BN

٩٢ کے نام



محکمہ صحت قصور کا نوحہ

هفته 12 اکتوبر 2019ء
مکرمی!نئی حکومت کو ایک سال سے زیادہ کا عرصہ ہو چلا ہے۔ ملکی معاملات جس ڈگر پر ہیں، سب کے سامنے ہیں۔ قصور میںصحت کے معاملات بھی عوام الناس کی پریشانی کا سبب بنتے جا رہے ہیں ۔دیہی مراکز صحت میں ادویات کا سٹاک محدود کر دیا گیا۔ اعلیٰ افسران کو دکھانے کیلئے دوائیاں سجا کر رکھ دی گئی ہیں۔ غریب بس ایک دو طرح کی لوکل پرچیز کی گئی سستی گولیوں کی صبح شام کی ایک ایک خوراک لے کو لوٹتا ہے۔ کسی دوائی کیلئے کم از کم3دن کی خوراک کھانا ضروری ہوتا ہے ، یہ بات عام آدمی
مزید پڑھیے


ملک دھرنوں کا متحمل نہیں ہوسکتا۔۔

هفته 12 اکتوبر 2019ء
مکرمی !دھرنے ، احتجاج اور ہڑتالیں ریاست میں سیاسی ،معاشی اور سماجی عدم استحکام پیدا کرتے ہیں ۔ہمارے ہاں تو احتجاج کرنے کے اسباب اور طریقہ ہائے کار سب سے نرالے ہیں ۔ وجوہات میں ذاتی مفادات اور انائیں جبکہ طریقہ کار میں ریاستی اداروں ،شاہراہوں اور جملہ عوامی معاملات کو مفلوج کرنا شامل ہیں ۔حادثے سے بڑھ کر سانحہ یہ ہے کہ ہر ہڑتالی و احتجاجی گروہ کے پاس اپنے دھرنوں کے جائز ہونے کے جواز اور دلائل بھی ہوتے ہیں ۔آئین کی رو سے پُر امن احتجاج شہریوں کا حق ہے مگر عوام
مزید پڑھیے


کشمیر کے لئے طویل المدت حکمت عملی

هفته 12 اکتوبر 2019ء
بھارت کے 5اگست والے اقدامات کے بعد سے پاکستانیوں کے ذہن میں متعدد سوالات گردش کر رہے ہیں۔ ان میں سے پہلا سوال بھارت کے ماضی اور حال کے رویے سے متعلق ہے۔ یعنی بھارت گزشتہ 72سال سے کشمیر کے معاملے پر ٹال مٹول سے کام لے رہا تھا اور بالآخر اس نے آخری قدم اٹھا لیا اور کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کرتے ہوئے اسے بھارت کا حصہ بنانے کا اعلان کر دیا۔ گویا اس نے اقوام متحدہ کے فورم پر کئے گئے وعدوں اور گیارہ قرار دادوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے کشمیر کو باقاعدہ بھارت کا
مزید پڑھیے


بڑ ھتی ہو ئی مہنگا ئی اور غر یب عوام

جمعه 11 اکتوبر 2019ء
مکر می! آ ج کل بڑ ھتی ہو ئی مہنگا ئی سے غر یب عو ام کا جینا بہت مشکل ہو گیا ہے۔ا ٓ ئے دن ا شیا ء کی بڑھتی ہو ئی قیمتو ں کی و جہ سے عو ام کی پر یشا نیو ں میں ا ضا فہ ہو تا جا ر ہا ہے۔غر با جن کا گز ر بسر پہلے ہی بہت مشکل سے ہو ر ہا ہے اس بڑ ھتی مہنگا ئی نے تو ان کی کمر تو ڑ کر ر کھ دی ہے۔آ ٹا ‘ دال ‘ چینی ‘ چا ول اور کو کنگ آ
مزید پڑھیے


یکساں نصابِ تعلیم

جمعه 11 اکتوبر 2019ء
مکرمی ! معاشرتی اصلاح کے لئے نظام تعلیم ایک جیسا ہی ہونا چاہئے اور یہ تب ممکن ہوسکتا ہے جب اس معاشرہ میں بسنے والے افراد کے لئے ایک جیسا نصاب اور لائحہ عمل ہو،جس ملک میں نصاب سازی افراد کی صلاحیتوں اور ضرورتوں کو مدنظر رکھ کر کر نہیں بنائی جائے گی وہ معاشرہ کبھی بھی طبقاتی نظام کے چنگل سے باہر نہیں آسکے گا۔اگر قوموں کی تاریخ کا مطالعہ کیا جائے تو ہم دیکھتے ہیں کہ اسی طبقاتی نظام تعلیم کی وجہ سے ہی دنیا دو حصوں میں منقسم ہوکر رہ گئی ہے جسے،HAVE AND HAVE NOTS کہا
مزید پڑھیے




