ڈاکٹر اشفاق احمد ورک



تنہائی میں پڑھائی


کتاب کی حمایت میں اس سے بڑی دلیل کیا ہو سکتی ہے کہ قادرِ مطلق نے جب بھی انسان سے مخاطب ہونا چاہا، ہمیشہ کتاب کا سہارا لیا۔ ہماری قومی اور اجتماعی بد قسمتی میں جہاں دیگر بہت سے امور ملوث ہیں، وہاں ایک اہم ترین پہلو کتاب سے دوری کا بھی ہے۔ آج بھی دنیا بھر کے آرکیٹکچر میں کسی بڑے سے بڑے دفتر، گھر یا تفریح گا ہ کا جمالیاتی تصور کتاب کے بغیر مکمل نہیں ہوتا۔ آپ خود ہی اندازہ لگائیں کہ اگر محض کتاب کے سرورق کے عکس سے چیزوں کی ظاہری خوب صورتی میں اضافہ
منگل 07 اپریل 2020ء

’’نیک‘‘ ہوں مسلم، حرم کی پاسبانی کے لیے

اتوار 05 اپریل 2020ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
آپ حیران نہ ہوں، مَیں یہ بات پورے وثوق سے کہہ سکتا ہوں کہ شاعرِ مشرق کے ’’ایک ہوں مسلم‘‘ والے مطالبے کا تعلق سو سال پہلے والے مسلمانوں سے تھا، جو ظاہر ہے اپنی ہٹ دھرمی، جہالت، سستی جذباتیت، شدید قسم کی فرقہ پرستی، دین فروشی اور قدم قدم پر ڈیڑھ اینٹ کی مسجد بنانے کے شوق میں تو تیزی سے ’ایک‘ ہوتے چلے گئے لیکن حضرتِ اقبال کے اس مطالبے کو آج تک ہم نے دل سے مانا نہیں ۔ مَیں یہ نہیں کہتا کہ دنیا بھر کے ڈیڑھ ارب مسلمان یا کم از کم پاک و ہند
مزید پڑھیے


کون کون کرونا ؟

منگل 31 مارچ 2020ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
خدا کی پناہ! ان دنوں کسی تقریب، نوکری یا شاپنگ وغیرہ پہ کھلے منھ نہ جا سکنے کی سہولت، تساہل یا بے فکری اور کسی طرح کے مہمان کے نہ آ سکنے کی یقین دہانی نے دو ہفتوں سے مستقل طور پر گھر بیٹھے خواتین و حضرات کو تزئین آرائش، زینت و زیبائش سے اس قدر بے نیاز و بے پروا کر دیا ہے کہ ازلوں سے اکٹھے رہتے میاں بیویوں نے غالباً زندگی میں پہلی بار نہ صرف ایک دوسرے کی شکلوں پہ باقاعدہ غور کرنا شروع کر دیا ہے بلکہ کرونا سے زیادہ ایک دوسرے سے
مزید پڑھیے


کرونا لوجی

اتوار 29 مارچ 2020ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
سیانے کہتے ہیں گھر بیٹھے ہوئے شاعر اور شوہر دونوں بہت خطرناک ہوتے ہیں۔ دونوں کا دماغ یا تو چل جاتا ہے یا پینسٹھ کلومیٹر کی رفتار سے چل پڑتا ہے۔ اس بات کے واضح ثبوت گزشتہ دو ہفتوں سے ان ہر دو طرح حضرات کے ارشادات و فرمودات سے لبالب سوشل میڈیا ہے۔ سماجی تنہائی، شخصی گوشہ نشینی یا سوشل ڈسٹنس کے حوالے سے نئے سے نئے موضوعات کا ایسا پنڈورا بکس کھلا ہے کہ بند ہونے میں نہیں آتا۔ تحقیق میں دانش و بینش کے ایسے ایسے در وا کیے جا رہے ہیں کہ بڑے بڑے محقق
مزید پڑھیے


شفیق الرحمن اور تفریحی ادب

منگل 24 مارچ 2020ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
اُردو میں تفریحی ادب کے ایک قابلِ قدر نمائندے شوکت تھانوی، ملٹری ،میڈیکل اور مزاح میںبیک وقت دھاک بٹھانے والے ہمارے اس جرنیل، ڈاکٹر اور ہر دل عزیز فن کار کی بابت لکھتے ہیں:’’ادب اور فوج، تھرما میٹر اور وردی، ذوقِ سلیم اور کورٹ مارشل، مزاحِ لطیف اور کوئک مارچ … اور مجھے کچھ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ گویا ایک میز پر قلم، ریوالور اور تھرما میٹر، تین مختلف چیزیں رکھی ہوئی ہیں۔ ان تینوں کو اگر طبِ یونانی کے ماہروںکی اصطلاح میں ’سائیدہ حل کردہ‘ کی کیفیات سے گزارا جائے تو یہ تینوں مل کر ایک شفیق
مزید پڑھیے




