BN

محمد عامر خاکوانی



یہاں سب برا نہیں


پاکستانی ریاست ہو یا ہماری مختلف حکومتیں، ان پر تنقید کرنے والوں کی کبھی کمی نہیں رہی۔اس حوالے سے پاکستانی خود کفیل رہے ہیں۔ ہر نسل، رنگ، سوچ اور سٹائل کا ایک سے بڑھ کر ایک تیز، تلخ ، کاٹ دار جملے اچھالنے والا ہمارے ہاں موجود ہے۔ معمولی سی غلطی پر رعایت نہیں دی جاتی، بلکہ کبھی تو غلطی کا انتظار بھی نہیں ہوتا، پہلے ہی سے حفظ ماتقدم کے تحت ایک عدد مذمتی تقریر جاری کر دی جاتی ہے۔ شاعری میں ٹیپ کے مصرع یا شعر(مخمس، مثلث وغیرہ کا آخری شعر) کی اصطلاح موجود ہے، یہ بار
منگل 19 فروری 2019ء

ففتھ جنریشن وار فیئر۔طریقہ کار، سدباب کیا ہے؟

جمعه 15 فروری 2019ء
محمد عامر خاکوانی
ففتھ جنریش وار فئیر کے موضوع کو چھیڑا ہے تو اس کے مختلف پہلو سامنے آ رہے ہیں۔ ہر بار قارئین کا یہی فیڈ بیک ملتا ہے کہ اس پر مزید لکھا جائے ۔ صاحبو،یہ کالم ہے،ڈائجسٹ کی سلسلہ وار کہانی نہیںجو لگاتار چلتی رہے ۔ دو کالم پہلے لکھ چکا، یہ تیسرا کالم لکھنا ضروری تھا کہ طریقہ کار کے بارے میں آگہی دیناضروری ہے۔ ففتھ جنریشن وار فئیر آسان لفظوں میں کسی غیر ملکی دشمن ریاست، نان سٹیٹ ایکٹر وغیرہ کی جانب سے آئیڈیازکی ایسی جنگ ہے جس میں کسی ملک کے عوام کو
مزید پڑھیے


ففتھ جنریشن وار فیئر، مغالطے، مبالغے

بدھ 13 فروری 2019ء
محمد عامر خاکوانی
اپنے گزشتہ (پیر، بارہ فروری )کے کالم میں ففتھ جنریش وارفیئرپر تفصیل سے بات ہوئی۔ یہ ایسا موضوع ہے جس پر ہمارے سینئر تجزیہ کاروں کو قلم اٹھانا چاہیے ،ٹاک شوز ہونے چاہئیں۔ بعض اصطلاحات اپنی غیر معمولی اہمیت کے باوجود متنازع ہو جاتی ہیں یا پھر انہیں اس قدر اہمیت نہیں مل سکتی ، جتنا ان کا حق بنتا ہے۔ ففتھ جنریشن وارفئیر کامعاملہ بھی کچھ ایسا ہی ہوتا جا رہا ہے۔ بعض لوگ نہایت تواتر سے یہ اصطلاح دہراتے ہیں اور کبھی تو لگتا ہے کہ اس سے چابک کا کام لے کر دوسروں کو ڈرانا یا
مزید پڑھیے


ففتھ جنریشن وار فیئر کوسمجھئے

منگل 12 فروری 2019ء
محمد عامر خاکوانی
ہمارے ہاں عام رواج ہے کہ کسی اصطلاح یا اصطلاحات کا زیادہ ذکر آئے یا اس کی تکرار سنائی دے تو لوگ اکتا ہٹ محسوس کرتے ہیں ۔وہ بات خواہ جتنی سچی اور درست ہو، اس کا مذاق اڑایا جاتا ہے۔اس کی دو وجوہ ہیں،پہلی یہ کہ ہمارے ہاں ان اصطلاحات کے نام پر عوام کو بے وقوف بنانے کا عمل جاری رہا۔دوسرا ہمارے ہاں علمی رویہ نہیں، یار لوگ کچھ پڑھنے ، سمجھنے کی زحمت نہیں فرماتے ۔ بعض تو کتاب یا مطالعہ سے ایسے بھاگتے ہیں جیسے لفظ نہیں سانپ ، بچھو ہیں جو انہیں ڈنک مار دیں
مزید پڑھیے


ملین مارچ حکومت کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کردیگا، مولانا فضل الرحمن

پیر 11 فروری 2019ء
پشاور ( نیٹ نیوز) جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ حکومت کی اسلام دشمنی کو بے نقاب کرنے کے لیے میدان عمل میں اترچکے ہیں اسلام آباد کا ملین مارچ حکومت کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کردے گا۔پشاور میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمن نے کہا اسرائیل کو تسلیم کرنے ، ختم نبوت کے قانون کو چھیڑنے اور قادیانیوں کو کھلی چھٹی دے کر حکمران مغربی ایجنڈے پر عمل درآمد کرنے کی کوشش کر رہے ہیں، حکومت ریاست مدینہ کا نام لے کر عوام کو بے وقوف بنارہی ہے ۔
مزید پڑھیے




