BN

اشرف شریف


جنرل سلیمانی کی ہلاکت: ایرانی ردعمل کا حجم کیا ہو گا؟


امریکی ڈرون نے بغداد ایئر پورٹ سے گاڑی میں روانہ ہونے والے ایرانی میجر جنرل قاسم سلیمانی کو نشانہ بنایا۔ عراق میں چند روز قبل امریکی سفارت خانے پر دھاوے کے بعد امریکی کارروائی کا خدشہ تھا لیکن اس سے پہلے خلیج میں اپنے ایک جدید ڈرون کی ایران کے ہاتھوں تباہی کے بعد تلملاتے امریکہ سے اس قدر بڑی کارروائی کی توقع نہیں کی جا رہی تھی۔ جنرل قاسم سلیمانی 1998ء سے تادم موت القدس فورس کے سربراہ رہے۔ یہ فورس ایرانی سرزمین سے باہر فوجی کارروائی اور خفیہ آپریشنز کے لئے معروف ہے۔ جنرل قاسم سلیمانی نے عراق
هفته 04 جنوری 2020ء

ایک این آر او محروم طبقات کے لئے بھی!

پیر 30 دسمبر 2019ء
اشرف شریف
سردی کے ساتھ یکطرفہ رومان میں مبتلا ہم اہل لاہور اس بار سردی کی جانب سے اظہار محبت کا لطف اٹھا رہے ہیں ۔سردی کسی کے گھٹنوں سے لپٹ رہی ہے تو کسی کے ماتھے پہ بوسے دے رہی ہے اور ہم ہیں کہ اس کی بے باکیوں سے شرما کر سکڑے جا رہے ہیں۔ لحاف میں دبکے بیٹھے ہیں یا ہیٹر کی قربت میں پناہ لیے ہوئے ہیں۔ لوہے کی بنی ہر چیز گویا برف کی بن چکی ہے۔ انسان بولتے ہیں تو یہی لگتا ہے برف بول رہی ہے۔ اس کیفیت پر پورا کالم لکھنا تھا مگر ہڈیوں
مزید پڑھیے


ربابہ کی خود کلامی اور الیاس سیتا پوری

اتوار 22 دسمبر 2019ء
اشرف شریف
اردو ادب کے چار نام سامنے آئیں تو قوت متخیلہ کا وفور گویا جگمگانے لگتا ہے۔ کربلا گامے شاہ لاہور میں آسودۂ خاک محمد حسین آزادؔ ‘ الیاس سیتا پوری‘ منیر نیازی اور ناصر کاظمی۔ ممکن ہے اور لوگ بھی ہوں جنہیں میں نہ پڑھ سکا۔ الیاس سیتا پوری اس لحاظ سے منفرد ہیں کہ انہوں نے نسیم حجازی قسم کی تاریخی کہانیوں کی لت میں پڑی نسل کو تاریخی کہانی کا شعور دیا۔ یاد رکھئے! کہانی حقیقت نہیں ہوتی مگر حقیقت کے بطن سے ظاہرہوتی ہے۔ زنوبیا ‘الیاس سیتا پوری کی صاحبزادی ہیں۔ خود پرفارمنگ آرٹ اور صحافت سے منسلک
مزید پڑھیے


وکلا کی سماجی افادیت پر سوال

پیر 16 دسمبر 2019ء
اشرف شریف
میرے گھر میں دو وکیل ہیں‘ میرے دوستوں میں دس بارہ وکیل ہیں‘ یہ سب اصلی ڈگری والے‘ ادبی ذوق و سماجی شعور رکھتے ہیں۔ پنجاب کارڈیالوجی پر جن وکلا نے حملہ کیا وہ کوئی اجنبی لوگ ہیں جنہیں نہ میں جانتا ہوں نہ معاشرہ ان کی افادیت سے واقف۔ ہم نے ایس ایم ظفر‘ عابد منٹو‘ نعیم بخاری‘ عارف چودھری جیسے لوگ دیکھ رکھے ہیں۔ تلخ بات کا دلیل سے جواب دینے والے‘ شعر کہہ کر دوسرے کو خاموش کرا دینے والے‘ ایک کتاب کے حوالے پر درجنوں کتابوں کا حوالہ دینے والے‘ سماج سے رابطہ رکھنے والے اور
مزید پڑھیے


تانیہ ایدریس ہر ماہ 450 برس بچائیں گی

پیر 09 دسمبر 2019ء
اشرف شریف
محنت اور محنت کے ٹولز بدل رہے ہیں۔ کوئی چاہے تو ڈیجیٹل پاکستان پروگرام کو تبدیلی کی علامت قرار دے سکتا ہے۔ تانیہ ایدریس کسی سیاستدان یا معروف پاور بروکر کی بیٹی نہیں، ایک عام پاکستانی خاتون ہے جس نے ٹیکنالوجی کے ذریعے ذرائع پیداوار تبدیل کرنے کی سائنس سیکھی۔ تانیہ ایدریس اور ان کی ٹیم گوگل میں اہم ذمہ داریاں ادا کرتی رہی ہے۔ گوگل کو جو لوگ نہیں جانتے وہ جان لیں کہ اس ڈیجیٹل کمپنی کا سالانہ بجٹ 110 ارب ڈالر سے زائد ہے۔ اس کا سربراہ کروڑوں ڈالر تنخواہ پاتا ہے۔ ٹھیک ٹھیک اعدادو شمار تو
مزید پڑھیے



