Common frontend top

ڈاکٹر اشفاق احمد ورک


تین مسحور کُن کتابیں


مستنصر حسین تارڑ بھی کیا غضب کے آدمی ہیں، جب بھی ملتے ہیں کسی نہ کسی نئی تخلیق کا ٹنگار اُن کی شخصیت کے بھیتر جھانک رہا ہوتا ہے۔ ہم نے بڑے بڑے جاٹوں کو دیکھا ہے، کبھی نہ کبھی ان کے دانے ختم ہو جاتے ہیں لیکن یہ ایسا جاٹ ہے کہ جس کی تخلیق کے بھڑولے ہمیشہ کنو کن بھرے رہتے ہیں ۔ گزشتہ دنوں ماڈل ٹاؤن پارک میں’ ’تکیۂ تارڑ‘‘ پہ ملاقات ہوئی تو نہ صرف پنجاب کے انوکھے نرالے ہیرو بھگت سنگھ کے حوالے سے لکھے ان کے نئے پنجابی ناول ’’مَیں بھَنّاں دِلّی دے کِنگرے‘
اتوار 02 اپریل 2023ء مزید پڑھیے

میری ’’مجال‘‘

اتوار 26 مارچ 2023ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
مَیں نے کہیں لکھا تھا کہ مَیں کچھوا مزاج کا آدمی تھا، مجھے خرگوشوں کی نگری میں چھوڑ دیا گیا۔ دیکھنے میں آیا ہے کہ مَیں اکثر اپنا پورا وجود باہر نکالنے کی بجائے صرف گردن نکالتا ہوں۔ ماحول اور مزاجوں کو زبان کی بجائے آنکھوں اور کانوں سے چکھتا ہوں۔ آپ جانتے ہیں کہ کچھوے کی سب سے بڑی مجبوری یا مکاری یہ ہوتی ہے کہ وہ کسی کے سامنے اپنے پاؤں پہ کھڑا ہونا تو کجا، ڈھنگ سے جھک بھی نہیں سکتا، کیونکہ جھکنے کے لیے زمین سے تھوڑا بہت اوپر اُٹھا ہونا ضروری ہوتا ہے۔ اوپر والوں
مزید پڑھیے


آئیں ترازُو کے پلڑے برابر کریں!

منگل 21 مارچ 2023ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
امیر مینائی، داغ اور حالی کے ہم عصر شعرا میں نمایاں مقام رکھتے تھے۔ انیسویں صدی کا نصف آخر اِن تینوں ہستیوں کے کلام اور ذکر سے مہک اٹھتا ہے۔ یہ وہی امیر مینائی ہیںجن کا دلبریاں کرتا یہ شعر تو تمام اہلِ نظر کی زبان پر اور ہر اہلِ دل کے ایمان کے اوپر والے خانے میں رکھا ہے: خنجر چلے کسی پہ تڑپتے ہیں ہم امیر سارے جہاں کا درد ہمارے جگر میں ہے ہماری ایک فیس بک فرینڈ نے موجودہ حالات کے تناظر میںانھی امیر مینائی کا ایک شعر احباب کے ساتھ سانجھا کیا ہے،جس میںموجودہ حکومت کے
مزید پڑھیے


سَیر پہلی درویشنی کی!

اتوار 12 مارچ 2023ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
گھر میں شوہر ، اہلیہ اور ساس بھی موجود ہے کیا کسی کو پھر کسی کا امتحاں مقصود ہے ! میری پیاری، نیاری، کراری، دکھوں کی ماری، آدھی یا ساری بہنو سنو! جیسے چاہو خیالات کے تانے بانے بُنو پر میری ہمت اور بہادری کے واقعات پہ سر دُھنو۔ مَیںاپنا حال بتاتی ہوں، عاشقوں کو تڑپاتی ہوں، حاسدوں کو ہنساتی ہوں، خود روتی اور سب کو رُلاتی ہوں ، غرض یہ کہ اپنا قصہ خود ہی سناتی ہوں۔ پچھلی صدی کے سہانے سالوں میں ، فدویہ نے ایک عجیب و غریب (غریب کم عجیب زیادہ) گھرانے میںآنکھ کیا کھولی کہ زمانے کی
مزید پڑھیے


چوراسی سال کا تارڑ

اتوار 05 مارچ 2023ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
اس عنوان کا یہ مطلب نہیں کہ ان کا تعلق شام چوراسی گھرانے سے ہے۔ ان کی نسبت تو صبح چوراسی کے اس خاندان سے ہے، جس کا ستارہ آسمانِ ادب پہ کئی دہائیوں تک پوری آب و تاب سے چمکاتا رہے گا۔ ندا فاضلی کا نہایت خوب صورت شعر ہے کہ: ہر آدمی میں ہوتے ہیں دس بیس آدمی جس کو بھی دیکھنا ہو کئی بار دیکھنا لیکن آپس کی بات ہے کہ اس شعر کی نزاکت، لطافت اور تاثیر کو پوری طرح محسوس کرنے کے باوجود ہمیں اس کے مفہوم و معانی سے اتفاق نہیں ہے کیونکہ اسی دنیا میں نصف
مزید پڑھیے



پَونے تئیس کروڑ گونگے!

