BN

راوٗ خالد



عید،سیاست اور عزت کی نوکری


بڑی عیدہمیشہ کی طرح اس بار بھی شورکوٹ شہر میں واقع اپنے آبائی گھر منائی۔ اس دورے کا حاصل گفتگو کچھ سرکاری ملازمین کی طرف سے نئی حکومت کے آنے کے بعد وہ تبصرہ تھا جو تبدیلی سے خوفزدہ کسی بھی شخص کا ہو سکتا ہے۔ دونوں چھوٹے بھائی کیونکہ سرکاری ملازم ہیں۔ انہوں نے اپنے ملنے والوں کے حوالے سے بتایا کہ زیادہ تر سرکاری ملازمین یہ کہتے پائے جاتے ہیں کہ اگر عمران خان نے عزت سے نوکری کرنے دی تو کریں گے ورنہ ریٹائرمنٹ لے لیں گے۔عزت کی نوکری سے مراد یقینا سٹیٹس کو ہے۔ 2006ء میںوالدہ محترمہ
اتوار 02  ستمبر 2018ء

ق سے ن اور پھر ق

اتوار 19  اگست 2018ء
راوٗ خالد
آج وزیر اعلیٰ پنجاب کے انتخاب کے بعد ملک میں انتقال اقتدار کا عمل مکمل ہو جائے گا۔ مرکز اور چاروں صوبوں میں پرانی اور نئی جماعتیں حکومتیں سنبھال کر کابینہ اور پالیسی سازی کا عمل کل سے شروع کر یں گی۔عید قربان کی وجہ سے یہ عمل کچھ سست روی کا شکار ہو گا لیکن جاری ضرور رہے گا۔اس بار اگر کوئی جماعت کسی بھی صوبے یا مرکز میں حکومت حاصل نہیں کر پائی وہ مسلم لیگ (ن) ہے۔اگرچہ مسلم لیگ (ن) نے جمعہ کے روز وزیر اعظم کے انتخاب کے موقع پر قومی اسمبلی میں غیر معمولی طویل
مزید پڑھیے


سیاسی کھسر پھسر

اتوار 12  اگست 2018ء
راوٗ خالد
اسلام آباد سیاسی کھسر پھسر کا سب سے بڑا گڑھ ہے، کوئی دن جاتا ہو گا کہ کوئی نئی سازش ڈرائنگ رومز گپ شپ سے نکل کر زبان زد خاص و عام نہ ہوتی ہو گی۔دھاندلی کا شور جاری ہے لیکن اسکے ساتھ ساتھ کچھ سیاسی کھسر پھسر بھی زور شور سے ہو رہی ہے جو حکومت کے اقتدار سنبھالنے سے پہلے ہی اسے گرانے یا چند ماہ میں فارغ ہو جانے کے بارے میں مختلف تھیوریوں پر مشتمل ہے۔2002 ء میں بننے والی حکومت سے لیکر 2018 ء میں متوقع حکومت کے قیام کے حوالے سے سازشی تھیوریوں کا
مزید پڑھیے


ڈیئرعمران خان

اتوار 05  اگست 2018ء
راوٗ خالد
انتخابات ہو گئے، آپ ایک بار پھر جیت گئے، 1992ء کے کرکٹ ورلڈ کپ کی جیت نے آپ کو ایک غیر متنازعہ قومی ہیرو بنایا۔ آپ پہلے ہیرو ہیں جنہیں اس قوم نے اعتماد کا ووٹ دیا ہے اس یقین کے ساتھ ہمارا ہیرو سیاست کے میدان میں بھی فتح مند ہو گا اور آخری اوور کی آخری بال تک شکست تسلیم نہیں کرے گا۔ نئی اننگز کی شروعات ہونے جا رہی ہیں۔ پچاس اوور کا میچ انتخابات کے ساتھ ہی ختم ہو چکا ہے آپ کے کھلاڑیوںنے سیاست کی پچ پر ٹک کر بیٹنگ کی اور بائولروں نے
مزید پڑھیے


انتخابی سیاست

اتوار 29 جولائی 2018ء
راوٗ خالد
کیسے کیسے دعوے نہیں کئے جارہے تھے ملک میں انقلاب لانے کے،ایک خلائی مخلوق کو خیالی دشمن کے طور پر تشکیل دیا گیا اور اسے بے نقاب کرنے اور شکست فاش دینے کے،ووٹ کو عزت دینے کے اور جو دس سال حکومت کرنے کے بعد عوام کی قسمت نہ بدل سکے لیکن اگلے پانچ سالوں میں عوام کو خوشحالی اور روزگار کا لولی پاپ دینے کے۔کارکردگی کی بنیاد پر کلین سویپ کرنے کے۔ لیکن یہ تو الٹا جھاڑو پھر گیا۔ یہی ہوتا ہے جب زیادہ سیانے سیاستدان عوام کی طاقت کا غلط اندازہ لگاتے ہیں اور انہیں بیوقوف سمجھتے ہیں۔ہمارے
مزید پڑھیے