پی ٹی ایم کے حوالے سے شکوک کیوں ؟

اتوار 10 فروری 2019ء
محمد عامر خاکوانی
استاد نے برسوں پہلے کہا تھا کوئی ایشو اگر سمجھ نہ آئے تو اس کے سلائس بنا کر دیکھو۔ مختلف ٹکڑوں میں بٹ جانے سے اس کی گمبھیرتا اور پیچیدگی کو بسا اوقات سمجھنا آسان ہو جاتاہے۔لکھنے کے اس سفر میں بارہا اس تکنیک کو آزمایا، ہر بار مفید ثابت ہوئی۔ اس سے بہت پہلے ،برسوں بلکہ عشروں پہلے جب کالج، یونیورسٹی کے زمانے میں ہم گھنٹوں بحث مباحثے کیا کرتے۔کبھی فرقہ ورانہ بحثیں،طبقاتی کشمکش کی تھیوریز ، قوم پرست تحریکیںاور رائٹ ونگ کے نظریاتی مجادلے تو خیر شروع ہی سے ساتھ تھے۔ انہی دنوں ایک دانا نے مشورہ دیا
مزید پڑھیے


کتابوں کا طلسم

منگل 05 فروری 2019ء
محمد عامر خاکوانی
نامور فرانسیسی دانشور اور ادیب والٹیئر نے کہا تھا ، ’’غیرمہذب ،وحشی قوموں کو چھوڑ کر تاریخ انسانی میں ہمیشہ کتابوں نے انسانوں پر حکومت کی ہے۔ ‘‘والٹیئر کو یہ بات شائد پسند نہ آتی، لیکن اس کا یہ بیان یہ الہامی کتب کو شامل کرنے سے ہی مکمل اور درست ثابت ہوتا ہے۔ یہ کتابیں ہی ہیں جو انسانی ذہن کو کشادہ اور وسیع کرتی ، اس میں سوچنے، سمجھنے، الجھنیں سلجھانے کی استعداد پیدا کرتی ہیں۔ نان فکشن یعنی سنجیدہ کتابوں کی اپنی جگہ ہے، مگر اپنے مطالعے کا ایک خاص حصہ ضرور فکشن کو دینا چاہیے
مزید پڑھیے


طالبان کہاں کھڑے ہیں؟

اتوار 03 فروری 2019ء
محمد عامر خاکوانی
افغانستان کامنظرنامہ تبدیل ہونے جا رہا ہے، پچھلے سترہ برس میں رونما ہونے والی پہلی جوہری تبدیلی۔ امریکی افواج کے انخلا میں ابھی کچھ وقت لگے گا، کم سے کم چند ماہ، اس کے بعد دیکھنا ہوگا کہ افغانستان میں اونٹ کس کروٹ بیٹھے گا۔ جو کچھ اب سامنے آیا اور آنے جارہا ہے ، اس کا تجزیہ البتہ ہوسکتا ہے۔ چند بکھرے بکھرے نکات ہیں، جن پر کچھ عرض کرنا چاہتا ہوں، یکسوئی اگر ملے تو ان شااللہ افغانستان پر مکمل سیریز لکھی جائے، سردست اتنے پر اکتفا کیجئے۔ طالبان امریکہ مذاکرات کے حوالے سے مختلف حلقے
مزید پڑھیے


افغانستان میں کیا ہو رہا ہے؟

جمعه 01 فروری 2019ء
محمد عامر خاکوانی
پچھلے سترہ اٹھارہ برسوں میں پہلی بار افغانستان میں ایک اہم ترین تبدیلی رونما ہو رہی ہے ، جسے نہ صرف غور سے دیکھنا اور سمجھناچاہیے بلکہ حسب توفیق کچھ نہ کچھ سبق بھی اخذ کرنے چاہئیں۔ سب سے پہلے تو ان لوگوں سے معذرت جنہیںافغان طالبان سخت ناپسند ہیں، جنہوں نے ہمیشہ یہی پروپیگنڈہ کیا اور لکھا، طالبان افغانستان میں شکست کھا چکے ہیں، اگر پاکستان مداخلت نہ کرے تو افغانستان میں مکمل امن وامان قائم ہوجائے گا اور امریکہ فتح یاب ہوگا۔‘‘ ان احباب کے دلی جذبات کا اندازہ لگانا مشکل نہیں۔ امریکیوں نے افغانستان چھوڑنے کا اعلان
مزید پڑھیے


’’آخری چٹان‘‘ سے’’ ارطغرل ‘‘تک

منگل 29 جنوری 2019ء
محمد عامر خاکوانی
میرے بچپن کی جن چیزوں نے شخصیت پر سب سے زیادہ اثر ڈالا ، یا یوں کہہ لیں کہ اس زمانے کا تصور کرتے ہوئے وہ فوری ذہن میں آتی ہیں، ان میں سے ایک نسیم حجازی کے تاریخی ناول اور دوسرا پی ٹی وی کے سدا بہار قسم کے شاہکار ڈرامے۔ ان ڈراموں نے میری نسل اور ہم سے پانچ سات سال بعد کی نسل کے لوگوں کی زندگیوں میں بے شمار خوشی کے لمحات شامل کئے۔ پاکستانی ٹیلی ویژن کے ان فن کاروں، پروڈیوسرحضرات اور دیگر تکنیکی شعبوں میں کام کرنے والوں کا میں ممنون ہوں کہ
مزید پڑھیے