نہیں سیکھا ۔ کھیل کے وہی انداز پرانے بساط سیاست پر وہی چالیں پرانی پھر آزمائی جارہی ہیں۔کسے راستے سے ہٹانا ہے اور کسے راستہ دینا ہے ۔کس کی مقبولیت کو خاطر میں نہیں لانا ہے اور کسے قبولیت کے شرف سے نوازنا ہے۔ یہی ہوتا رہا ہے اور یہی ہورہا ہے۔ موجودہ سیاسی منظر پر سارے نقوش وا ضح ہیں ۔ آئندہ انتخابات جنوری میں ہونا ہیں۔
مزید پڑھیے


کھلی تاریخ : ادب سے جھلکتا ہمارا ماضی

منگل 24 اکتوبر 2023ء
ڈاکٹر محمد سلیم شیخ
جس طرح تاریخ کا معروضی طور پر لکھا جانا ایک مشکل اور جان کو جوکھم میں ڈالنے جیسا کام ہے بالکل اسی طرح تاریخ کو ذاتی عصبیت سے بلند ہو کر پڑھنا ، سمجھنا اور برتنا بھی ا ک کار کٹھن ہے۔یہی سبب ہے کہ تاریخ کے واقعات ،ان کی تفصیلات اور توجیحات مختلف النوع عصبیات کے زیر اثر تشکیل پاتی ہیں ۔ واقعات اور ان کے اثرات کو کس زاویہ ء نگاہ سے دیکھا گیا ہے ، مرتب کیا گیا ہے اور کس لب و لہجہ میں پیش کیا گیا ہے تاریخ کو پیش کئے جانے میں ان کی
مزید پڑھیے



سیاسی دھند بھی صاف ہونی چاہیئے!!

هفته 21 اکتوبر 2023ء
ڈاکٹر محمد سلیم شیخ
سرما کی آمد ہے ۔ پنجاب کے شہروں میں دھند اور اسموگ کا موسم شروع ہونے والا ہے ۔دو سے تین ماہ موسمی بگاڑ کی یہ کیفیت رہے گی اور پھر نوید بہار کے ساتھ موسم خوشگوار ا ور اجلا ہو جائے گا لیکن پاکستان کا سیاسی موسم بدستور دھند کی لپیٹ میں ہے ۔کچھ واضح نہیں ہے۔ کیا ہو رہا ہے اور کیا ہونے والا ہے۔ الیکشن جو جنوری میں ہونا ہیں ۔ اس پر غیر یقینی کے سائے موجود ہیں۔ الیکشن کمیشن جو الیکشن کرانے کا ذمہ دار ہے اس نے ابھی تک اس کی تاریخ ہی
مزید پڑھیے


غیر قانونی تارکین وطن کا انخلاء اور پاک افغان تعلقات

منگل 10 اکتوبر 2023ء
ڈاکٹر محمد سلیم شیخ
ملک میں ہونے والی حالیہ دہشت گردی کی لہر سے ایک بار پھرداخلی سلامتی کا معاملہ بنیادی اہمیت اختیار کر گیا ہے ۔ وفاق اور صوبوں میں نگراں حکومتیں قائم ہیں جن کی بنیادی ذمہ داری آئندہ ہونے والے انتخابات کے عمل کو شفاف اور آزادانہ طور پر ممکن بنانا ہے۔ اس کے لئے ضروری ہے کہ ملک میں امن وامان کی صورتحال تسلی بخش ہو۔ اس ضمن میں تین اکتوبر کو نگراں وزیر اعظم جناب انوار الحق کاکڑ کی سربراہی میں نیشنل ایکشن پلان کی ایپکس کمیٹی کا اجلاس ہوا۔ جس میں چیف آف آرمی اسٹاف جنرل عاصم
مزید پڑھیے


بیانیہ کی سیاست اور زمینی حقائق

جمعرات 05 اکتوبر 2023ء
ڈاکٹر محمد سلیم شیخ
پاکستان کی سیاست میں سیاسی جماعتوں کی کارکردگی سے زیادہ اہمیت ان کے بیانیہ کو حاصل رہی ہے۔سیاست میں بیانیہ کی یہ روایت اگرچہ ہے توپرانی مگر اسے باقاعدہ سیاسی مہم اور جلسوں میں عوامی تحرک پیدا کرنے کے لئے انتہائی موئثر انداز میں پاکستان تحریک انصاف کے پلیٹ فارم سے عمران خان نے استعمال کیا۔ وہ تبدیلی اور احتساب کا بیانیہ لے کر اقتدار تک پہنچے ۔کس حد تک وہ کامیاب رہے یہ فیصلہ اب تاریخ کے سپرد ہے۔نواز شریف اپنی سیاسی نااہلی اور وزارت عظمٰی سے برطرفی کے بعد’’ ووٹ کو عزت دو ‘‘کے بیانیہ کے ساتھ
مزید پڑھیے


نواز شریف کی واپسی اور ریاست کی مشکلات ؟

بدھ 27  ستمبر 2023ء
ڈاکٹر محمد سلیم شیخ
نواز شریف اکتوبر کی اکیس تاریخ کو آرہے ہیں ۔ شکوک و شبہات میں لپٹا یہ بیانیہ ایک اہم موضوع کے طور پر زیر بحث ہے مگر کیا یہ موضوع اتنا اہم ہے ؟ تمام سیاسی ماہرین اور مبصرین اس گتھی کو سلجھانے میں مصروف ہیں کہ نواز شریف آئینگے بھی یا نہیں ؟ آئے تو گرفتار ہوں گے یا پھر قبل از گرفتاری ضمانت لینے میں کامیاب ہو جائینگے؟ اسٹیبلشمنٹ سے معاملات کس حد تک طے ہوگئے ہیں ۔ جو یقین دہانیاں ا نہیں مطلوب تھیں کرادی گئی ہیں یا ابھی کچھ شرائط طے ہونا باقی ہیں۔یہ اور اسی
مزید پڑھیے


یہ معاملہ کچھ اور ہے !!

پیر 25  ستمبر 2023ء
ڈاکٹر محمد سلیم شیخ
پاکستا ن کی سیاست میں آج کل ایک اصطلاح کا بڑا شور ہے اور وہ ہے LEVEL PLAYING FIELD یعنی کھیلنے کے لئے ہموار میدان یا کھیلنے کے یکساں مواقع۔ اردو میں اس اصطلاح کی وضاحت تو کی جاسکتی ہے مگر اس کا پوری معنویت کے ساتھ ترجمہ کرنے میں مجھے اپنی کم مائیگی کا اعتراف ہے ۔ جمہوری سیاست میں اس کا استعمال اس صورتحال کے اظہار کے لئے کیا جاتا ہے جب سیاسی جماعتوں کو سیاسی عمل میں شرکت کے مساوی مواقع حاصل نہ ہو رہے ہوں۔ یہ مواقع تحریر و تقریر
مزید پڑھیے








اہم خبریں