BN

ارشاد احمد عارف


این آر او پلس


تاجربرادری اور بیورو کریسی کو نیب کے دائرہ کار سے نکال کر حکومت نے قومی معیشت کا پہیہ چلانے کی تدبیر کی ہے۔ معیشت کا پہیہ چلا‘ یا نہیں‘ اگلے چند ہفتوں میں سب دیکھ لیں گے۔ عام خیال یہ ہے کہ عمران خان کے مفاد پرست حواری انہیں اس گھاٹ پر لے آئے ہیں جہاں شوکت عزیز نے پرویز مشرف کو لا کر اخلاقی دیوالیہ پن کا شکار کیا اور فوجی آمر اس کے ہاتھوں میں کھیلتے کھیلتے 3نومبر یعنی ایمرجنسی پلس کے انجام سے دوچار ہوا۔ جنرل (ر) پرویز مشرف کے قریبی ساتھی جنرل (ر) شاہد عزیز نے
اتوار 29 دسمبر 2019ء

نہ سمجھو گے تو مٹ جائو گے

جمعه 27 دسمبر 2019ء
ارشاد احمد عارف
صد شکر کہ قائد اعظم کے یوم پیدائش پر پاکستانی قوم کے علاوہ ناقدین نے بھی عظیم اور بے مثل لیڈر کی دور اندیشی کا احساس و اعتراف کیا۔ قیام پاکستان سے پہلے اور بعد تو مداح اور عقیدت مند ہی قائد کی بصیرت کے گن گاتے تھے یا چند انصاف پسند ناقدین‘ مگر اب خراج تحسین وہ پیش کر رہے ہیں جنہوں نے کئی عشروں تک دو قومی نظریے کو ہندو دشمنی اور تنگ نظری پر محمول کیا‘ ابوالکلام آزاد‘مدنی گروپ‘ عبدالغفار خان‘ عبدالصمد اچکزئی اور کئی دوسرے قائد اعظم کی آزاد وطن کے لئے جدوجہد اور تحریک پاکستان
مزید پڑھیے


شکوۂ ظلمت شب سے تو کہیں بہتر تھا

منگل 24 دسمبر 2019ء
ارشاد احمد عارف
شکوہ و شکائت کے ہم عادی ہیں۔ مصحفی نے اڑھائی تین صدی قبل جو بات کہی وہ ہم پر صادق آتی ہے ؎ یہ زمانہ وہ ہے جس میں ہیں بزرگ و خورد جتنے انہیں فرض ہو گیا ہے‘ گلۂ حیات کرنا ملک سے گلہ‘ حکومت سے شکوہ اور اپنے مقدر سے شکائت ‘ خود کو ہم بدلتے نہیں اور دوسروں سے اُمیدیں لگائے بیٹھے ہیں۔ عمران خان نے غلطی کی مہاتیر محمد اور طیب اردوان سے پیمان کر بیٹھے‘ اسلامو فوبیا کا مقابلہ کرنے کی ٹھان لی اور اعلیٰ سطحی کانفرنس کا دعوت نامہ قبول کر لیا۔ یہ
مزید پڑھیے


بگاڑ کر بنائے جا‘ ابھار کر مٹائے جا

اتوار 22 دسمبر 2019ء
ارشاد احمد عارف
فوجی آمر جنرل (ر) پرویز مشرف کے بارے میں خصوصی عدالت کا فیصلہ پڑھ کر منیر نیازی مرحوم یاد آئے ؎ منیرؔاس ملک پر آسیب کا سایہ ہے یا کیا ہے کہ حرکت تیز تر ہے اور سفر آہستہ آہستہ دو فوجی آمروں ایوب خان اور یحییٰ خان کے بعد پاکستان کے پلّے ذوالفقار علی بھٹو ایسا جینئس پڑا ‘مطالعہ کارسیا‘ عوام کا نبض شناس اور قوم پرست مگر خودپرست و منتقم مزاج‘ ایوب دور کی صنعتی و تعلیمی ترقی کو ریورس گیئر لگا دیا‘ سیاسی کارکنوں کو کرپشن اور صنعتی کارکنوں کو کام چوری کی عادت ڈالی‘ جج
مزید پڑھیے


اندیشہ

جمعرات 19 دسمبر 2019ء
ارشاد احمد عارف
مجھے جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف سے ہمدردی نہیں۔ آئین کی بالادستی‘ قانون کی حکمرانی اور عدالتی فعالیت کا میں ہمیشہ سے پرجوش حامی ہوں‘ جسٹس افتخار چودھری اور جسٹس ثاقب نثار کی عدالتی فعالیت نے اگرچہ بہت سے سوالات کو جنم دیا مگر حکومت اور بیورو کریسی کی نااہلی‘ نالائقی عوامی مسائل و مشکلات سے چشم پوشی اور لوٹ مار کو دیکھ کر ہر ذی شعور شہری یہ سوچتا ہے کہ اگر عدلیہ بھی داد رسی نہ کرے تو انسان کہاں جائے‘ کس سے فریاد کرے۔ جنرل پرویز مشرف کے خلاف عدالتی فیصلے نے مگر اوروں کی طرح مجھے بھی
مزید پڑھیے



