Common frontend top

افتخار گیلانی


تنازعہ قبرص: ایک صبح سفیر عصمت کورک اولو کے ساتھ……(2)


اب تک ترکی فی الحال واحد ملک ہے جس نے اسکی سرکاری حیثیت کو تسلیم کیا ہے۔یعنی یہ تنازعہ یونانی قوم پرست ارتھوڈاکس مسیحی نظریہ اور یونان کے ساتھ ضم ہونے بنام قبرص کے ترک نسل عوام کی آزاد رہنے کی خواہش کی وجہ سے پیدا ہوگیا۔ عصمت کورک اولو بتا رہے تھے کہ 1963میں یعنی آزادی کے تین سال بعد ہی ترک قبرصیوں کو جزیرے کے تین فیصد علاقے تک محدود کیا گیا۔ ’’ہمارے شہری حقوق چھین لئے گئے۔ یہی قبرص مسئلہ کی ابتدا تھی، نہ کہ 1974کو جب ضامن ملک ترکیہ نے ہماری استدعا پر مداخلت کرکے ہمیں اپنے
جمعرات 25 جولائی 2024ء مزید پڑھیے

تنازعہ قبرص: ایک صبح سفیر عصمت کورک اولو کے ساتھ

بدھ 24 جولائی 2024ء
افتخار گیلانی
فلسطین کے تنازعہ نے جہاں امت مسلمہ سمیت پوری دنیا کو لہو لہان کر کے رکھ دیا ہے، وہیںغزہ کے ساحل سے تین سو کلومیٹر دور قبرص کا تنازعہ بھی امن عالم کیلئے پچھلے ساٹھ سالوں سے خطرہ بنا ہوا ہے۔ دونوں متنازعہ خطے بحیرہ روم کے مشرق میں ہیں اور ایک وقت اس سمندر میں ، جو بحر اوقیانوس یا بحر ظلمات کی شاخ ہے، مسلم حکمرانوں نے اپنے سنہری ادوار میں گھوڑے اور جہاز دوڑا دیے تھے ۔ ترک عثمانیہ سلطنت کے امیر البحر خیر الدین باربروسہ اور اس کے جانشینوں نے 16ویں صدی میں اس سمندر میں
مزید پڑھیے


کشمیر اور گورنروں کا چولی دامن کا ساتھ……(2)

جمعه 19 جولائی 2024ء
افتخار گیلانی
اس دوران تقریبات میں ہمیشہ گورنر پہلے آتا تھا اور وہ وزیرا علیٰ کا استقبال کرتا تھا۔ پروٹوکول کے مطابق یہ الٹا ہونا چاہئے ، کیونکہ گورنر آئینی سربراہ یعنی صدر کا نمائندہ ہوتا ہے۔ جب 1981 کو ا ن کی جگہ پر بی کے نہرو، جو اندرا گاندھی کے رشتہ دار بھی تھے، کی تقرری ہوئی، وہ ایک سابق بیورکریٹ اور امریکہ میں بھارت کے سفیر رہ چکے تھے اور ان کو مین آف بک بھی کہا جاتا تھا۔ یعنی جو کچھ آئین کی کتاب میں درج ہے، اس پر من و عن عمل کروانا۔ تقریبات
مزید پڑھیے


کشمیر اور گورنروں کا چولی دامن کا ساتھ

بدھ 17 جولائی 2024ء
افتخار گیلانی
کئی سالوں کے جنگ و جدل کے بعد جب چھ اکتوبر1586 ء کو مغل ا فوج نے وادی کشمیر میں داخل ہوکر اسکو دہلی سلطنت میں شامل کردیا، تب سے ہی اس خطہ پر بیشتراو قات گورنروں یا صوبیداروں کے ذریعے حکومت کی گئی ہے۔ 1947کے بعد شیخ عبداللہ سمیت کئی افراد کو امید تھی، کہ دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کے کچھ ثمر ات کشمیر کو بھی ن نصیب ہونگے اور مقامی آبادی کو بااختیار بناکر اپنے اوپر حکومت کرنے کا موقع دیا جائیگا۔ مگر اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ پچھلے 77سالوں میں کشمیر پر نئی دہلی
مزید پڑھیے


بھارت ۔ پاکستان سفارت کاری پر ایک اہم کتاب (3)

اتوار 14 جولائی 2024ء
افتخار گیلانی
بھارتی سفارت کار کیول سنگھ کے مطابق بھارت کا اس تجویز کو ٹھکرانا ایک فا ش غلطی تھی۔مگر بھارت میں حکومتی افراد کی اکثریت اس معاہدے کو مزید ہتھیاروں کے لیے امریکی منظوری حاصل کرنے کے لیے ایک چال کے طور پر دیکھ رہی تھی۔ اسی دوران بھارتی پنجاب میں سکھ علیحدگی پسندی انتہا پر تھی۔ اس معاملے پر گفت و شنید کیلئے جولائی 1984 میں وزیر اطلاعات و نشریات ایچ کے ایل بھگت کو اسلام آباد بھیجا گیا۔ضیاء الحق نے ان کو خوب آو بھگت کی اور اعلیٰ دودھ دینے والی ساہیوال گائے ان کو تحفہ
مزید پڑھیے