کرونا … چند مزید احتیاطیں

اتوار 22 مارچ 2020ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
عالمی ادارہ صحت کے مطابق کرونا پھیپھڑوں کے شدید عارضے میں مبتلا کر دینے والا ایک وائرس ہے۔ یہ ہلکے پھلکے کھانسی زکام سے شروع ہوکے انتہائی سرعت سے موت کے منھ میں دھکیل دینے والا مرض ہے۔ گویا یہ کھانسی سے پھانسی تک کا تیز ترین سفر ہے، جس سے اب تک دنیا میں لاکھوں افراد متاثر ہو چکے ہیں، جب کہ ہلاکتوں کی تعداد بارہ ہزار سے تجاوز کر چکی ہیں۔اٹلی جو کبھی ایک پُر رونق زندگی کی علامت ہوا کرتا تھا، دنیا بھر سے لوگ وہاں تفریح اور روزگار کے لیے کشاں کشاں چلے آتے
مزید پڑھیے


سعدی شیرازی سے’ دعوتِ شیراز‘ تک!

منگل 17 مارچ 2020ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
دنیائے علم و حکمت کے متفق علیہ دانش مند اور ایک عالَم کو سیراب و فیض یاب کرنے والے عالِم جناب سعدی شیرازی کی شہرہ آفاق تصنیف ’’گلستان‘‘ کے باب دوم : ’درویشوں کا اخلاق‘ کی چوتھی حکایت: ’ اہلِ صفا کی دوستی ‘ کے ضمن میںمرقوم ہے: ’مَیں نے سنا ہے کہ راہِ خدا کے جواں مردوں نے تو کبھی دشمنوں کا دل بھی نہیں دُکھایا۔ تجھے بھلا یہ مقام و مرتبہ کب میسر آئے گا کہ تیرا تو دوستوں سے جھگڑا اور مخالفت ہے۔‘‘ شیخ سعدی شیرازی سے میری پہلی ملاقات بلکہ دوستی، بی
مزید پڑھیے


کرونا وائرس اور ہم

اتوار 15 مارچ 2020ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
خدائے عزو جل ہ میں تمام زمینی، آسمانی، وبائی، فضائی بیمارےوں ، آزارےوں سے ہمیشہ اپنی حفظ و امان میں رکھے ۔ اس انوکھے اور ہنگامی سے وائرس نے کس طرح دنےا بھر کے بڑے بڑے ممالک کو ہلا کے رکھ دےا ہے ۔ بڑی بڑی قوموں کا ناک میں دم کر دیا ہے ۔ چین، ایران، اٹلی، برطانیہ، فرانس، امریکا جیسی طاقتیں دہل کے رہ گئی ہیں ۔ دنےا بھر میں ہیلتھ ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے ۔ ہر طرف نام نہاد ترقی دھری کی دھری رہ گئی ہے ۔ ایسے میں کوئی کچھ بھی کہے، ہ میں
مزید پڑھیے


مارچ میں عورت مارچ

منگل 10 مارچ 2020ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
چند سالوں میں آٹھ مارچ کے پُر بہار دن کو ایک مخصوص بلکہ مشکوک طبقے کی جانب سے مخصوص مقاصد کے لیے ہونے والے عورت مارچ نے اس مقدس صنف کو کوئی خاص فائدہ تو پہنچایا یا نہیں، البتہ ان کے اصل مسائل سے نظر ضرور ہٹا دی ہے۔نجانے یہ کس قبیل کے لوگ ہیں ؟ کون ان کی پُشت پناہی کرتا ہے کہ یہ کسی مقررہ اشارے پر اچانک اپنی اپنی بلوں سے برآمد ہو کر کسی عجیب و غریب ازم، انوکھے ایجنڈے، نادر مسئلے، بلکہ نان اِیشو پہ دھما چوکڑی مچا کے، میڈیا مزاج لوگوں کو ڈگڈگی پہ
مزید پڑھیے


کس کا جسم؟ کس کی مرضی؟

اتوار 08 مارچ 2020ء
ڈاکٹر اشفاق احمد ورک
کہتے ہیں برابری یا’ عورت برادری‘ کے حقوق کی حامی ایک خاتون نیچر یا کنٹری سائیڈ کو قریب سے دیکھنے کے شوق میں کسی گاؤں میں پہنچی تو کیا دیکھا کہ ایک کسان نے ایک کرخت سینگوں والے بَیل کے ساتھ ساتھ ایک نازک اندام اور ددھیل گائے کو بھی ہلوں پہ جوتا ہوا ہے۔خاتونِ مذکور نے تقریباً احتجاج کے انداز میں اپنے شوہرِ نامدار سے کہا: سارے گاؤں کی باقی گائیں اپنے اپنے تھان پہ مزے سے کھا پی رہی ہیں، پھر اس بے چاری گائے کے ساتھ ایسا امتیازی اور ظالمانہ سلوک کیوں کیا جا رہا ہے؟ شوہر
مزید پڑھیے