BN

اشرف شریف



اہل سیاست کے ہاتھوں اہل ثقافت کی موت


پنجاب یونیورسٹی میں ایم ایس سی فلم اینڈ ٹی وی کے طلباء کو گزشتہ چند برسوں سے میں ’’قومی و بین الاقوامی امور‘‘ پڑھا رہا ہوں۔ صرف ایک لیکچر رہ گیا ہے۔ سمسٹر مکمل۔ ’’ڈپلومیسی، اس کا ڈھانچہ اور اس کے مقاصد‘‘ ان فنکار طالب علموں کے لئے شاید ایسا ہی خشک موضوع ہے جیسا ہمیں ریاضی معلوم ہوا کرتا تھا۔ لیکچر مکمل ہونے پر میں نے کچھ فنی گفتگو کا فیصلہ کیا۔ میں نے پوچھا آپ میں سے کتنے لوگ اندر سبھا ڈرامہ اور اس کے مصنف امانت لکھنوی سے واقف ہیں۔ جواب سکوت۔ پھر پوچھا کیا کوئی رستم
پیر 07 اکتوبر 2019ء

شکریہ عمران خان!

پیر 30  ستمبر 2019ء
اشرف شریف
مستنصر حسین تارڑ صاحب ڈھائی ماہ کے بعد ملک واپس آ ئے ہیں۔ رات کو ان کے ہاں مدعو تھا۔ عمران خان کا خطاب شروع ہوا تو ابتدائی چند منٹ کے بعد مجھے دفتر سے تارڑ صاحب کی طرف نکلنا پڑا۔ اگلی صبح نشرر مکرر میں ساری تقریر سنی۔ عمران خان کہاں، ایک درد تھا جو لفظوں کے سیلاب میں ڈھلا اور اقوام عالم کو بہا لے گیا۔ کیا دکھ تھا جس کو عیاں نہ کیا۔ مسلم ریاستوں میں عربی و عجمی کا امتیاز بہت نمایاں ہے، اتنا نمایاں کہ عربوں نے عرب لیگ بنا کر اپنے مفادات کی الگ تشریح
مزید پڑھیے


مولانا: کیا عمران مخالف دیوار گرنے کو ہے؟

پیر 23  ستمبر 2019ء
اشرف شریف
مولانا فضل الرحمان کے مارچ کو ختم نبوت سے جوڑیں یا عمران مخالف جذبات کا اظہار کہیں یہ سچ ہے کہ ریاست کو اپنی تعمیر کردہ ایک اور دیوار کو دھکا دینے کا وقت آ پہنچا۔ مولانا کا مزاج اقتدار پسندانہ ہے۔ ان کے پاس اپنی بات کہنے کے سو طریقے ہیں۔ سب سے خطرناک طریقہ مذہبی کارڈ کا استعمال ہے جو شاید پہلی بار اداروں کی مرضی کے خلاف استعمال ہو رہا ہے۔ چند ماہ قبل ایک کالم میں لکھا تھا کہ مولانا کا خرچ اٹھانے پر جس دن مسلم لیگ ن یا پیپلز پارٹی نے اتفاق کر لیا
مزید پڑھیے


1947 ء کے بعد خالصتان تحریک

پیر 16  ستمبر 2019ء
اشرف شریف
1950ء کے عشرے یعنی آزادی کے فوری بعد جب کانگرس کی طرف سے سکھوں کے ساتھ کئے گئے وعدے پورے ہوتے نظر نہ آئے تو پنجاب کی لسانی شناخت محفوظ بنانے کے لئے مظاہروں کا سلسلہ شروع ہو گیا۔ بھارت کے سٹیٹ ری آرگنائزیشن کمشن نے شدید احتجاج کے بعد پنجابی زبان کو قومی زبانوں میں شامل کرنے کے حوالے سے سکھوں کے مطالبات تسلیم کر لئے مگر اس کے بعد مشرقی پنجاب کے وسیع علاقے کو ہما چل پردیش ‘ ہریانہ اور پنجاب کی تین ریاستوں میں بانٹ دیا۔ پنجاب کو زرعی مراعات ملیں۔ سبز انقلاب کے مقامی
مزید پڑھیے


مطالبہ خالصتان کی تاریخی بنیادیں (2)

منگل 10  ستمبر 2019ء
اشرف شریف
اس نے کہا کہ 14مئی 1946ء کے بیان کی بنیاد پر ہم چاہتے ہیں کہ اگر سرکار برطانیہ سکھوں کو بیچ منجدھار چھوڑ کے چلی گئی تو یہ بہت بڑی ناانصافی ہو گی‘‘ اس ملاقات میں کرتار سنگھ نے تجویز دی کہ پنجاب کے دو حصے کر کے انہیں اختیار دیدیاجائے کہ وہ جب چاہیں نئے آئین سے علیحدہ ہو سکیں۔ گیانی کرتار سنگھ نے اس موقع پر ایک سکھ ریاست کے کچھ خدوخال بھی گورنر کے سامنے رکھے۔ اس نے کہا کہ سکھوں کے الگ صوبے سے مرادغیر مسلم اکثریتی صوبہ ہے۔ جس میں تمام سکھ علاقہ شامل
مزید پڑھیے