بچوں کی تعلیم و تربیت میں والدین کا کردار

جمعه 11 اکتوبر 2019ء
مکرمی !بچے کے لیے ماںاور کنبہ اوّلین پرورش گاہ اور تربیت گاہ ہوتی ہے۔ بچہ جو کچھ اپنے ماں باپ اور بڑے بہن بھائیوں کو کر تا دیکھتا ہے تو وہی کچھ سیکھتا ہے اور ویسی ہی عادات اپناتا ہے۔مزاج اور برتاؤ کا انداز بھی بچے میں بنیادی طور پر اپنے ماں باپ سے بذریعہ تقلید منتقل ہوتا ہے۔ اس لیے ماں باپ اور دوسرے بزرگوں کو چاہیے کہ وہ اپنے اعمال یا افعال سرانجام دیتے ہوئے یہ بات مدِّنظر رکھیں کہ بچے ان کی تقلید کریں گے۔ایک دینی معاشرے کے افراد کا مطلوبہ کردار مذہبی روایات کا آئینہ دار
مزید پڑھیے


عوام اور کتنی مہنگائی برداشت کرے؟

جمعه 11 اکتوبر 2019ء
مکرمی ! فقر وفاقہ، افلاس و غربت ایک ایسی دشوار گزار گھاٹی ہے جس کے ایک طرف ایمان کا اعلیٰ مرتبہ اور دوسری جانب کفر ہے۔ تنگ حال اور بھوک و افلاس گوکہ جسمانی لاغر بناتے ہیں مگر زبان کو وہ قوت دیتے ہیں کہ وہ سب کچھ کر گزرتا ہے ۔حصولِ آزادی کی ایک طویل مدت کے بعد بھی وطن عزیر کی رگوں میں غربت کا خون اب تک بڑی تیزی سے دوڑ رہا ہے۔ حکومت تاحال غربت کی پیاس بجھانے میں ناکام رہی ہے۔ عہدے تو تبدیل ہوتے ہیں،چہرے بھی تبدیل ہوجاتے ہیںمگر وہ سوچ
مزید پڑھیے


بھارتی دانشوروں کا مودی حکومت کے خلاف احتجاج

جمعه 11 اکتوبر 2019ء
مقبوضہ کشمیرکی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے بعد سے آج تک 68 روز ہو چکے ہیں ، کشمیری عوام مسلسل جبر و تشدد کے زیر سایہ جی رہے ہیں۔ اس دوران کشمیری عوام پاکستانی پرچم لہراتے ہوئے کرفیو توڑ کر باہر بھی نکلے۔ جن پر قابض فورسز کی طرف سے گولیوں ، پیلٹ گنز اور آنسو گیس کا بے دریغ استعمال کیا گیا۔ ان حالات کو دیکھتے ہوئے بھارتی عوام نے بھی مودی اقدامات کی مخالفت شروع کر دی ہے۔ کرفیو اور مواصلاتی پابندیوںکے باعث لوگوں کو خوراک ، ادویات اور دیگر اشیائے ضروریہ کی شدید قلت کا سامنا ہے۔
مزید پڑھیے


سرکاری ہسپتالوں کی حالت زار

جمعرات 10 اکتوبر 2019ء
مکرمی !سادہ لوح عوام کومہنگائی،غربت، بیروزگاری اورپسماندگی سے پا ک نئے پاکستان کے سپنے اورخواب دکھانے والوں نے محض ایک سال میں انہی غریب عوام کے منہ سے روٹی کانوالہ چھیننے کے ساتھ اب ان کے جسم سے گوشت نوچنے، خون اورہڈیاں چوسنے کاکام بھی شروع کردیاہے۔ عوام کی قسمت بدلنے کے لئے بھینس،کٹے،مرغیاں اورانڈے بیچنے والوں نے اب قوم کی تقدیربدلنے کے لئے عوام ہی کوبرسربازارنیلام کرنے پراپنی نظریں مرکوزکردی ہیں ۔حکومتی وزیروںاورمشیروں کے بدلتے تیوراوراژدھوں کی طرح کھلے منہ دیکھ کریوں محسوس ہو رہاہے کہ حالات اگریہی رہے تو عوام کا بہت برا حال ہوگا۔کیاعوام نے تحریک انصاف
مزید پڑھیے


مہنگائی کا خاتمہ کب ہوگا؟

جمعرات 10 اکتوبر 2019ء
مکرمی !سیاست میں کوئی بات حرف آخر نہیں ہوتی ، حالات واقعات کیساتھ ساتھ سیاستدانوں کے بیانات تبدیل ہوتے رہتے ہیں ، اگر عوام میں سے کوئی بات کہہ کر بدل جائے تو اس کو منافقت کانام دیا جاتا ہے ،اگر کوئی سیاستدان مناسب بات کہہ کر مکر جائے تو اس کو ’’دیکھا نہ میری سیاست ‘‘ کہا جاتا ہے۔ کوئی روٹی کپڑے اور مکان کا نعرہ لگا کر عوام کو بیوقوف بناتا ہے تو کوئی صحت کے نام پر چکر چلاتا تو کوئی تعلیم کے نعرہ کیساتھ عوام کیساتھ کھیلتا ہے ، کوئی بیروزگاری ختم کرنے تو کوئی مہنگائی
مزید پڑھیے