انتخابات اور خدشات

اتوار 22 جولائی 2018ء
راوٗ خالد
اگلے چوبیس گھنٹوں میں 2018 ء کی انتخابی مہم انجام کو پہنچے گی جس کے بعد تمام جماعتیں اور امیدوار ایک دن کے لئے عوام کے رحم و کرم پر ہونگے۔اسکے بعد اگلے پانچ سال عوام جیتنے والے امیدوار یا جماعت کی مہربانیوں کے منتظر رہیں گے۔ تا حال جاری انتخابی مہم میں دو انتہائی افسوسناک دہشت گردی کے واقعات ہوئے جنہوں نے وقتی طور پر پورے ملک میں اس عمل کو کسی حد تک متاثر کیا لیکن ایک بار پھر سیاسی قائدین تمام خطرات کے باوجود بھر پور طریقے سے مہم جاری رکھے ہوئے ہیں۔ پیپلز پارٹی کو
مزید پڑھیے


شہباز اور پرواز

اتوار 15 جولائی 2018ء
راوٗ خالد
فلم کی دنیا میں بڑے نامی گرامی ولن گزرے ہیں، انکے کردار سے زیادہ انکا ہر فلم میں کوئی مخصوص ڈائیلاگ اصل شہرت کا باعث ہو تا ہے۔اپنی فلمی صنعت کی بات کریں تو مصطفیٰ قریشی جیسا دبنگ ولن اور انکا زبان زد خاص و عام ڈائیلاگ " نواں آیا ایں سوہنیا" کسے یاد نہیں ہے۔پھر اس سے پہلے معروف ولن مظہر شاہ ہوا کرتے تھے۔انکے ڈائیلاگ"میں ٹبر کھا جاں تے ڈکار نہ ماراں"اور "نبوں وانگوں پھہ کے رکھ دیا گاں"بہت مشہور ہوئے۔اسی طرح سے ہر فلم میں ایک ایسا کردار ہوتا ہے جو لڑائی کے دوران کسی کونے یا
مزید پڑھیے


پانچ اور چھ جولائی

پیر 09 جولائی 2018ء
راوٗ خالد
پانچ جولائی کے بعد چھ جولائی بھی ہوتا ہے۔ پانچ جولائی1977ء کے وقت شاید کسی کے وہم و گمان میں بھی نہ ہو گاکہ جنرل ضیاء الحق کے مارشل لاء کی کوکھ سے ایک ایسا لیڈر جنم لے گا جو اسکی سوچ اور نظریے کا امین ہونے کا دعویدار ہو گا۔پاکستان کی سیاست میںجو ذوالفقار علی بھٹو کے دور میں کسی حد تک جمہوری ہوتی جا رہی تھی اور کم از کم کرپشن جیسی بیماری اسکو لاحق نہیں ہوئی تھی اس سیاست کا نہ صرف خاتمہ ہو جائے گا بلکہ ملک میں ایک ایسی سیاست کی بنیاد رکھی جائیگی جو
مزید پڑھیے


سیاست اور خلقت

اتوار 01 جولائی 2018ء
راوٗ خالد
انتخابات کا دور دورہ ہے ہر سیاستدان بساط بھر اس کوشش میں ہے کہ جس جماعت سے اس کا تعلق ہے وہ اسے اپنا لے اور انتخابی ٹکٹ جاری کر دے۔ایک بڑی تعداد ایسے سیاستدانوں کی ہے جو اس بات پر "جیہڑا جتیّ اودھے نال" کے فارمولے پر یقین رکھتے ہیں اس لئے ہر موسم میں انکے لئے نئی جماعت ضروری ہے کیونکہ ملکی تاریخ میں شاذونادر ہی ہوا ہے کہ حکومت سے جانے والی جماعت اگلی ٹرم حاصل کر پائے۔حالیہ سیاسی تاریخ میں ایک دو تبدیلیاں دیکھنے میں آئی ہیں کہ ایک توسندھ اور پنجاب میں صوبائی
مزید پڑھیے


مالشئے اور پالشئے

اتوار 24 جون 2018ء
راوٗ خالد
جب سے مالشیوں اور پالشیوں کا ذکر شروع ہوا ہے مجھے ایک واقعہ یاد آ رہا ہے جو ایسے لوگوں کے طریقہ واردات کے بارے میں ہے۔ ایک دوست جو کہ موبائل فون کا کاروبار کرتے تھے انکے ہاں میں کسی خریداری کے لئے گیا تو انہوں نے چائے کے لئے بٹھا لیا اور اپنی کرسی جو پیسوں والے غلے کے پاس پڑی تھی آفر کر دی۔ ابھی کچھ ہی لمحے گزرے تھے کلف شدہ لٹھے کی شلوار قمیض میں ایک صاحب دکان میں داخل ہوئے جو کہ میرے اندازے کے مطابق دوست کے شناسا تھے، انہوں نے بہت رازدار
مزید پڑھیے