BN

مجاہد بریلوی



میڈیا بحران ۔۔۔ذمہ دار کون؟


میڈیا کے بحران پر قلم گھسانا شروع کیا تو علم تھا کہ یہ ایک’’ بحرِ بیکراں‘‘ ہے کہ قیام ِ پاکستان کے بعد ہی سے خاص طور پر بانی ِ پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح کی رحلت کے بعد ہمارے حکمرانوں کا انداز ِ حکمرانی ، مطلق العنانی اور محلاتی سازشوں پر مبنی تھا۔ ایک آزاد پارلیمانی ،جمہور ی معاشرے ہی میں آزاد صحافت کی پرورش اور فروغ ہوتا ہے۔1947ء سے اکتوبر1958ئیعنی فیلڈ مارشل محمد ایوب خان کی مارشل لائی حکومت آنے تک ‘سیاسی حکومتوں نے جو کھلواڑ اس بدقسمت قوم اور ریاستی اداروں کے ساتھ کیا۔۔
پیر 11 فروری 2019ء

میڈیا بحران ۔۔۔ذمہ دار کون؟ …(3)

هفته 09 فروری 2019ء
مجاہد بریلوی
پاکستانی میڈیا کو درپیش بحران پر قلم اٹھایا ۔ ۔ ۔ تو ایک ’’دبستاں‘‘ تو کھلنا ہی تھا کہ یہ برس دو برس نہیں نصف صدی سے اوپر کا قصہ ہے۔اور اس کا ذمہ دار تین بڑے فریق یعنی حکومتِ وقت، اخبار مالکان اور اب الیکٹرانک میڈیا اور پھر خود ہمارا قبیلہ یعنی میڈیا کارکن ہیں۔مگر میڈیا کا رکن کی پوری برادری کو اس کا ذمہ دار نہیں ٹھہرا ناچاہئے۔ اکثریت تو لگی بندھی دہاڑی پر ہی لگے تھے ۔دراصل الیکٹرانک میڈیا آنے کے بعد وہ دس بیس انگلیوں پر گنے جانے والے سرکش ،خود سر اینکر اور
مزید پڑھیے


میڈیا بحران ۔۔۔ ذمہ دار کون؟…: 2

بدھ 06 فروری 2019ء
مجاہد بریلوی
پاکستانی میڈیا آج جہاں کھڑا ہے ، کیا اس سے وہ مزید تنزلی کی جانب جائے گا؟ یعنی مزید اخبارات و چینل بند ہوں گے اور ساتھ ہی مزید بے روز گار میڈیا ورکرز کی فوج ظفر ِ موج میں اضافہ ہوگا۔یا پھر اس بحران سے نکلنے کی اب بھی امید رکھنی چاہئے۔ معروف محاورہ ہے کہ ’’امید پر دنیا قائم ہے‘‘ مگر یہ مقولہ میڈیا پر پورا نہیں اترتا کہ محض ’’پیوستہ رہ شجر ‘‘ سے ماضی کے سنہری خوشگوار دن واپس نہیں آسکتے۔ اس کے لئے تینوں بڑے اسٹیک ہولڈرز یعنی حکومت،میڈیا مالکان اور ملازمین
مزید پڑھیے


میڈیا بحران ۔۔۔ ذمہ دار کون؟ (1)

اتوار 03 فروری 2019ء
مجاہد بریلوی
کیا پاکستانی میڈیا میںموجود بحران کی ذمہ دار صرف تحریک انصاف کی حکومت ہے؟ جس کی ایڈورٹائزنگ پالیسی نے اُسے پاکستانی صحافت کو تاریخ کے سب سے بڑے بحران سے دوچار کردیا ہے ا ور جس کے سبب ہر دوسرے دن کسی اخبار اور چینل کی بندش اور سینکڑوں ملازمین کی برطرفیوں سے صحافتی دنیا میں ایک بھونچال آیا ہوا ہے۔بنیادی طور پر اس وقت میڈیا کے تین اسٹیک ہولڈر ہیں۔ حکومت،میڈیا مالکان اور تیسرے ان اداروں میںکام کرنے والے ملازمین ۔ الیکٹرانک میڈیا آنے سے پہلے ایک چوتھا بڑا فریق بھی ہوا کرتا تھا اور وہ تھیں
مزید پڑھیے


بلوچ ۔۔۔ روشن چہرے

جمعه 01 فروری 2019ء
مجاہد بریلوی
جن سے مل کر زندگی سے عشق ہوجائے وہ لوگ آپ نے شائد نہ دیکھے ہوں مگر ایسے بھی ہیں برادر ِ عزیز رمضان بلوچ سے آشنائی تو برسہابرس سے تھی۔ مگر تفصیلی تعارف ان کی کتاب’’ لیاری کی ادھوری کہانی ‘‘سے ہوا۔اور اب میرے ہاتھ میں ان کی تازہ ترین کتاب ’’روشن بلوچ‘‘ ہے جسے بڑے پیارسے ہمارے کامریڈ واحد بلوچ نے اپنے ادارے مشانگ فاؤنڈیشن سے شائع کیا ہے۔ یہ وہی دوستوں کے لئے مشہور زمانہ اور ’’فرشتوں‘‘ کیلئے بدنام ِ زمانہ کامریڈ ہیں جو سال دو پہلے ’’لاپتہ افراد‘‘ کی فہرست میں اپنا نام سنہری لفظوں میں
مزید پڑھیے