بھارت ۔ پاکستان سفارت کاری پر ایک اہم کتاب…(2)

جمعرات 11 جولائی 2024ء
افتخار گیلانی
ایوب خان نے بعد میں بتایا کہ جب بھی وہ کشمیر کے بارے میں بات چیت شروع کرنے کی کوشش کرتے تھے، تو نہرو کھڑکی کے باہر کے مناظر پر تبصرہ کرتے تھے۔ جنوری 1963 کو دونوں ممالک نے کشمیر کے حوالے سے بات چیت کے کئی دو ر منعقد کئے۔ اس میں پاکستان نے محسوس کیا کہ بھارت نے رائے شماری کو مسترد کرنے کے لیے ایک نیا بہانہ ڈھونڈ نکالا ہے۔ یعنی کہ اگر کشمیری مسلمان پاکستان کے حق میں ووٹ دیتے ہیں، تو بھارت کے ہندو اسکو بے وفائی سے تعبیر کرکے اس کا غصہ بھارتی مسلمانوں
مزید پڑھیے


بھارت ۔ پاکستان سفارت کاری پر ایک اہم کتاب

بدھ 10 جولائی 2024ء
افتخار گیلانی
15 اگست 1947 ء کو جب نئی دہلی میں انڈیا گیٹ کے پاس بھارت کے پہلے وزیر اعظم جواہر لال نہرو برطانوی یونین جیک کو اتار کر قومی پرچم لہرا کر ملک کو آزادی کی نوید سنا رہے تھے ، اسی طرح کی ایک تقریب سینکڑوں میل دور کراچی کے پیلس ہوٹل کے لان میں بھی منعقد ہو رہی تھی۔ مگر دہلی کے جم غفیر کے بجائے اس میں بس دوہی افراد شریک تھے۔ 12اگست کو ہی نہرو نے اپنے ایک قریبی ساتھی سر ی پرکاسا کو پاکستان میں بھارت کے پہلے ہائی کمشنر کے بطور کراچی بھیج دیا تھا
مزید پڑھیے


بھارتی کرکٹ: اکثریتی آبادی نمائندگی سے محروم ……(2)

جمعرات 04 جولائی 2024ء
افتخار گیلانی
ان دنوں شہر کی مقامی ٹیم، جو برہمن ٹیم کے نام سے موسوم تھی، برطانوی ٹیم کو ہرانے کی جستجو کر رہی تھی۔ انہوں نے بالو کو ٹیم میں شامل کردیا۔ گو کہ فیلڈ میں وہ دیگر کھلاڑیوں کے ساتھ گھل مل جاتے تھے، مگر ڈریسنگ روم میں آنے یا دیگر ٹیم ممبران کے ساتھ کھانا کھانے کی ان کوممانعت تھی۔ انکو چائے یا تو مٹی کے برتن میں دی جاتی تھی یا گھر سے ا ن کو اپنا کپ لانا پڑتا تھا۔ بالو کی دیکھا دیکھی اس کے دیگر بھائی شیوارام، گنپت اور ویمل نے بھی کرکٹ کھیلنے کی
مزید پڑھیے


بھارتی کرکٹ میں اقلیتوں کی نمائندگی کا تناسب

بدھ 03 جولائی 2024ء
افتخار گیلانی
حال ہی میں بھارت نے امریکہ میںبین الاقوامی ٹی۔20 ٹورنامنٹ کے فائنل میں جنوبی افریقہ کوایک اعصاب شکن مقابلے میں شکست دیکر چیمپین شپ اپنے نا م کرلی۔ جس طرح سے ٹورنامنٹ کے ابتدا ء سے ہی بھارتی ٹیم کھیل رہی تھی، وہ عالمی چیمپین بننے اور کپ اٹھانے کی یقینی طور پر حقدار تھی۔ کرکٹ ٹیم کے اس پندرہ رکنی سکواڈ نے اپنی صلاحیتوں، لیاقت اور قابلیت کا لوہا منوا کر پورے ملک میں خوشی کی لہر دوڑا دی۔ سوال مگر یہ ہے کہ کرکٹ ، جو اب حالیہ عرصے میں بالی ووڈ کی طرح بزنس اور تفریح
مزید پڑھیے


آبی تنازعات اور عالمی بینک کے افسران کا دورہ کشمیر

بدھ 26 جون 2024ء
افتخار گیلانی
بھارت اور پاکستان کے درمیان آبی تنازعہ خاص طور پر ضلع بانڈی پورہ میں کشن گنگا اور کشتواڑ ضلع میں رٹلے ڈیم پر پاکستانی اعتراضات کا جائزہ لینے کیلئے عالمی بینک کے طرف سے مقرر نیوٹرل ایکسپرٹ یا غیر جانبدار ماہر مائیکل لینو اور ان کے تکنیکی معاون لوک ڈیروا جموں و کشمیر کا دورہ کر رہے ہیں۔ 13 اکتوبر 2022 کو عالمی بینک نے ان دو پراجیکٹس پر دریائے سندھ تاس معاہدہ کی رو سے غیر جانبدار ماہر کو مقرر کیا تھا۔ماہرین کی یہ ٹیم 17 جون کو دہلی پہنچی تھی، جہاں اس نے دونوں فریقوں کے
مزید پڑھیے








اہم خبریں