انجام کا آغاز

منگل 17 دسمبر 2019ء
ارشاد احمد عارف
شکست و ریخت بھارت کا مقدّر ہے، وقت کا تعین ہم نہیں کر سکتے، قادر مطلق نے کرنا ہے جس کے فیصلے اٹل ہوتے ہیں۔ نریندر مودی نے تقسیم کے عمل کو تیز کر دیا ہے۔ بھارت کی کیرالہ سمیت پانچ ریاستوں نے ’’قانون شہریت‘‘ کو تسلیم نہیں کیا۔ ممتابینرجی مخالفت میں پیش پیش ہے۔ جموں و کشمیر کے بعد بھارت کی وہ ریاستیں پابندیوں کا شکار ہیں جہاں مسلمان اکثریت میں ہیں نہ ان ریاستوں کی سرحد پاکستان سے ملتی ہے کہ مداخلت کا الزام لگاسکے۔ یہ مکافات عمل ہے، جیسی کرنی ویسی بھرنی۔ جو بات ڈی جی آئی
مزید پڑھیے


انصاف

اتوار 15 دسمبر 2019ء
ارشاد احمد عارف
سلطان محمود غزنوی نے اچانک دربار میں موجود شرکاء سے پوچھا کوئی شخص مجھے حضرت خضر علیہ السلام کی زیارت کرا سکتا ہے؟ ہر سو خاموشی چھا گئی‘ پھر ایک غریب دیہاتی کھڑا ہوا اور کہا میں آپ کو حضرت خضر علیہ السلام کی زیارت کرا سکتا ہوں مگر میری ایک شرط ہے۔ سلطان نے شرط پوچھی تو بولا مجھے دریا کنارے چھ ماہ تک چلہ کاٹنا ہو گا جبکہ میں غربت کے باعث اس عرصہ میں اپنے اہل و عیال کے اخراجات برداشت نہیں کر سکتا آپ اگر چھ ماہ تک میرے گھریلو اخراجات کا ذمہ لیں تو میں
مزید پڑھیے


وکلا گردی

جمعه 13 دسمبر 2019ء
ارشاد احمد عارف
ینگ ڈاکٹرز بھی کسی سے کم نہیں‘ اپنے سینئرز کی توہین‘ سڑکوں پر ہنگامہ آرائی اور سرکاری املاک کی توڑ پھوڑ مگر لاہور میں امراض قلب کے ہسپتال کے اندر اور باہر سینہ زوری‘ غنڈہ گردی اور بے آسرا مریضوں کے علاوہ ان کے لواحقین پر تشدد کا جو ’’کارنامہ‘‘ نوجوان وکلا نے انجام دیا اس کا ادنیٰ جواز صرف وہی پیش کر سکتا ہے جس کی آنکھ شرم و حیا‘ ذہن خیال روز جزا اور دل خوف خدا سے عاری ہے۔ عرفان نامی ایک ڈاکٹر کی ویڈیو وائرل ہوئی جس میں موصوف کھلنڈرے انداز میں وکیلوں کا مذاق اُڑا
مزید پڑھیے


مائنس ون

منگل 10 دسمبر 2019ء
ارشاد احمد عارف
کوئی مانے نہ مانے مسلم لیگ اور شریف خاندان نے بعداز خرابی بسیار میاں شہباز شریف اور چودھری نثار علی خاں کا بیانیہ قبول کر لیا‘ میاں نواز شریف اور مریم نواز شریف اداروں سے تصادم اور انہیں بدنام کرنے کی روش پر گامزن تھے جسے ہمارے بعض دانشوروں اور تجزیہ کاروں نے سول بالادستی کا بیانیہ سمجھ کر یہ اُمیدیں وابستہ کر لیں کہ مسلم لیگ اپنے ماضی اور مزاج کو فراموش کر کے دونوں باپ بیٹی کے ہم قدم و ہم رکاب پاکستان میں فرانس اور روس نہ سہی‘ ایرانی طرز کا انقلاب برپا کرے گی‘ جولائی 2018ء
مزید پڑھیے


آزاد صحافت کی اوقات

جمعه 06 دسمبر 2019ء
ارشاد احمد عارف
منگل کی سہ پہر امریکی نشریاتی ادارے کی طرف سے ایک پروگرام میں شرکت کی دعوت ملی جس کا موضوع’’پاکستانی میڈیا پر عائد پری سنسر شپ‘‘ تھا۔ذاتی مصروفیات کی بنا پر شرکت سے معذرت کی مگر سوچ میں پڑ گیا شرکت کی صورت میں کیاعرض کرتا؟۔ایک روز قبل برطانوی کرائم ایجنسی(این سی اے) کا پریس ریلیز جاری ہوا جس میں پاکستان کے بزنس ٹائیکون ملک ریاض حسین سے عدالت کے باہر سیٹلمنٹ کے تحت 190ملین پائونڈ سٹرلنگ کی وصولی کا ذکر تھا‘ پریس ریلیز میں یہ بھی بتایا گیا کہ نمبر ایک ہائیڈ پارک کی جائیداد اور آٹھ بنک اکائونٹس
مزید پڑھیے