کپتان کے کھلاڑی …(2)

پیر 28 جنوری 2019ء
مجاہد بریلوی
بانیٔ پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح کے کھوٹے سکّے ،بانی پاکستان پیپلز پارٹی ذوالفقار علی بھٹو کے جیالوں کے بعد فوجی ڈکٹیٹر جنرل ضیاء الحق اور جنرل پرویز مشرف کی مشیروں ،وزیروں ، خاص طور پر سول ملٹری بیوروکریٹس کی ٹیموں کا ذکر اس لئے ضروری نہیں کہ فوجی حکومتوں میںکلیدی کردار فرد ِ واحد یعنی آرمی چیف کا ہی ہوتا ہے۔ایک خاص وقت گذرنے کے بعد جب یہ فوجی ڈکٹیٹر وردی پر شیروانی چڑھا بھی لیںتو ان کے اندر کا فوجی باہر نہیں نکل پاتا۔فیلڈ مارشل محمد ایوب خان کو تو خیر کسی وزیر اعظم محمد خان
مزید پڑھیے


کپتان کے کھلاڑی

هفته 26 جنوری 2019ء
مجاہد بریلوی
صحافت کی دشت نوردی میں چار دہائی ہونے کو آرہی ہے۔ پرنٹ یعنی جب تک اخبار ات و جرائد سے وابستگی رہی ۔۔۔ تو پاس پڑوس تک ہی جان پہچان تھی۔مگر 2002میں جب پاکستان کے پہلے نجی چینل پر رونمائی ہوئی تو ، ہفتوں ،مہینوں میں جب ’’سلام ،دعا‘‘ کرنے والا چوتھا ، پانچواں ملتا تو حیرت اور خوشی کے ملے جلے جذبات غالب آجاتے ۔ یوں حکمرانوں سے بھی زیادہ قریب سے تعلقات استوار ہونا شروع ہوئے کہ اُس زمانے میں ڈی ایس این جی کااستعمال اتنا عام نہیں ہوا تھا بلکہ الیکٹرانک میڈیا کے ابتدائی چار ،پانچ
مزید پڑھیے


گڈ بائی چیف

منگل 22 جنوری 2019ء
مجاہد بریلوی
پاکستان کے 26ویں چیف جسٹس محترم آصف سعید کھوسہ کو خوش آمدید کہتے ہوئے ۔ اب جب 18جنوری کو سبکدوش ہونے والے چیف جسٹس محترم ثاقب نثار کے 12ماہ 17دن کے ہنگامہ خیز دنوں پر گفتگو کرتے ہوئے کم از کم ایک خوف تو نہیں کہ کہا ،لکھا تو ہین عدالت کے زمرے میں آجائے گا۔یہ توہین عدالت یعنی contempt of court بھی ایک ایسی اصطلاح ہے جس کی آج تک تو تشریح ہو نہیں سکی کہ پاکستان کی 71سالہ تاریخ میں جو 25 چیف جسٹس اس عہدہ ٔ جلیلہ پر پہنچے۔ان میں چند چیف صاحبان کو چھوڑ
مزید پڑھیے


سعودیہ میں پاکستانیوں پر کیا گزر رہی ہے۔۔۔؟

جمعرات 17 جنوری 2019ء
مجاہد بریلوی
بدقسمتی سے ادھر سال بھر سے قلم کی گھسائی جو ان کالموں میں ہورہی ہے۔تو یہ احساس شدت سے بڑھنے لگا ہے کہ موضوع سیاسی ہو یا سماجی ۔۔۔معاشی ہو یا صحافتی ۔۔۔یہ لفظ یعنی ’’بدقسمتی ـ‘‘کچھ زیادہ ہی تواتر سے آنے لگا ہے ۔ اب یہی دیکھیں کہ خانہ کعبہ اور مدینہ ٔ منورہ جیسے مقامات ِمقدسہ کے ملک سعودی عرب کا ذکر کرتے ہوئے پہلا لفظ ہی قلم سے سرزد ہوا ۔یہ ساری تمہید اس لئے باندھی کہ اتوار 13جنوری کو پاکستان کے معتبر ترین انگریزی اخبار میں پورے دو صفحوں پر مشتمل ایک انتہائی تحقیقی
مزید پڑھیے


خوش آمدید چیف جسٹس آصف سعیدکھوسہ… (2)

اتوار 13 جنوری 2019ء
مجاہد بریلوی
17جنوری کو ریٹائر ہونے والے چیف جسٹس آف پاکستان محترم ثاقب نثار کو بہر حال اس بات کا کریڈٹ ضرور دینا پڑے گا کہ انہوں نے پہلی بار حقیقتاً معروف اصطلاح میں ایسے ایسے بڑے سیاسی مگر مچھوں پر ہاتھ ڈالا جو گزشتہ تین دہائیوں سے نہ صرف ہر طرح کے عدالتی احتساب سے محفوظ رہے بلکہ معذرت کیساتھ عدالتی اور احتسابی ادارے ان کیلئے مالیاتی سہولت کاری کا کردار ادا کرتے رہے۔ سیاستدانوں کا ۔ ۔ ۔ چاہے ن لیگی ہوں یا پی پی ،تھانہ کچہری آنا جانا تو لگا رہتا ہے۔مگر انور مجید ، حسن لوائی ،ملک ریاض
مزید پڑھیے