کتنے گریباں چاک ہوں گے

جمعرات 05 دسمبر 2019ء
اشرف شریف
موسم بدلا رت گدرائی اہل جنوں بے باک ہوئے ظہیر کاشمیری کی یہ غزل تو موسم بہار کی آمد کا مضمون باندھتی ہے لیکن مجھے لگتا ہے کہ دس ماہ گرمی کی لپیٹ میں رہنے والے ہم لوگوں کے لیے سردیاں وہی لطف لاتی ہیں کہ جنون میں بے باک ہونے کو جی چاہتا ہے۔ اس بے باکی کے ساتھ ہوش ضروری ہے وگرنہ خواہ مخواہ جی چاہے گا کہ اس تصفیے کی حقیقت جانی جائے جس کے نتیجے میں پاکستان کو بیٹھے بٹھائے 38ارب روپے مل گئے۔ کسی کی جیب سے اتنی بڑی رقم نکلی ہے تو معاملہ ایسا سادہ تو
مزید پڑھیے


آگ لگی ہمری جھونپڑیا میں

پیر 02 دسمبر 2019ء
اشرف شریف
کبھی سوچا؟ ہم ،پوری قوم سنسنی خیزی کے نشے کی لت میں پڑ چکے ہیں۔ ہم میں سے کچھ لوگ اس بات پر خوشی سے پرجوش ہو جاتے ہیں کہ ہمارے گھر میں آگ لگی ہے۔ آگ لگی ہمری جھونپڑیا میں ہم گائے رے ملہار چلیں کچھ تاریخی معلومات کو دیکھتے ہیں،جس طرح برصغیر میں قدیم عمارتیں ماش کی دال، پتھر اور گارے سے تیار مرکب سے تعمیر ہوئیں اس طرح سیمنٹ کو سب سے پہلے اہل یونان نے استعمال کیا۔ یہ تین صدی قبل از مسیح کی بات ہے۔ یونانیوں نے پتہ چلایا کہ ریت، گول پتھروں اور کئی طرح کے دوسرے
مزید پڑھیے


گہرے سماجی شعور کی شاعرانہ جہتیں

جمعرات 28 نومبر 2019ء
اشرف شریف
ماہیا اور بولی پنجاب کے کھیتوں اور دیہات میں سرسوں کی طرح اُگتی اصناف ہیں۔ یہ رنگ کسان کے پسینے، گندم کی رنگت، مٹی کی محبت اور لفظوں کی روح بن کر بکھرتا ہے۔ جدید مضامین اور شہری زندگی کے اثرات نے ہماری شاعری کو اردو کی تکلفاتی زبان کی جانب مائل کیا۔ پنجابی نظم نے بہرحال اردو سے بڑھ کر آفاقی موضوعات کو جگہ دی، جنوبی افریقہ، کینیڈا اور انگلینڈ ہی نہیں مشرقی اور مغربی پنجاب کے دماغ بھی بہت زرخیز ہیں۔ ماہیا اور بولیاں موزوں طبع پنجابیوں کی من پسند اصناف ہیں۔ آزاد حسین گجراتیؔ نے اپنی موزوں طبیعت
مزید پڑھیے


دنیا کیا سے کیا ہو جائے گی

پیر 25 نومبر 2019ء
اشرف شریف
دنیا وہی ہے ۔ کائنات بھی وہی ہے جو ہزاروں اور لاکھوں سال سے موجود ہے۔ اس کو بدلتا دیکھنے والی آنکھ اور شعور کس چیز کو تبدیلی سمجھتے ہیں اس کا انحصار معاشرے کی عمومی سوچ پر ہے۔ کسی ایک صاحب دل کی آنکھ اورتجزیہ بسا اوقات اپنے پورے عہد کا شعور بن کر سامنے آتا ہے یا پھر پورا معاشرہ’’موت کا منظر‘‘ کا اسیر ہو سکتا ہے۔ مستقبل کی جنگوں اور قوم کی نشاۃ ثانیہ پر پیشگوئیاں کی جاتی ہیں۔ سیلاب آنا، خوفناک جنگیں، کسی عظیم بادشاہ کا عہد اقتدار، کسی خاص قوم کا زوال یا عروج، یہ
مزید پڑھیے


تاریخ سے کون مدد لے گا؟

پیر 18 نومبر 2019ء
اشرف شریف
تاریخ کی کوئی اچھی کتاب دو ہزار روپے میں مل سکتی ہے۔ پہلی حیرت یہی ہو گی کہ دو ہزار میں ایسی کتاب مل گئی جس کا ایک ایک لفظ لاکھوں روپے کا ہے۔ تاریخ آپ کو بتائے گی کہ عالیشان محلوں میں رہنے والے مسلمانوں کے ایک خلیفہ بیت المقدس میں بطور فاتح ایسے داخل ہوئے کہ خود اونٹ کی رسی پکڑ کر پیدل چل رہے تھے اور ساتھی اپنی باری کے موجب سوار تھا۔ بظاہر معمولی سا واقعہ اس وقت ایک عظیم الشان تاریخی روشنائی بن جاتا ہے جب ہمیں معلوم ہوا ہے کہ دوسری جنگ عظیم میں
مزید پڑھیے