BN

ارشاد احمد عارف



خوئے بدر ابہانہ بسیار


وفاقی کابینہ نے حجاج کرام کو زرتلافی دینے کی تجویز مسترد کر دی‘فتویٰ جاری ہوا کہ حج صرف انہی پر فرض ہے جو اس کی استطاعت رکھتے ہیں حکومت زرتلافی (Subsidy) دے کر قومی خزانے پر پانچ ارب روپے کا بوجھ نہیں ڈال سکتی۔ مجھے برصغیر کے نامور خطیب سید عطاء اللہ شاہ بخاری مرحوم سے منسوب واقعہ یاد آگیا۔ شورش کاشمیری مرحوم راوی ہیں کہ اسلامیہ کالج امرتسر کے طلبہ کا ایک وفد شاہ جی سے ملا۔ خوب سوال و جواب ہوئے‘ معاً شاہ جی نے طلبہ سے کہا ’’بچو! آپ لوگ داڑھی کیوں نہیں رکھ لیتے؟ سنت رسولﷺ
اتوار 03 فروری 2019ء

غیرت ہے بڑی چیز جہانِ تگ و دو میں

جمعه 01 فروری 2019ء
ارشاد احمد عارف
امیر تیمور گورگانی نے اپنی خودنوشت سوانح عمری میں طاقت اور کمزوری کا فلسفہ سادہ الفاظ میں بیان کیا ہے’’میری کمزوری دراصل میرے دشمن کی طاقت ہے اور دشمن کی کمزوری میری حقیقی قوت‘‘ اپنی قوت کے مکمل ادراک اور دشمن کی کمزوری سے سوفیصد واقفیت کے بغیر کوئی کامیابی و کامرانی کا سنگ میل عبور نہیں کر سکتا۔ فرد ‘گروہ‘ ملک اور قوم کوئی بھی اس سے مستثنیٰ نہیں۔ سوویت یونین کی افغانستان میں ذلت آمیز شکست اور پسپائی کے بعد خیال یہی تھا کہ کم از کم اگلی ایک صدی تک کوئی دوسری ریاست اور قوم اس حماقت
مزید پڑھیے


افغان باقی کہسار باقی

منگل 29 جنوری 2019ء
ارشاد احمد عارف
افغانستان سے فوجی انخلا کی جلدی امریکہ کو ہے طالبان کو نہیں۔ باعزت اور محفوظ واپسی امریکی خواہش ہے، افغانوں کی نہیں۔ امریکہ،طالبان مذاکرات اسی ایک نقطے پر مرکوز ہیں۔ 11ستمبر 2001ء سے شروع ہونے والی افغان جنگ لاکھوں انسانی جانوں کا تاوان وصول کر کے اختتامی مراحل میں داخل ہو گئی ہے۔ بین الاقوامی ذرائع ابلاغ کا دعویٰ بجا‘ طالبان نمائندں کا حوالہ سر آنکھوں پر اور زلمی خلیل زاد اور اشرف غنی کی ڈینگیں اپنی جگہ‘ زمینی حقیقت یہ ہے کہ امریکہ کا جانا ٹھہر گیا ہے صبح گیا کہ شام گیا۔ افغان عوام کی سرفروشانہ جدوجہد رنگ لا
مزید پڑھیے


سوچ لیں

اتوار 27 جنوری 2019ء
ارشاد احمد عارف
پاکستان کے صحت افزا‘تفریحی مقامات اور تاریخی ثقافتی ورثے سے دنیا کو روشناس کرانے کی حکومتی کاوش پر کون کافر ناک بھوں چڑھا سکتا ہے۔ پچاس ممالک کے شہریوں کو آن ارائیول ویزا دینے کی حکومتی پالیسی مرحبا! نیپال‘ بھوٹان‘ تھائی لینڈ اورسوئٹزر لینڈ کی معیشت کا زیادہ تر دارو مدار سیاحت پر ہے جبکہ پاکستان ان ممالک سے زیادہ پرکشش‘ سرسبز اور دلآویز ہے مگر قیام پاکستان سے اب تک ہم نے ترقی و خوشحالی کے لئے چند گھسے پٹے فارمولے آزمائے اور ناکام رہے۔ ستر فیصد آبادی دیہی علاقوں میں رہتی ہے‘ ذریعہ روزگار زراعت ہے مگر ہم
مزید پڑھیے


تجھے یاد ہو کہ نہ یاد ہو

جمعه 25 جنوری 2019ء
ارشاد احمد عارف
سانحہ ساہیوال تکلیف دہ اور شرمناک ہے، ناقص منصوبہ بندی اور وحشیانہ طرز عمل کا اعتراف حکومتی رہنما تک کرتے ہیں۔ گزشتہ روز ایڈیشنل چیف سیکرٹری فضیل اصغر نے درجنوں صحافیوں کی موجودگی میں ناقص پہلوئوں کی نشاندہی کی اور جے آئی ٹی کی مکمل رپورٹ کا انتظار کرنے کو کہا مگر سانحہ ماڈل ٹائون کے ساتھ اس کا موازنہ سراسر نا انصافی اور سنگدلی ہے۔ میاں شہباز شریف، رانا ثناء اللہ اور حمزہ شہباز شریف جب سانحہ ساہیوال پر حکومت کو کوستے اور عمران خان و عثمان بزدار کے استعفے کا مطالبہ کرتے ہیں تو عقل سلیم سرپیٹ لیتی
مزید پڑھیے




