Common frontend top

امتیاز احمد تارڑ


حافظ حسین احمد


ایک اعرابی نے اہلِ بصرہ سے پوچھا : اس علاقے کے لوگوں کا سردار کون ہے؟ جواب ملا : حسن بصریؒ۔اس نے کہا:انھیں لوگوں پر سیادت کیسے حاصل ہوئی؟ بتلایا گیا : لوگ ان کے علم کے محتاج ہیں، جب کہ حسنؒ ان کی دنیا سے بے نیاز ۔ بذلہ سنج حافظ حسین احمد کی جے یو آئی میں واپسی پر اعرابی کا تبصرہ یاد آیا ۔حافظ حسین احمد مار دھاڑ سے بے نیاز ،جبکہ جے یو آئی ان کی ظرافت کی محتاج۔ہنسی، مذاق اور طنزو مزاح سے محفل کوکشت زعفران بنانے کا سلیقہ انہیں خوب آتا ہے مگراس کے باوجود
اتوار 11 دسمبر 2022ء مزید پڑھیے

اقبال کا شاہین کہاں گم

اتوار 04 دسمبر 2022ء
امتیاز احمد تارڑ
اکبر الہ آبادی نے کہا تھا : ہم ایسی کتابیں قابل ضبطی سمجھتے ہیں کہ جن کوپڑھ کے بیٹے باپ کو خبطی سمجھتے ہیں اس شعر کو پڑھنے کے بعد بار بار نظام تعلیم کا جائزہ لیتا رہا کہ ایسا کہاں ہوتا ہے ۔جب مدارس کے نصاب اور ماحول کا جائزہ لیا تو وہاں قال اللہ و قال الرسول کی صدا سنائی دی ۔ایک وحشی صفت کو بھی اچھا انسان بنانے کا ماحول نظر آیا ۔طلبا میںادب اس قدر کہ خود ادب بھی حیران۔ ہڑتال، جلائو گھیرائو،اساتذہ کے ساتھ بدتمیزی ،بہت بڑی بات۔اساتذہ کے سائے پر بھی پائوں رکھ کر گزرنا ، گوارا
مزید پڑھیے


مفتی رفیع عثمانی ؒ

اتوار 20 نومبر 2022ء
امتیاز احمد تارڑ
آنکھ رورہی ہے،دل غمناک ہے ،لیکن زبان وہی کہے گی، جو میرے رب کی رضا ہے ،اے ابراہیم! ہم تیرے فراق میں بہت غم زدہ ہیں ۔ہم بھی کہیں گے اے استاد گرامی! آپ کی جدائی نے بہت دکھی کیا ۔آہ !ایک اور علم و عمل کا پہاڑ چل دیا ۔ہر ذی روح نے موت کا ذائقہ چکھنا ہے۔خالق ارض و سما کے اس ضابطے سے کوئی مستثنٰی نہیں۔ کاررواں چل رہا ہے‘ محفلیں اجڑ رہی ہے۔ آس پاس بیٹھے‘ پہلو بہ پہلو لوگ گم ہو رہے ہیں۔ شہاب ثاقب ٹوٹ ٹوٹ کر گر رہے ہیں مگر آسمان کا دامن یونہی
مزید پڑھیے


عزمِ جواں کی ضرورت

اتوار 13 نومبر 2022ء
امتیاز احمد تارڑ
عظیم دانشور نے کہا تھا: غلطی کرنا انسانی فطرت ہے مگر غلطیوں کی اصلاح نہ کرنا،خودکشی کے مترادف ۔ ایل ڈی اے کے افسران سے سنگین غلطیاں ہوئیں۔صرف غلطیاں نہیںبلکہ بلنڈر۔ ایل ڈی اے ایونیو ون منصوبے کے بعد اس محکمے سے لوگوں کااعتماد بھی اٹھ گیا،رہی سہی ساکھ ایل ڈی اے سٹی نے ختم کی۔ ارشاد باری تعالیٰ ہے: کُلُّ اَمْرٍمُسْتَقِرٌّ ہر کام کا ایک وقت مقرر ہے۔قبل از وقت کوئی کام نہیں ہو سکتا۔ جیسے امید کے شجر پہ شگوفے پھوٹتے اور پھول کھلتے ہیں‘ ایسے ہی ایک پھول ایل ڈی اے میں بھی کھلا۔برادرم مظہر برلاس نے جن
مزید پڑھیے


معظم گوندل

اتوار 06 نومبر 2022ء
امتیاز احمد تارڑ
کنفیوشس نے کہا تھا:دنیا میں سب سے بڑا بوجھ ’’باپ کے کندھے پر رکھے ہوئے جوان بیٹے کے جنازہ کا ہوتا ہے‘‘۔ اگر معصوم اولاد کے سامنے باپ کو گولی مار دی جائے، تو اس کی تکلیف کو بیان کرنے کے لیے الفاظ نایاب ۔جوان اولاد کی موت جس طرح باپ کی کمر دہری کر دیتی ہے،ایسے ہی معصوم اولاد زندگی بھر اس دکھ میں مبتلا رہتی ہے۔معصوم ذہن پر کرب کے لمحات نقش۔یادوں کی کپکپاتی لو بجھنے کا نام ہی نہیں لیتی۔ اسلم کولسری نے کہا تھا : بچے تو گلی میں بھی اکیلے نہیں جاتے معظم گوندل کے بیٹے اب کس کا
مزید پڑھیے