اتوار 26 فروری 2023ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
اس میں کوئی شک نہیں کہ اس وقت پنجاب میں اُردو اور پنجابی، سندھ میں سندھی اور اُردو، بلوچستان میں بلوچی اور اُردو، کے پی کے میں پشتو اور اُرود ہماری مادری زبانیں ہیں۔ اکیس فروری مادری زبانوں کا دن تھا۔پوری دنیا اپنی اپنی مادری زبانوں کے واری صدقے جا رہی تھی لیکن ہم نے دنیا بھر کی سات ہزار زبانوں میں نمایاں حیثیت اور ادب کا پُر وقار ذخیرہ رکھنے والی زبانوں کے مالک ہوتے ہوئے بھی اِن کی توقیر بحال کرنے کا یہ دن سیاسی کھمبا نوچی اور لمبی لمبی زبانوں سے جلے کٹے بیان دینے میں گزار
مزید پڑھیے


اُردو شاعری کی آنکھیں

اتوار 19 فروری 2023ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
آنکھیں، انسانی وجود میں بہت نمایاں مقام رکھتی ہیں۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ یہ انسان کا سب سے پہلا تعارف ہوتی ہیں۔ یہ انسان کے باطن میں چھپی دہشت، وحشت کا بھی پتہ دیتی ہیں اور اُس کی ظاہری خوبصورتی کو بھی چار چاند لگا دیتی ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ اللہ تعالیٰ نے قرآن پاک میں انسان پر کی جانے والی نوازشوں اور اس کی ترغیب کے لیے بار بار اچھی آنکھوں والی حوروں کا ذکر کیا ہے۔ سورہ البلد میں ارشاد ہے: کیا ہم نے اس کی دو آنکھیں نہیں بنائیں؟ اسی طرح سورہ واقعہ میںنیک
مزید پڑھیے


اُردو ادب کے نزاکت علی خاں

پیر 13 فروری 2023ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
صدیوں سے غزلوں کی چھتر چھاؤں میں پروان چڑھنے والے مشاعروں میں اپنی سدا بہار اور طول طویل نظموں سے تھرتھلی مچا دینے اور صحیح معنوں میںمشاعرہ لُوٹ لینے، عرصۂ دراز سے مقبولیت کے سنگھاسن پہ بیٹھا ہمارا یہ شاعر،ایک زمانے میں سڑکوں سے ٹریفک غائب کر دینے والا ڈراما نگار، محفل کو پل بھر میں زعفرانِ زار بنا دینے والا لطیفہ باز، لطیفہ ساز، دوستوں کا دوست، خُردوں کو بڑھ کے گلے لگانے والا خندہ جبیں، جو نصف صدی تک ادب کی رگوں میں خون بن کر دوڑتا رہا، زندگی اور زندہ دلی جس کی بلائیں لیتی رہی،
مزید پڑھیے


تاریخ سے لپٹی چند کتابیں

اتوار 05 فروری 2023ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
کہا جاتا ہے کہ تاریخ زمانوں کا علم ہے، جغرافیہ زمینوں کی سرگزشت ہے اور ادب ذہینوں کی کار گزاری۔ یہی وجہ ہے کہ جو ادب تاریخ اور جغرافیہ کا دودھ پی کے جوان ہو وہ کئی آتشہ ہوتا ہے۔ ہم وہ بد قسمت قوم ہیں کہ گزشتہ پَون صدی میں جس کی تاریخ اور جغرافیہ مسلسل زلزلاتی کیفیت میں ہے۔ ہم پرائمری سکول میں ہوتے تھے تو ہماری نصابی کتب میں آل انڈیا مسلم لیگ کے بانی نواب سلیم اللہ، قرار دادِ لاہور پیش کرنے والے اے کے فضل الحق، برطانوی سامراج کے خلاف مزاحمتی جدوجہد کے پہلے مردِ
مزید پڑھیے


چند تعلیمی لطیفے

اتوار 29 جنوری 2023ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
گزشتہ صدی، نوے کی دھائی میںنجم نعمانی گورنمنٹ ہائی سکول کے ہیڈ ماسٹر تھے، جو تمام عمر ’تاجدارِ حرم‘ والی نعت کے اصل خالق ہونے کے دعوے دار رہے۔ یہ وہی سکول ہے، جہاں کسی زمانے میں احمد ندیم قاسمی طالب علم اور ن م راشد کے والد فضل الٰہی چوہان ہیڈ ماسٹر ہوا کرتے تھے۔ قاسمی صاحب بتایا کرتے تھے کہ ان دنوں ن م راشد فارغ التحصیل تھے اور جب کبھی والد صاحب سے ملنے شیخوپورہ آیا کرتے، اعزازی طور پر کچھ کلاسز بھی پڑھایا کرتے۔ بات نجم نعمانی کی ہو رہی تھی، انھی دنوں تنخواہوں کا نظام
مزید پڑھیے








اہم خبریں