مطالبہ خالصتان کی تاریخی بنیادیں

پیر 09  ستمبر 2019ء
اشرف شریف
خالصتان کی آزادی پر سکھ آبادی ایک بار پھر متحرک ہو رہی ہے۔ سکھ کشمیریوں کی حمایت کر رہے ہیں۔ برطانوی پارلیمنٹ کے سکھ رکن نے اسلاموفوبیا اور کشمیر پر بڑے جوش بھرے انداز میں بات کی۔ کینیڈا میں مقیم سکھ برادری نے کشمیریوں کے لئے آواز اٹھائی ہے۔ برطانیہ میں سکھ نوجوانوں نے کشمیریوں کے ساتھ مل کر بھارتی ہائی کمشن کے دروازے پر انڈے پھینکے۔ خود بھارت کے اندر بہت سے دانشوروں کے علاوہ مشرقی پنجاب کی سکھ آبادی پاکستان اور اہل کشمیر کی حمایت کر رہی ہے۔نئی دہلی کے ایک انسان دوست سکھ نے ایک سو
مزید پڑھیے


افغانستان : مقامیت اور بین الاقوامیت میں مذاکرات

پیر 02  ستمبر 2019ء
اشرف شریف
دس روز قبل انگریزی کے ایک اخبار نے خبر دی کہ امریکہ اور طالبان انخلا کے معاہدے پر متفق ہو گئے ہیں۔ ایسی ہی کچھ باتیں حساس اطلاعات تک رسائی والے مبصرین کر رہے تھے‘ افغانستان کے تنازعے پر مذاکرات کے آٹھ مرحلے ہو چکے تھے ان مذاکراتی ادوار میں جو پیشرفت ہوئی ہم اسے بھی زیر بحث لاتے رہے ہیں۔ امریکہ اور طالبان کا آٹھواں دور بہت اہم شمار ہو رہا تھا۔ امید تھی کہ اس بار معاہدے پر دستخط ہو جائیں گے لیکن ان ہی دنوں نریندر مودی حکومت نے مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت کو یکطرفہ طور
مزید پڑھیے


گھنے پیڑ، ہیر کی لے اور وارث شاہ

پیر 26  اگست 2019ء
اشرف شریف
پنجاب کی سانجھ اس کے پانچ دریا اور چھ بابے ہیں۔ بابا فرید‘ شاہ حسین‘ بلھے شاہ‘ سلطان باہو ‘ میاں محمد بخش اور وارث شاہ۔ وارث شاہ نے اپنی زندگی میں قصہ ہیر رانجھا کے علاوہ کچھ اور لکھا ہے تو میرے علم میں نہیں۔ انہوں نے ہیر لکھ کر پنجاب کی زبان ‘ اقدار اور ثقافت کے کئی ابدی رخ اجاگر کر دیے۔ یہ قصہ سیدھا چلنے والے اور سکھ کے ساتھ زندگی گزارنے کی آرزو کرنے والوں کے لئے نہیں۔ ہیر سیدھا سادہ کردار ہے نہ رانجھا۔ وارث شاہ نے ایسے دو کردار تخلیق کئے جو سماج
مزید پڑھیے


کوہاٹ کے جنگل میں منگل

پیر 19  اگست 2019ء
اشرف شریف
ماہرین کی تازہ تحقیق بتاتی ہے انسان ایک منٹ میں ڈیڑھ ایکڑ جنگلات ختم کر رہا ہے۔ سالانہ 10ارب سے زائد درخت ایندھن‘ فرنیچر اور دوسری ضروریات کی نذر ہو رہے ہیں۔ تحقیق بتاتی ہے کہ اگر 10ہزار تربیت یافتہ افراد ہر روز درخت لگائیں تو وہ کٹنے والے جنگلات کی کمی پوری نہیں کر سکتے۔ آسٹریلوی کمپنی نے درختوں کے اس خسارے کو پورا کرنے کے لئے ایک ڈرون تیار کیا ہے جو ایک روز میں ایک لاکھ بیج لگا سکتا ہے۔ ایک سال میں ایک ڈرون لگ بھگ ساڑھے تین کروڑ درختوں کے بیج لگانے کی صلاحیت رکھتا
مزید پڑھیے


جغرافیائی تبدیلیوں کا امکان، کشمیر اور اُمہ

بدھ 14  اگست 2019ء
اشرف شریف
عید کے روز قربان گاہوں سے جتنا خون بہا اور کراچی میںجتنی بارش ہوئی بھارتی فوج نے اب تک اہل کشمیر کا اتنا لہو تو بہا دیا ہو گا۔ کشمیر ریاست نہیں بلکہ پاکستانیوں کی شہ رگ ہے۔ برصغیر کی تقسیم کے وقت اس تنازع کا باقی رہنا ثابت کرتا ہے کہ برطانوی سلطنت کی گڈ گورننس ایک آنے کی نہیں تھی۔ بہتر سال سے اس تنازع کا لہو اگلتے رہنا اس بات کی دلیل ہے کہ امریکہ کی سرکردگی میں بین الاقوامی نظام نہ تو مہذب ہو سکا اور نہ ہی عالمی امن کے لئے مستحکم اصول وضع کر
مزید پڑھیے