نئے کردار

اتوار 30 اکتوبر 2022ء
امتیاز احمد تارڑ
تاریخ اپنا ورق الٹنے والی۔ اگلے ڈرامے کے سب کردار نئے ہوں گے۔ کوئی نہیں جانتا کہ لانگ مارچ کا انجام کیا ہوگا۔ اسٹیبلشمنٹ، عمران خاں، شہباز شریف اور آصف علی زرداری سبھی نے اپنے پتے سینے سے لگا رکھے ہیں۔حتیٰ کہ مولنا فضل الرحمن نے بھی۔ عمران خاں نے اعلان توکیا ہے کہ وہ ریڈ زون میں داخل نہیں ہوں گے۔میرے خیال کے مطابق یہ سب اسلام آباد پہنچنے پر منحصر ہو گا۔حاضرین کی تعداد دیکھ کر،فیصلے ہوں گے ۔جلسہ گاہ تک محدود رہیں یا شاہراہِ دستور پہ یلغار کریں۔ لوٹ جائیں یا جمے رہیں۔دلوں کے بھید اللہ
مزید پڑھیے


مولوی ،مسجد اور معاشرہ

اتوار 23 اکتوبر 2022ء
امتیاز احمد تارڑ
محبوبِ سُبحانی شیخ عبد القادر جیلانیؒ کا فرمان ہے:دین کی اصل عقل، عقل کی اصل علم اور علم کی اصل صبر ہے، لہٰذا صبر کا دامن ہاتھ سے کبھی نہ چھوڑو۔ ہمارے معاشرے کے علمائے کرام اس قول کی عملی تصویر ہیں ،جنھوں نے محدود وسائل میں صبر و شکر کا دامن کبھی نہیں چھوڑا۔ہماری سوسائٹی نے علما ئے کرام کے ذمے چارکام لگائے تھے ۔پنجگانہ نمازکی امامت،پیدائش کے وقت بچے اور بچی کے کان میں اذان و اقامت، نکاح خوانی اور نماز جنازہ۔آپ کو زندگی بھر کبھی یہ لفط سننے کو نہ ملا ہو گا کہ ان مواقع پر مولوی
مزید پڑھیے


میری باتیں ہیں یاد رکھنے کی!

اتوار 16 اکتوبر 2022ء
امتیاز احمد تارڑ
سید سلمان گیلانی، صاحبِ مروت‘ فیاض‘ سیر چشم و متواضع آدمی ہیں‘ نیک نامی اور خوش الحانی انہیں ورثے میں ملی‘ ہنسی، مذاق اور طنزو مزاح سے محفل کو کُشت زعفران بنانے کا سلیقہ انہیں خوب آتا ہے۔اس کے باوجود زہد و تقوی‘ شرم و لحاظ ان کا طرہ امتیاز۔ ان کی قربت سماعت سے بہتر، حد درجے کی ایسی کشش کہ طبیعت کبھی نہ اکتائے۔ایسی لطافت‘ نظافت، پاکیزگی اور نورانیت ان کے ہم قافلہ میںکہاں۔ ان کی کتاب کا لفظ لفظ قابل داد‘ بعض فقرے تو تحسین سے بالاتر۔واقعات حیران کن‘ اندازِ تحریر مسحور کن۔’’ میری باتیں ہیں یاد
مزید پڑھیے


ہادی کامل ؐ

اتوار 09 اکتوبر 2022ء
امتیاز احمد تارڑ
سرکاردوعالم ؐ پر لاکھوں دورود سلام۔مہر علم و عمل پر صدہا درود،امام رُسل کی آمد سے گمراہیوں اور لاعلموں کو راہ اللہ ملی ۔صلہ رحمی کا درس ملا ۔ علوم مطہرہ سے آگاہی ہوئی ،سالہاسال سے عدوگلے ملے ۔حسد گمراہی ،دھوکہ دہی ،حرام کاری ،لوٹ مارکے عادی۔صلہ رحم ہوئے ۔مکہ کی وادی سے طلوع مہر ہوا،سارے عالم کی صالح ہوئی ۔اللہ کی مدد آئی ،عدومُصلح ہوئے ۔ہادی کامل کی حمد و دعا سے اہل مکہ مسرور ہوئے ،عدو حسد کی آگ سے دہک اٹھا ،لامحالہ ہر سُو صلہ رحمی کا دور دورہ ہوا۔ 14 سو سال سے مسلمان ہزاروں کلومیٹر
مزید پڑھیے


سائفر غائب

اتوار 02 اکتوبر 2022ء
امتیاز احمد تارڑ
کہنے کو بہت کچھ‘ مگر سنتا کون ۔ جس ملک کے وزیر اعظم آفس کی آڈیو ریکارڈنگ سوشل ویب پر فروخت کے لئے پیش کی جائے ،وہاں کچھ بھی ہو سکتا ہے۔اس ملک اور معاشرے کا اللہ حافظ، جہاں پر شعبدہ بازمعزز اور نجیب خوار و زبوں۔ آڈیو لیکس کے بعد وزیر اعظم شہباز شریف اور محترمہ مریم نواز کی اخلاقی پوزیشن خراب ہوئی‘ وہی پر عمران خاں کے سائفر کا بھی جنازہ نکلا۔اب تو سائفر غائب ہی ہو گیا،کہانی ختم : نہ رہے گا بانس نہ بجے گی بانسری عمران خاںلاکھ شور مچائیں،جلسے کریں یاجلوسوں میں کاغذ لہرائیں۔
مزید پڑھیے








اہم خبریں