کم کوش تو ہیں لیکن بے ذوق نہیں راہی

جمعرات 24 جنوری 2019ء
ارشاد احمد عارف
سانحہ ساہیوال،پنجاب پولیس، سی ٹی ڈی کی تربیت و کارگزاری اور حساس اداروں کی معلومات کے حوالے سے بعض سوالات تا حال جواب طلب ہیں مگر وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار اور وزیر اعظم عمران خان نے تین دن میں یہ قضیہ نمٹانے کی جو سعی کی وہ قابل داد ہے۔ سانحہ ماڈل ٹائون کہیں زیادہ المناک اور ریاستی دہشت گردی کی واضح مثال تھا، خادم اعلیٰ میاں شہباز شریف تجربہ کار حکمران اور 2008ء سے پنجاب کے سیاہ و سفید کے مالک تھے مگر مقتولوں کے ورثا کی طرف سے ایف آئی آر کا اندراج ایک سال بعد
مزید پڑھیے


دل صاحب اولاد سے فریاد طلب ہے

منگل 22 جنوری 2019ء
ارشاد احمد عارف
ساہیوال کے اندوہناک ‘ دلخراش سانحہ پر عمران خان کی ٹوئٹس پڑھ کر یہ احساس ہوتا ہے کہ پاکستان میں نوشیرواں عادل اور شیر شاہ سوری کی حکمرانی نہ سہی‘ کوئی درد دل رکھنے والے انسان برسر اقتدار ہے۔ تازہ ترین ٹویٹ میں عمران خان نے اعتراف کیا کہ عوام کا غم و غصہ قابل فہم اور جائز ہے اور وہ قطر سے واپسی پر نہ صرف پنجاب میں پولیس ڈھانچے کی اصلاح کے لئے اقدامات کریں گے بلکہ قانون کے مطابق قاتلوں کو سزا بھی دلائیں گے۔ سوال مگر عمران خان کی نیک نیتی‘ عزم صمیم اور عوام دوستی
مزید پڑھیے


چوروں کی بارات

جمعرات 17 جنوری 2019ء
ارشاد احمد عارف
ریاست مدینہ کے قیام اور تبدیلی کا سفر جاری رہے گا یا ریورس گیئر لگ سکتا ہے؟ یہ بنیادی سوال ہے۔ یہ زمانہ طالب علمی کا واقعہ ہے‘ دو تین دوستوں کے ساتھ اسلام آباد جانے کا موقع ملا تو اسمبلی کا اجلاس دیکھنے چلے گئے۔ اتفاق سے یہ پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس تھا۔ ان دنوں افغان حکمران سردار دادو نے پاکستان کو دھمکیاں دی تھیں اور اجلاس سرحدی صورتحال پر غور کے لئے بلایا گیا تھا۔ مہمانوں کی گیلری میں ہمارے ساتھ دو تین بزرگ بیٹھے تھے جن کا جھکائو اپوزیشن کی طرف تھا۔ وزیر اعظم ذوالفقار علی بھٹو ایوان
مزید پڑھیے


تازہ فیصلہ

منگل 15 جنوری 2019ء
ارشاد احمد عارف
سپریم کورٹ کا تازہ فیصلہ میاں نواز شریف کے سیاسی مخالفین کے لئے مایوس کن ہے مگر مسلم لیگ (ن) کے لئے بھی حوصلہ افزا نہیں۔ چیف جسٹس ثاقب نثار‘ ان کے جانشین جسٹس آصف سعید کھوسہ اور جسٹس گلزار احمد اسلام آباد ہائی کورٹ کا فیصلہ برقرار اور ضمانت بحال رکھنے والے بنچ میں شامل تھے اور یہ فیصلہ دے کر انہوں نے ثابت کیا کہ دیانتدار‘ بااصول اور آئین و قانون کے پابند جج صرف مقدمے کی نوعیت دیکھتے ہیں‘ ملزم یا مدعی کی حیثیت کو خاطر میں نہیں لاتے۔ میاں نواز شریف اور ان کی صاحبزادی نے
مزید پڑھیے


عوام دشمن فیصلہ

اتوار 13 جنوری 2019ء
ارشاد احمد عارف
ادویات کی قیمتوں میں اضافہ عوام دشمن فیصلہ ہے اور حکومت کی ڈرگ مافیا کے سامنے پسپائی۔ شرمناک پسپائی۔ جلد بازی ہمارا قومی شیوہ ہے اور بے صبری مزاج کا حصہ۔کچھ توقعات حکمرانوں نے خود بڑھائیں‘ باقی کسر میڈیا نے پوری کر دی۔ عمران خان کی حکومت کو اقتدار میں آئے ابھی چار ماہ پورے نہیں ہوئے‘ تاثر مگر یہ ہے کہ چار سال گزر چکے ‘عمران خان نے یہ بھی نہیں کیا‘ وہ بھی نہیں کیا اور باقی ماندہ مدت میں شائد کچھ کر بھی نہ پائیں۔مسلم لیگ(ن) اور پیپلز پارٹی شکوہ بلکہ سینہ کوبی کرے تو حق بجانب ہے
مزید پڑھیے